منگل, جولائی 27, 2021
انڈیا میں کرونا وائرس کی صورتحال
India
31,470,893
مریض
Updated on July 27, 2021 10:39 pm
All countries
175,724,944
صحت یاب
Updated on July 27, 2021 10:39 pm
India
421,712
اموات
Updated on July 27, 2021 10:39 pm
منگل, جولائی 27, 2021

انڈیا میں کرونا وائرس کی صورتحال

India
31,470,893
مریض
Updated on July 27, 2021 10:39 pm
India
30,634,202
صحت یاب
Updated on July 27, 2021 10:39 pm
India
421,712
اموات
Updated on July 27, 2021 10:39 pm

ایس ڈی پی آئی کے 12ویں یوم تاسیس کو ملک بھر میں جوش و خروش سے منایا گیا  ملک کے مظلوم طبقات کو انصاف دلانے کیلئے حالات کا ہمیں ثابت قدمی سے مقابلہ کرنا ہے۔ایم کے فیضی

نئی دہلی۔ (پریس ریلیز)۔ سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا (ایس ڈی پی آئی) کے 12ویں یوم تاسیس کے موقع پر ملک بھر میں پارٹی کارکنان نے پرچم کشائی کی اورپارٹی کی یوم تاسیس کو جوش و خروش سے منایا۔ اس موقع پر مختلف فلاحی کام انجام دیئے گئے، شجر کاری، خون عطیہ کے علاوہ غریبوں میں کھانا تقسیم کیا گیا۔ پارٹی کے مرکزی دفتر نئی دہلی میں ایس ڈی پی آئی قومی نائب صدر اڈوکیٹ شرف الدین احمد نے پرچم کشائی کی۔ اس موقع پر ایس ڈی پی آئی قومی جنر ل سکریٹری محمد شفیع، قومی سکریٹری ڈاکٹر تسلیم احمد رحمانی اور دیگر کارکنان اور لیڈران موجود رہے۔ پارٹی کی 12ویں یوم تاسیس کے موقع پر ایس ڈی پی آئی قومی صدر ایم کے فیضی نے اپنے پیغام میں کہا کہ ایس ڈی پی آئی ملک کے سیاسی میدان میں اہم ایجنڈے کو لیکر کام کررہی ہے۔ ملک کے اندر ہزاروں سیاسی پارٹیاں ہیں، کچھ پارٹیاں قومی سطح پر اور کچھ پارٹیاں ریاستی سطح پر اور کچھ پارٹیاں مذہب اور ذات کی بنیاد پر کام کررہی ہیں۔ ان سارے سیاسی پارٹیوں کے بیچ ایس ڈی پی آئی پارٹی ایک اہم نعرہ "بھوک سے آزادی، خوف سے آزادی "کو لیکر میدان میں ہے۔ ملک کے سبھی مسائل کو حل کرنے کیلئے کام کررہی ہے۔ آپ سب جانتے ہیں کہ آج ملک کا صورتحا ل کیا ہے۔ آج ملک میں عوام کیلئے کام کرنے والی ایک حکومت نہیں ہے۔ ملک کے غریب لوگ، مزدور، کسان، اقلیت اور دلت طبقہ بہت پریشان ہے۔ سرکار صرف کارپوریٹس کیلئے کام کررہی ہے۔ ملک میں کیا چل رہا ہے اور اس میں حکومت کا کیا کردار ہے ہم سب اچھی طرح جانتے ہیں۔ آج کورونا وباء کے اس دور میں ہمارے ملک کے غریب عوام کو آکسیجن نہیں مل رہی ہے۔ ویکسین نہیں مل رہی ہے لیکن کارپوریٹس کو مدد کرنے کیلئے حکومت ویکسین ایکسپورٹ کرنے کیلئے زیادہ دلچسپی دکھا رہی ہے۔ کسان اپنے حقوق کا مطالبہ کرتے ہوئے آج بھی سڑک پر ہیں۔ حکومت ان کو سننے تک کیلئے تیا ر نہیں ہے اور انہیں نظر انداز کرتی آرہی ہے،جس سے کسان خودکشی کرنے پر مجبور ہورہے ہیں۔ آج بھی ملک میں ہجومی تشدد اور ہجومی قتل کیا جارہا ہے۔ حکومت اس پر خاموش ہے۔ جس سے ان غنڈوں کی حوصلہ افزائی ہورہی ہے۔ حکومت نے انہیں ہندوتوا کے نام پر کوئی بھی جرم کرنے کیلئے کھلا چھوڑ دیا ہے۔ ان پر کوئی   قانونی کارروائی ہوتی ہے اور نہ ہی ان کو سزا دیا جاتا ہے۔ حکومت اقلیتوں اور دلت طبقہ کو اس بات کا اشارہ دے رہی ہے کہ ایسا ہوگا۔ آج ہمارے ملک میں آکسیجن اور ویکسین کی قلت ہے۔ کورونا سے مرنے والوں کیلئے شمشان گھاٹ کی سہولت تک نہیں ہے، لیکن مرکزی بی جے پی حکومت مسلمانوں کو چھوڑ کر دوسرے ممالک کے شہریوں کو ہندوستانی شہریت دینے کا سوچ رہی ہے جو کہ مضحکہ خیز ہے۔ حکومت باہر ممالک کے شہریوں کو ہندوستانی شہریت دیکر ملک کو فر قہ وارانہ خطوط پر تقسیم کرنا چاہتی ہے۔ حکومت کی غلط پالیسیوں اور وزیر اعظم کے غلط پالیسیوں کے خلاف بولنے والوں کو کالے قوانین کے تحت جیلوں میں ڈال رہی ہے۔ جس میں ایس ڈی پی آئی کارکنان بھی شامل ہیں۔ حکومت اپوزیشن کی رائے سننے کیلئے تیار نہیں ہے۔ ملک کے ایوانوں میں عوا م کے مسائل پر چرچا نہیں ہوتی ہے۔ کارپوریٹس کے ایک چھوٹے طبقے کیلئے حکومت کام کررہی ہے۔ ملک میں وفاقیت کو ختم کیا جارہا ہے۔ اب ریاستوں کو کوئی حق حاصل نہیں ہے۔ ریاستوں کو میونسپالٹی کی طرح بجلی اور پانی کا ٹیکس جمع کرنے پرلگا دیا گیا ہے۔ ساری طاقت مرکزی حکومت کے پاس ہے۔ ایسے صورتحال میں ایس ڈی پی آئی کارکنان کی ذمہ داری بہت اہم ہے۔ ہم صرف انتخابات میں حصہ لینے کیلئے کام نہیں کررہے ہیں۔ پارٹی چلانے کیلئے پارٹی چلانا ہمار اایجنڈا نہیں ہے۔ ہمار ا ایجنڈاملک کیلئے لڑنا ہے اور ملک کی آزادی کو بحال کرنا ہے۔ ملک کے جمہوری اور سیکولر اقدار کی بحالی کیلئے لڑنا ہے۔ ملک کے مظلوم طبقات، غریب، مزدور، کسان جن کی آواز نہیں ہے ایسے لوگوں کی آواز بننا ایس ڈی پی آئی کارکنان کی ذمہ داری ہے۔ مستقبل میں ہمار ا راستہ اتنا آسان نہیں ہے کیونکہ یہ فسطائی طاقتیں ہر اپوزشین کی آواز کو ختم کرنا چاہتے ہیں۔ ہمیں ملک دشمن قرار دیکر ہمیں دبانے کی کوشش ہوگی، ہمارے اوپر کالے قوانین تھوپے جائیں گے اور ہمیں جیل میں بھی ڈالا جائے گا لیکن اس کے باوجو د ہمیں عزم کے ساتھ کام کرنا پڑے گا۔ ہمارے آباؤ اجداد نے اس ملک کی آزادی کیلئے جو قربانیاں دی تھیں ہمیں بھی ایسی قربانیاں دینی پڑے گی تاکہ ہمارے ملک کی آئندہ آنی والی نسلیں اس ملک میں امن و سلامتی کے ساتھ رہیں۔ آج ہمیں پارٹی کے یوم تاسیس کے موقع پر یہ عہد کرنا ہے کہ ظلم اورناانصافی کیلئے خلاف ہمیں ڈٹ کر مقابلہ کرنا ہے اور اس ملک کے مظلوم طبقات کو ان کا حق دلانا ہے۔

spot_img

Hot Topics

Related Articles