امیر شریعت کے تمام عزائم کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کی کوشش کروں گا نائب امیر شریعت بہار اڈیشہ وجھارکھنڈ حضرت مولانا شمشاد رحمانی کا عزم

18

پٹنہ۔ ۸؍اپریل:(نمائندہ خصوصی) نائب امیر شریعت مولانا شمشاد رحمانی نے امیر شریعت مولانا ولی رحمانی کے عزائم کو پائے تکمیل تک پہنچانے کا عہد کیا ہے۔ نائب امیر شریعت نے کہا کہ وہ امیر شریعت مولانا ولی رحمانی ؒ کے عزائم کو پایہ تکمیل تک پہنچائیں گے۔بنیادی عصری اور دینی تعلیم سے ملت کے نونہالوں کو آراستہ کرنے کا جو عزم امیر شریعت مولانا ولی رحمانی نے کیا تھا۔ نائب امیر شریعت مولانا شمشاد رحمانی قاسمی ان تمام کاموں کو کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کی کوششوں میں مصروف ہیں۔انہوں نے کہا کہ یہ کافی غمناک مرحلہ ہے ،امیر شریعت مولانا ولی رحمانی نے بہت ہی کم مدت میں بہت عظیم کام انجام دیئے ہیں۔ان کے بعد یہ ذمہ داری ابھی میرے اوپر ہے۔ تادم حیات جب تک جس قدر ممکن ہوسکے گا، حضرت مولانا ولی رحمانی کے عزائم، منصوبوں اور خواب کو مکمل کرنے کی میری پوری کوشش رہے گی۔امیر شریعت کے تمام عزائم کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کی ہر ممکن کوشش کروں گا۔ واضح رہے کہ امیر شریعت حضرت مولانا سید محمد ولی رحمانی علیہ الرحمہ نے وفات سے چند روز قبل نائب امیر شریعت کے طور پر دیوبند کے استاد صالح عالم دین مولانا شمشاد رحمانی قاسمی کو نامزد کیا تھا۔ مولانا شمشاد رحمانی نے بتایاکہ ’’مولانا ولی رحمانی نے اپنے انتقال کے ایک ہفتے قبل یعنی ۲۱‘مارچ کو یہ تحریر جاری فرمائی تھی کہ میں نائب امیر شریعت نامزد ہوں۔ اس وقت ان کی طبیعیت بھی بہتر تھی اور اس کے ٹھیک ہفتے بعد 28 مارچ کو وہ دنیا فانی سے کوچ کرکے۔ مجھے نہیں معلوم انہوں نے مجھ میں کیا صلاحیتیں دیکھیں، ان کے نگاہ انتخاب سے اندازہ ہوتا ہے کہ انہوں نے کچھ چیزیں دیکھیں ہوں گی، جو میرے لیے حوصلہ کن ہے۔ میں کوشش کروں گا کہ میں ان کے اعتماد پر کھرا اتروں۔انہوں نے بتایا کہ تعلیم اور صحت میری اولین ترجیح ہے۔ میں اسلامی طرز پر پر مکاتب قائم کرنا چاہتا ہوں۔ ہر ضلع میں ایسے اسکول قائم کرنا چاہتا ہوں جہاں عصری تعلیم کے ساتھ دینی تعلیم بھی پڑھائی جاسکے۔ ساتھ میں مولانا ولی رحمانی کے عصری تعلیم کے خواب کو پورا کرنے کی کوشش کروں گا۔بتادیں کہ امارت شرعیہ کی ایک صدی پر مشتمل تاریخ ہے، امارت شرعیہ نے بہار، اڑیسہ، جھارکھنڈ اور بنگال تک کے مسلمانوں کی شرعی رہنمائی کا فریضہ انجام دے رہی ہے اور بلامسلک ومذہب تمام ہندوستانیوں کی آفت ناگہانی کے وقت کھڑے رہتی ہے۔ امارت کو ۸؍ امیر شریعت نصیب ہوئے،آٹھویں امیر شریعت مولانا ولی رحمانی نے پانچ سال چار مہینے کی مدت میں کئی تاریخی کارنامے انجام دیئے۔انہوں نے 15 اپریل 2018 کو تاریخی گاندھی میدان میں آزاد ہندوستان کی سب سے بڑی ریلی ’دین بچاو دیش بچاو ‘کا انعقاد کر ایک تاریخ رقم کردی ہے۔ ان کی آواز پر پورے بہار سے کئی لاکھ افراد جمع ہوئے تھے اور دین و ودیش کو بچانے کا عہد کیا تھا،جسے دیکھ کر سیاست دانوں کی نیند اڑ گئی تھی۔ اپنے انتقال سے چند مہینے قبل انہوں نے تحفظ اردو تحریک کا آغاز کیا۔ اس کے بعد سی بی ایس سی کے طرز پر پورے ملک میں اسکول اور مکاتب قائم کرنے کا سلسلہ شروع کیاتھا۔