یوں تو یہ گوشت کا ایک
چھوٹا سا ٹکڑا ہے لیکن
یہ ایک عجوبہ ہے ۔۔کہنے
والے کہتے ہیں کہ سادہ
بھی ہے عیار بھی ہے
مغروربھی ۔خاکساربھی۔
بخبربھی ہے۔ محرم اسراربھی۔
بت کا بندہ بھی ہے۔ خالق کاپرستاربھی ہے ۔مجلس عشق میں دیکھئےمدہوش ہوتا ہے ۔۔۔۔
عقل کی محفل میں دیکھئےتو ہوشیاربھی ہے مسیحابھی ہے ۔بیمار بھی ہے ۔
فرما بردار بھی ہے ۔گناہ گار بھی ہے ۔بے خبر بھی ہے ۔خبرداربھی ہے۔ یہ یکتابھی ہے خریداربھی ہے۔ گل بھی ہے۔ خار بھی ہے ۔
امن کامرکزبھی ہے۔ برسرکاربھی
ہے۔ برسرداربھی ہے ۔طاقتوربھی ہے۔ لاچاربھی ہے ۔قتل بھی ہے۔۔ تلوار بھی ہے۔مختار بھی ہے ۔مستحق خلد بھی ہے ۔دوزخ کا سزاواربھی ہے ۔ایک حکیم نے اسی دل کے بارے میں کہاکہ ۔
نادان لوگ دولت کےلئےدل کا ۔
چین لوٹادیتےہیں ۔اور دانشمنددل کے چین کی خاطردولت لوٹا دیتے ہیں ۔
دوسرے حکیم کا کہناہے کہ ۔
دوسرے کا دل جیتنےکےلئے۔
اپنا دل جیتنا ضروری ہے ۔
اگرتم نے اپنے دل پے قابو پالیاتو ۔دنیاں تمہارےقبضے میں ہیں ۔تیسر حکیم کا خیال ہے کہ۔
دل کالاہوتوگورےمنہ پر اتارنابیوقوفی ہے۔ چوتھے حکیم کی رائےیہ ہےکہ بیوقوف کادل اسکی زبان میں ہو تا ہے ۔اور عقل مند کی زبان اسکے دل میں ہو تی ہے ۔
حضرت حسن بصری رحمةللةعلیہ اسی دل کے بارے میں فرماتے ہیں کہ ۔پانچ چیزیں دل کےبگڑنے کی نشانی ہے ۔۔
١ توبہ کہ امیدپر گناہ کرنا ۔۔
٢ علم سیکھنااور عمل نہ کرنا۔
٣ اخلاص نہ ہونا ۔۔
۴ رزق کھانا اور شکر نہ کرنا ۔
۵ مردوں کو دفن کرنا اور عبرت نہ پکڑنا۔ ۔۔