صدر جمعیت علماء ارریہ ڈاکٹر عابد حسین صاحب کے لئے نیک خواہشات!

25

*17/جولائی 2020 کو ایک مریض رات آٹھ بجے سیٹی ہاسپیٹل ارریہ پہونچے۔ہاسپیٹل میں موجود ڈاکٹر محمد آصف صاحب نے تشخیص کرتے ہوئے کہا کہ ان پر کورونا وائرس کے پورے آثار نظر آرہے ہیں اور فوراً آکسیجن لگادیا۔اس وقت ان کا آکسیجن پلس 74/تھا۔
*ڈاکٹر آصف صاحب نے اسی کے ساتھ مریض کے ذمےداران سے کہا کہ انگریزی میں تو اس مرض کی کوئی دوا نہیں ہے البتہ آپ فوراً میرے والد محترم ڈاکٹر عابد حسین صاحب سے رابطہ کریں جو ہومیوپیتھک کے معروف معالج ہیں۔
*تحقیق کے مطابق رات نو بجے تک ڈاکٹر عابد حسین صاحب سے رابطہ ہوا اور انہوں نے فوری طور پر وہیں ہاسپیٹل میں ہومیوپیتھک دوا سے علاج شروع کیا۔

*الحمدللہ منٹ دومنٹ میں پلس بڑھنا شروع ہو گیا اور رات دس بجے تک محض ایک گھنٹے میں مریض کا آکسیجن پلس 94/ہوگیا۔
*سیمپل ٹیسٹ کے لئے بھیج دیاگیااور مریض کا آکسیجن کے ساتھ گھر پر علاج چلتا رہا۔جب رپورٹ آئی تو وہ پوزیٹو تھی۔*
*ڈاکٹر عابد حسین صاحب نے لگاتار ہومیوپیتھک دوا چلائ۔اب الحمدللہ مریض مکمل صحت یاب ہوچکے ہیں۔
*جب یہ خبر عام ہوئی تو اب حال یہ ہے کہ روزانہ چارسے پانچ کورونا پایزیٹیو مریض ان کے دواخانے سے دوا لے رہے ہیں اور بحمد اللہ تین سے چار دنوں میں رو بہ صحت ہورہے ہیں۔*
*آج بعد نماز مغرب ڈاکٹر عابد حسین صاحب صدر جمعیت علماء ارریہ سے فون پر تفصیلی بات چیت ہوئی اور انہوں نے از خود اپنی یہ ساری آپ بیتی سنائی تو دل باغ باغ ہو گیا اور بے ساختہ ان کے لئے دل سےدعائیں نکلیں۔*
*ہم نے عالمی وباء کی اس نازک گھڑی میں ڈاکٹر صاحب موصوف کی اس عظیم کامیابی پر خوب حوصلہ افزائی کی اور انہوں نے بھی حوصلے کے ساتھ اس وباء سے لوگوں کو بچانے کے لئے اپنی خدمات کا عزم دہرایا۔جمعیت علماء ارریہ کے تمام خدام و اراکین کی طرف سے ہم اپنے ہردالعزیز صدر محترم کےلئے نیک خواہشات پیش کرتے ہوئے ان کی دراز گئی عمر کی دعائیں کرتے ہیں اور ساتھ ہی اس خطرناک موذی مرض سے تمام انسانوں کے تحفظ کی دعائیں بھی کرتے ہیں*!!!