جمعیت علماء اترپردیش کے نومنتخب عبوری صدر مولانا عبد الرب صاحب اعظمی کو مبارکباد!

31

ارریہ(توصیف عالم مصوریہ)روزنامہ نوائےملت
جمعیت علماء اترپردیش کے سابق صدر حضرت مولانا متین الحق اسامہ صاحب قاسمی کی رحلت سے ریاستی جمعیت کی سرگرمیوں کے حوالے سے مرکزی قیادت کافی فکر مند تھی۔
بحمدللہ آج اس خلاء کو پر کرنے کی بھرپور کوشش کی گئی۔
چنانچہ مشرقی یوپی کے خطۂ علم و ادب ضلع اعظم گڈھ کے قصبہ جہاناگنج کی ایک بزرگ وباوقار ہردلعزیز شخصیت حضرت مولانا عبد الرب صاحب اعظمی دامت برکاتہم کو جمعیت علماء اترپردیش کا عبوری صدر منتخب کر لیا گیاہے۔
مرکزی قیادت حضرت مولانا قاری سید محمد عثمان صاحب منصور پوری دامت برکاتہم صدر جمعیت علماء ہند اور قائد جمعیت حضرت مولانا سید محمود اسعد صاحب مدنی دامت برکاتہم ناظم عمومی جمعیت علماء ہند کی ہدایت پر اراکینِ عاملہ جمعیت علماء اترپردیش کی آن لائن میٹینگ میں حضرت والا کو اتفاق رائے سے ریاستی عبوری صدرمنتخب کیا گیا۔
واضح رہے کہ بےشمار خداداد خوبیوں کے مالک حضرت مولانا عبد الرب صاحب اعظمی دامت برکاتہم اصحاب علم و فضل کی تاریخی بستی اعظم گڈھ کے مردم خیز قصبہ جہاناگنج سے تعلق رکھتے ہیں۔حضرت مولانا کےکاندھےپر35/سال سے جہاناگنج کے قدیم ترین اسلامی ادارہ جامعہ عربیہ انوارالعلوم کی نظامت ہے اور ابھی تک وہ مشرقی یوپی کے صدر ہونے کی حیثیت سے بحسن وخوبی جمعیت کی ذمےداری بھی نبھاچکے ہیں۔

حضرت مولانا سے احقر کا علمی رشتہ درجۂ حفظ کے ابتدائ زمانۂ طالب علمی سے ہے۔مولانا موصوف 1985 عیسوی میں ادارہ کے ناظم اعلیٰ منتخب ہوئے تھے جبکہ بندۂ عاجز نے1989عیسوی میں محض دس سال کی عمر میں قاری عثمان غنی و حافظ نفیس احمد صاحبان جہاناگنجی کی سرپرستی اور حضرت والا کی ابتدائی نظامت کے ایام میں جامعہ عربیہ انوارالعلوم جہاناگنج میں مقدور بھر تعلیم حاصل کی ہے۔گرچہ پھر وہاں سے جمعیت علماء ضلع اعظم گڈھ کے موجودہ صدرحضرت مولانا مفتی جمیل احمد صاحب نذیری دامت برکاتہم کی سرپرستی میں جامعہ عربیہ احیاء العلوم مبارک پور/عین الاسلام نوادہ میں اور جمعیت علماء ضلع مئو کے موجودہ صدر حضرت مولانا حافظ عبد الحئی صاحب مفتاحی دامت برکاتہم کی سرپرستی میں جامعہ عربیہ منبع العلوم خیرآباد میں تعلیم حاصل کرتے ہوئے 2000 عیسوی میں ام المدارس دارالعلوم دیوبند سے فراغت حاصل کی اور تاہنوز شعبہ درس و تدریس کے ساتھ جمعیت علماء ارریہ سے وابستہ ہے؛مگر اس طویل ترین عرصے میں حضرت مولانا عبد الرب صاحب اعظمی دامت برکاتہم نے ہمیشہ جس شفقت کا مظاہرہ کیا اسے الفاظ میں بیان نہیں کیا جاسکتا۔

مولانا کے والد محترم حضرت مولانا محمد اقبال صاحب اعظمی رحمۃ اللہ علیہ بھی اپنے زمانے کے مشہور بزرگ عالم دین تھے۔وہ 45/سال تک انوار العلوم جہاناگنج کے ناظم اعلیٰ رہے۔بڑی بات یہ تھی کہ وہ شیخ الاسلام حضرت مولانا سید حسین احمد صاحب مدنی علیہ الرحمہ کے شاگرد رشید تھےاور حضرت سے نسبت ایسی تھی کہ دارالعلوم کے زمانہ طالب علمی میں ناشتہ حضرت مدنی کے گھر فرماتےتھے۔
آج بے انتہاء خوشی ہوئی کہ ایسی بلند نسبت علمی،عملی و ملی عبقری شخصیت کو جمعیت علماء اترپردیش کا عبوری صدر منتخب کیا گیاہے۔
ہمیں امید بدرجہ یقین ہے کہ حضرت والا کی قیادت میں اترپردیش کی ریاستی جمعیت ایک نئے عزم و ارادے اور مضبوط فکرونظر کے ساتھ اپنے تمام تر اہداف کے حصول کے لئے کام کرے گی اور ملک کی سب سے بڑی ریاست کے موجودہ جملہ مسائل پر اجتماعی قوت کے ساتھ تمام تر کامیابیوں کو حاصل کرے گی ان شاء اللہ۔
اس مبارک موقع پر جمعیت علماء ارریہ (بہار) کی پوری ٹیم کی طرف سے مرکزی و صوبائی جمعیت کی قیادت کے ساتھ ساتھ نو منتخب صدر محترم کو صمیم قلب سے مبارکباد پیش کرتا ہوں!!
جنرل سکریٹری جمعیت علماء ارریہ