ملکی سطح پر سرزمین سمری بختیارپور کا نام روشن کرنے والی شخصیات کی خدمات کے اعتراف میں اعزازی تقریب کا انعقاد

25

سہرسا(شاہنواز بدر قاسمی)تنظیم ائمہ مساجد سہرسہ کی جانب سے تین علاقائی مصنفین ایوارڈ سے نوازے گئے۔
سہرسہ، اہل علم کے بڑے درجات ہیں، اللہ انہیں اتنی بلندی عطا کرتا ہے کہ جس کا ایک عام انسان تصور بھی نہیں کر سکتا، اسلام علم کی ترغیب کرتا ہے اور یہ پروگرام درحقیقت علم کا احترام ہے. تنظیم ائمہ مساجد نے اپنے علاقے کی ممتاز شخصیات کی بیش بہاعلمی خدمات کے احترام میں ان کی عزت افزائی کے لئے یہ جو بزم سجائی ہے، اس کے لئے تنظیم کے تمام ذمہ داران مبارکباد کے مستحق ہیں، درج بالا خیالات کا اظہار صدر جمہوریہ ایوارڈ یافتہ اور جمعیت علماعلمائے ہند ضلع بیگوسرائے کے صدر مولانا مفتی خالد حسین نیموی قاسمی نے تنظیم ائمہ مساجد کے زیر اہتمام بختیار پور اسٹیٹ میں منعقد "اعزازی تقریب و تقسیمِ ایوارڈ”سے خطاب کرتے ہوئے کیا، علاقے کی مشہور روحانی شخصیت پروفیسر سید قسیم اشرف صاحب کی صدارت اور شہنوازبدرقاسمی کی نظامت میں

منعقد اس تقریب میں سمری بختیار پور علاقے کے تین گوہر نایاب مفتی نوشاد نوری قاسمی استاذ ادب وفقہ دارالعلوم وقف دیوبند کو پاسبان علم ادب ایوارڈ،مولانا مفتی سعید الرحمن قاسمی مفتی امارت شرعیہ کو دبستان فقہ ایوارڈ اور ماہر فلکیات حافظ محمد کوثر امام اشرفی مصنف "معیار الاوقات” کو ناموس علم ہیئت ایوارڈ دےکر عزت افزائی کی گئی. اس موقع پر مفتی نوشاد نوری کی کتاب "رہنمائے انشاء” جس کی مکمل ساتوں جلدیں بہار مدرسہ بورڈ میں داخل نصاب کی گئی ہیں اور حافظ کوثر امام کی تصنیف” معیار الاوقات لاداءالصوم والصلوۃ” اور اسی کتاب سے ماخوذ دائمی اوقات نمازکاکلینڈر برائے سہرسہ،سمری بختیار پور، کھگڑیاومونگیرسب ڈویژن کابھی رسم اجرا عمل میں آیا۔
اس سے قبل مہمانوں کا استقبال کرتے ہوئے تنظیم کے صدر حافظ محمد ممتاز رحمانی نے اس پہلی کوشش کی حوصلہ افزائی کے لئے لوگوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے آئندہ بھی اس طرح کے پروگرام منعقد کئے جانے کا یقین دلایا. تقریب سے خطاب کرنے والوں میں مفتی نوشاد نوری قاسمی ،قاری نوراللہ نعمانی،ڈاکٹرمعراج عالم،مفتی فیاض عالم، ڈاکٹر ذاکر حسین، ماسٹر تنویر عالم، مفتی نصراللہ،قاری جاویداخترآسی وغیرہ شامل تھے. جب کہ تقریب میں شرکت کرنے والوں میں ڈاکٹر معز الدین، مولانا ضیاء الدین ندوی، وجیہ احمد تصور ، محمد حسن منیجر اسٹیٹ، مولانا محمد شفاء الدین لطیفی، افرو عالم،فیروزعالم،مولانامشیر،مولانا محب اللہ سیٹن آباد، ایڈوکیٹ جاوید، قاری اختر، ابوالفرح شازلی، محشرامام،حافظ فیروز عالم ،ابو حذیفہ، یاسر عرفات، جعفرامام قاسمی، عبدالسلام امین ،افسر امام قاسمی، ساجد اقبال، ماہر علی، سلطان احمد، فاخر امام، افسر عالم، مولانا رضوان عالم، ابو ظفر وغیرہ شامل تھے. مولانا مظاہرالحق قاسمی کی دعاؤں پر پروگرام اختتام کو پہنچا جس کے بعد پرتکلف ظہرانے کا نظم کیا گیا۔