چین کی فرضی کمپنیوں پر انکم ٹیکس کا پڑا چھاپہ

24

محکمہ انکم ٹیکس نے چین کے کچھ لوگوں اور ان کے ہندوستانی معاونین کے منی لانڈرنگ میں شامل ہونے کے پیش نظر راجدھانی دہلی، گورو گرام اور فرید آباد میں کئی مقامات پر چھاپے مارکر غیر قانونی طریقے سے ایک ہزار کروڑ روپے کے لین دین کے معاملے کا انکشاف کیا ہے

محکمے نے آج دیر شب یہاں جاری ایک بیان میں کہا کہ چین کے کچھ لوگوں، ان کے ہندوستانی معاونین اور کچھ بینک ملازمین کے یہاں چھاپہ مارا ہے۔ اس سلسلے میں اطلاع ملی تھی کہ یہ لوگ فرضی کمپنیوں کے نام پر حوالہ کے ذریعہ لین دین کررہے ہیں۔

تلاشی کے دوران یہ پتہ چلا کہ چین کے لوگوں کے ذریعہ فرضی کمپنیوں کے نام پر 40 سے زیادہ کھاتے کھولے گئے اور 1000 کروڑ روپے سے زیادہ کے لین دین کئے گئے۔ چین کی ایک کمپنی کی معاون یونٹ اور اس سے وابستہ لوگوں نے ہندوستان میں ریٹیل شو روم کھولنے کے نام پر فرضی کمپنیوں سے 100 کروڑ بوگس ایڈوانس بھی لیا۔

حوالہ لین دین اور منی لانڈرنگ کے معاملے میں بینک ملازمین اور سی اے کے شامل ہونے کا بھی پتہ چلا ہے۔ اس کی ابھی جانچ جاری ہے۔واضح رہے منی لانڈرنگ ایک سنگین جرم ۔ چین نے مبینہ طور پر ہمارے ملک میں نہ صرف در اندازی کی کوشش کی ہے بلکہ ہمارے فوجیوں کو بھی شہید کر دیا ہے جس کی وجہ سے ملک میں چین کے خلاف زبردست ناراضگی ہے اور اب یہ منی لانڈرنگ کا معاملہ سامنے آیا ہے جس نے اس نارضگی میں اضافہ کر دیا ہے۔