ضلع ارریہ میں آگ زنی سےمتأثرین کے درمیان امارت شرعیہ پھلواری پٹنہ کی جانب سے دس دس ہزار کاچیک تقسیم

16

امارت شرعیہ پھلواری شریف پٹنہ کی سوسالہ تاریخ رہی ہے کہ جب بھی لوگوں پر کسی قسم کی کوئی پریشانی آئی امارت شرعیہ ان کے دکھ درد میں برابر کی شریک رہی اور بغیر کسی بھید بھاؤ کے مظلوموں اور پریشان حال لوگوں کی آواز بن کر ان کےساتھ کھڑی رہی ،چاہے وہ سماوی آفات ہو یا زمینی بلاء امارت شرعیہ نے ہر موقع پر ریلیف کا کام کیا ہے۔
اسی قسم کا حادثہ گزشتہ دنوں سکٹیا گاؤں جوکی ہاٹ اور بیر نگر بسہریا ضلع ارریہ میں پیش آیا، دیکھتے ہی دیکھتے درجنوں مکانات آگ کی زد میں آکر خاکستر ہو گئے،اس کی اطلاع جیسے ہی امارت شرعیہ کو ملی قائم مقام ناظم جناب مولانا محمد شبلی القاسمی صاحب، قاضی شریعت دارالقضاء امارت شرعیہ ارریہ مفتی محمد عتیق اللہ رحمانی کو وہاں جاکر متأثرین سے ملنے انہیں تسلی دینے اور حالات کا جائزہ لیکر مرکزی دفتر امارت شرعیہ پٹنہ کو مطلع کرنے کا حکم دیا چنانچہ قاضی شریعت دارالقضاء ارریہ جناب مفتی عتیق اللہ رحمانی متأثرہ گاؤں پہونچے اور متأثرین سے ملکر پوری تفصیل مرکزی دفتر امارت شرعیہ پٹنہ کو بھیجی،قائم مقام ناظم جناب مولانا محمد شبلی القاسمی صاحب نے بروقت وہ تفصیلات حضرت امیر شریعت مفکر اسلام حضرت مولانا سید محمد ولی رحمانی مدظلہ العالی کی خدمت میں پیش کی ، حضرت امیر شریعت دامت برکاتہم نے ان تمام متأثرین کی درخواستوں کو منظور فرمایا اور ہر متأثر کو بیت المال امارت شرعیہ سے دس دس ہزار روپئے دینے کا حکم فرمایا،حسب ہدایت حضرت امیر شریعت دامت برکاتہم دفتر امارت شرعیہ سے 25/متأثرین کے نام دس دس ہزار روپئے کا چیک جاری کیا گیا۔
اور مؤرخہ30دسمبر2020ء کو ان تمام لوگوں سےامارت شرعیہ کے وفد نے ملاقات کرکے چیک ان کے حوالے کیا، گاؤں کے لوگوں نے مہاماری کےاس عالم میں امارت شرعیہ کے اقدام پر حضرت امیر شریعت دامت برکاتہم،حضرت ناظم صاحب اور تمام کارکنان کا شکریہ ادا کیا ۔ وفد میں شریک امارت شرعیہ کے رکن شوری و عاملہ جناب الحاج اکرام الحق صاحب،قاضی شریعت دارالقضاء ارریہ مفتی محمد عتیق اللہ رحمانی،مولانا محمد منہاج عالم ندوی امارت شرعیہ پٹنہ،اور جناب مولانا عبداللہ سالم قمر چترویدی قاسمی ڈائریکٹر الہدی ایجوکیشنل اکیڈمی،قاری محمد جسیم الدین حسامی چیئرمین شیخ زکریا ایجوکیشنل ٹرسٹ،حافظ ناصر کاکن،جناب نورالاسلام عرف راحل سمیتی کاکن پنچایت وغیرہ حضرات شریک رہے۔