19

مسلم سیاسی جماعتوں کو ایک پلیٹ فارم پر لانے کیلئے میرٹھ میں میٹنگ کا انعقاد،اسماعیل باٹلی والا،

ایم آئ ایم،راشٹریہ علماء کونسل،پیس پارٹی و دیگر میں اتحاد کے خواہاں:

نئ دہلی،29 دسمبر
(ذاکر حسین کی رپورٹ)
نیشنل اتحاد مںنچ کی جانب سے مسلم سیاسی جماعتوں کو متحد کرنے کی کوششیں جاری ہیں۔اسی سلسلے میں گزشتہ دنوں ایک میٹنگ کا انعقاد میرٹھ میں ہوا جس میں اتحاد کے علمبردار اسمعیل باٹلی والا مہمان خصوصی کے طور پر شامل ہوئے۔اس موقع پر میٹنگ میں شریک سرکردہ شخصیات نے طے کیا کہ پیس پارٹی،ایم آئ ایم،راشٹریہ علماء کونسل،ایس ڈی پی آئ،مسلم لیگ،ویلفیئر پارٹی آف انڈیا و دیگر پارٹیوں کو ایک پلیٹ فارم پر لانے کیلئے مذکورہ پارٹیوں کے لکھنئو دفتر پراپریل کے پہلے ہفتہ سے غیر معینہ مدت دھرنا شروع کیا جائے گا اور مذکورہ سیاسی جماعتوں کو ایک پلیٹ فارم پر لانے کیلئے ہر ممکنہ کوشش کی جائے گی۔اس موقع پر متعدد شخصیات کی جانب سے اسمعیل باٹلی والا کی اتحاد کی کوشش کو سراہا گیا اور انہیں اس دور کا عظیم شخص قرار دیا۔اس موقع پر اسمعیل باٹلی والا نے اپنے بیان میں کہا کہ ہم مسلم سیاسی جماعتوں کو ایک پلیٹ فارم پر لانے کیلئے مسلسل آٹھ سالوں سے محنت کر رہے ہیں لیکن افسوس صد افسوس مسلم سیاسی جماعتیں قوم کے مسائل کے حل کیلئے ایک پلیٹ فارم پر نہیں آئیں۔مسٹر باٹلی والا نے صحافی ذاکر حسین سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ہم آئندہ اپریل سے ایم آئ ایم،آریوسی،پیس پارٹی،مسلم لیگ و دیگر کے لکھنئو واقع دفتر کے باہر غیر معینہ دھرنے پر بیٹھیں گے،یہ دھرنا تب تک جاری رہے گا جب تک مسلم سیاسی جماعتیں ایک پلیٹ فارم پر نہیں آجاتیں۔انہوں نے کہا کہ ہم واضح الفاظ میں مذکورہ سیاسی جماعتوں کے سرکردہ لیڈران سے کہنا چاہتے ہیں کہ اپریل کے دھرنے سے قبل ہی اتحاد کیلئے آمادہ ہو جائیں۔انہوں نے بتایا کہ ہم نے آٹھ سال کے عرصہ میں متعدد بار مذکورہ سیاسی جماعتوں کو ایک پلیٹ فارم پر لانے کی کوشش کر چکے ہیں۔واضح رہے کہ مسلم عوام بھی مذکورہ سیاسی جماعتوں کو ایک پلیٹ فارم پر دیکھنا چاہتی ہے لیکن قوم کے لیڈر متحدہ پلیٹ فارم پر ابھی تک نہیں آسکے ہیں۔اس مو قع پر الفلاح فرنٹ،ذیشان حیدر ملک،ڈاکٹر اسفر،گل شیر و دیگر نے اسمعیل باٹلی والا کے اتحاد مشن کو انجام تک پہنچانے کا عزم دہرایا۔