نریندر مودی کا آیا پھر نیا بیان

36

نئی دہلی( روزنامہ نوائے ملت)وزیراعظم نے کہا کہ رام کے وجود کو مٹانے کی کئی کوششیں کی گئیں، لیکن شری رام، اب بھی ہماری ثقافت کی بنیاد بنے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ رام مندر ہماری ثقافت، دائمی یقین، قومی جذبے اور اجتماعی قوت ارادی کی ایک جدید علامت ہوگی، جو آنے والی پیڑھیوں کو ترغیب فراہم کرے گی۔ مندر کی تعمیر سے مختلف شعبوں میں متعدد مواقع فراہم ہوں گے اور اس خطے کی معیشت کو بدل دیں گے۔

وزیراعظم نے زور دے کر کہا کہ آج کا دن کروڑوں رام بھکتوں کے سچے عقیدے اور عزم کا بھی ایک ثبوت ہے۔ انہوں نے اُس وقار اور تحمل کی ستائش کی، جس کا مظاہرہ اہل ملک کی جانب سے کیا گیا، ہر کسی کے جذبات کو مدنظر رکھتے ہوئے، جب گزشتہ برس عدالت عظمیٰ نے اپنا فیصلہ سنایا، وہی وقار اور وہی تحمل آج بھی نظر آ رہا ہے۔

وزیراعظم نے یاد کیا کہ کس طریقے سےناداروں، پسماندہ، دلتوں، قبائلی افراد سمیت ہر شعبہ ہائے حیات کے افراد شری رام کی فتحیابیوں میں مددگار رہے، شری کرشن کے ذریعے گووردھن پہاڑ اٹھانے میں مددگار رہے، چھترپتی شوا جی نے سوراجیہ قائم کیا، گاندھی نے تحریک آزادی کی قیادت کی وغیرہ۔ اُسی طریقے سے رام مندر کی تعمیر عام شہریوں کے تعاون سے شروع کی گئی ہے۔

شری رام کے کردارکے اوصاف بیان کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ وہ ہمیشہ حق پر قائم رہتے تھے اور انہوں نے سماجی ہم آہنگی کو اپنی حکمرانی کی بنیاد بنایا تھا۔ وہ اپنی رعایا سے مساویانہ محبت کرتے تھے۔ تاہم ناداروں اورضرورتمندوں کے لئے خاص جذبہ ترحم بھی رکھتے تھے۔ زندگی کا کوئی ایک بھی پہلو ایسا نہیں ہے، جہاں شری رام ہمارے لئے باعث ترغیب نہ ہوں اور ان کے اثرات ثقافت، فلسفے، عقیدے اور ملک کی روایات میں ظاہر ہوتے ہیں۔