اونچہ رہ مدرسہ کے مشہور حافظ ارشداللہ مالک حقیقی سے جاملے

31

سمریاواں(سنت کبیر نگر)مشہور دینی تعلیمی ادارہ تعلیم الدین اونچہرہ میں تقریباً 40برس تک قرآن کی خدمت اور کثیر تعدادحفاظ کرام کی جماعت تیار کرنے والے خادم قرآن حافظ ارشداللہ آج 29جولائی شام چاربجے اپنے مالک حقیقی سے جاملے ۔

متحدہ بستی جو موجودہ وقت سنت کبیر نگر میں واقع دینی ادارہ تعلیم الدین اونچہرہ کا شمار اپنے علاقے کے بڑے مدارس میں ہوتاہے۔ مشہور و بافیض حافظ قرآن حافظ ارشد اللہ کافی عرصہ تک حفظ قرآن کی خدمت انجام دی۔ ان کا انتقال 29جولائی شام چار بجے ان کے آبائی گاو ¿ں بگرا اول میںہوگیانماز جنازہ 8بجے اداکی گئی۔تدفین ان کے آبائی قبرستان میں ہوئی۔

مرحوم حافظ صاحب قرآن کی تعلیم کوزندگی بھر مشن کی طرح فروغ دیا۔ شعبہ ¿ حفظ میں اپنے بہتر تعلیمی طرےقہ کاروتربیت کے انداز کی وجہ نمایاں حیثیت کے حامل تھے۔ اپنے حسن تدریس کے سبب کافی معروف ومقبول بھی تھے۔ آپ کے سینکڑوں تلامذہ اقطاع عالم میں پھیلے ہوئے ہیں دینی خدمت کے ساتھ ساتھ زندگی کے مختلف شعبہ میںکارہائے نمایاں انجام دے رہیں ۔

ان کے شاگردوں میں کئی مشہور ومعروف عالم دین بھی ہیں۔ مرحوم کو دینی خدمت کا جذبہ وراثت ملا تھا۔ آپؒ کے والد محترم مولانا جماعت اللہ صاحب رحمتہ اللہ علیہ ایشیاءکی عظیم دینی درسگاہ دارالعلوم دیوبند کے کافی وقت تک سفیر تھے۔یہ اطلاع مولانا سراج احمد حمیدی مدنی منزل سمریاواں نے دی اور تمام مسلمانوں خصوصا ان کے شاگردوں سے ایصال ثواب کی درخواست کی ہے۔