فرانس سے ایک اچھی خبر

19

*فرانس سے ایک اچھی خبر*
آج کی تاریخ میں فرانس اہانت رسول صلی اللہ علیہ وسلم کا مرتکب ہی نہیں بلکہ مرکز بن گیا ہے۔ملک کا موجودہ صدر میکرون مرتکبین کی پشت پناہی نہیں بلکہ کھلی حمایت کا اعلان کرتا ہے، اسے اظہار آزادی کا نام دیتا ہے، گستاخانہ خاکوں کو طشت از بام کرتا ہے اور اسے درودیوار میں چسپاں کرنے کی بات کہتا ہے، تو وہیں دوسری طرف خدا اپنے حبیب محمد صلی اللہ علیہ وسلم کی عظمت کوفرانس کے قلب وجگر میں جاگزیں کررہاہے، قران اس موقع سے یہ اعلان کرتا ہے:”البتہ وہ لگے ہوئے ہیں ایک داؤ کرنے میں، اور میں لگا ہوا ہوں ایک داؤ کرنے میں "(سورہ طارق:16)یہ آیت قرآن کی یہ کہتی ہے کہ منکرین اسلام شکوک وشبہات کی فضاء قائم کرنا چاہتے ہیں،مختلف تدبیریں کرتے ہیں اور دین حق کو ابھرنے اور پھیلنے سے روکنے کی ناپاک کوششیں کرتے ہیں، مگرخدائی تدبیر سے وہ سبھی ناآشنا ہیں،خدا کی تدبیر بڑی لطیف ہوتی ہے، یہ اندرہی اندر کام کرتی ہے،انسانی تمام شازشوں کو ناکام کردیتی ہے،اسلام اور پیغمبر اسلام کے خلاف بنے گئے مکر وفریب کے جال کو توڑ پھوڑ دیتی ہےانسانی چال کو ناکام کردیتی ہے، اوران کے سب داؤ پیچ کوخود انکی طرف واپس کردیتی ہے ۔
اس مضمون کو ذہن میں محفوظ رکھتے ہوئے لیجئے اب فرانس سے ایک اچھی خبر آرہی ہے،معروف ومشہور صوفی پیٹرونین نامی فرانس کی عیسائی سماج سیویکاچارسال بعدبروز جمعہ اپنے ملک پہونچی ہیں، صدر میکرون خود ائر پورٹ پرموصوفہ کے استقبال میں موجود ہیں،جب وہ طیارہ سے باہر آتی ہیں تو مکمل حجاب میں ہیں،انہوں نےمیڈیا سے روبرو ہوکر یہ اعلان کردیا ہے کہ”Now I am Muslim "وہ اب مریم ہیں ،اور مذہب اسلام میں داخل ہوچکی ہیں، گذشتہ چار سالوں سے افریقی ملک مالی میں چار لوگوں کے ساتھ اسے ودروہیوں نے قیدی بنالیا تھا، اس موقع پر وٹیکن سیٹی کے پوپ نے اس کی رہائی کے لیے اپیل کی تھی،اس سے بہن مریم کی فرانس میں مقبولیت کا اندازہ ہوتا ہے،یہ خبر میڈیا ٹوڈے ٹی وی نےدی ہے ۔ہمیں رب لم یزل ولایزال کا شکرگزار بندہ بن جانا چاہیے کہ نظام الہی اور محمد صلی اللہ علیہ وسلم کی سیرت اس بات کی شہادت دیتی ہےکہ جو آقائے نامدار محمد صلی اللہ علیہ وسلم کا (نعوذباللہ)سر قلم کرنے چلے تھے’ہدایت انہیں بھی ملی ہے،بلکہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم کی زبان مبارک سے حضرت عمر رضی اللہ عنہ کی شان میں یہ جملے بھی ادا ہوئے ہیں:”کہ میرے بعد اگر کوئی نبی ہوتے تو وہ عمر ہیں "(حدیث )یہ خاکے بنانے والوں کے قلوب بھی خدا کی انگلیوں کے درمیان ہان کےدلوں میں خدااس وقت اپنے حبیب کبریا محمد مصطفی کا خاکہ بنا رہا ہے، اوراپنے آخری نبی کی محبت کو پیوست کررہا ہے۔قران وحدیث کے مطالعے سے یہ بات واضح ہےکہ محمد صلی اللہ علیہ وسلم پوری نوع انسانیت کے لئے بھیجے گئے ہیں، اور آپ صلی اللہ علیہ وسلم کو پوری دنیا کے لئے رحمت بناکر مبعوث کیا گیا ہے،اس موقع پر ہم مسلمانوں کابھی یہ فرض بنتا ہے کہ ہم صرف اس نعرہ کو بلند نہ کریں کہ ہمارے رسول کی اہانت ہوئی ہے بلکہ یہ رحمت للعالمین کی اہانت ہوئی ہے،یہ پوری نوع انسانیت کی توہین ہے،جسکی انسانی برادری کی طرف سے بھی قطعی اجازت نہیں ہوسکتی ہے۔
ہمایوں اقبال ندوی،ارریہ
رابطہ،9973722710