اندھ وشواش اور چیون پراش

32

چیون پراش نقاہت اور عام کمزوری کی مقبول عام دوا ہے.. اس کو دوا بھی اس لئے کہتے ہیں کہ یہ دواساز کمپنیوں کی مرہون ہے اور ایک پروڈکٹ ہے.. پہلے خمیرے لبوب اور معجون ہوا کرتے تھے.. اب وہ سب چیون پراش کا ڈھیلا ڈھالا چولا پہن چکے ہیں..عناد، نفور، اور ہندی کرن کی چاٹ نے سارے یونانی نام بھی چرالئے.. چرایا نام ہی جاسکتا ہے کام نہیں… بیچارہ روح تازہ کرنے والا شربت، شربت "روح افزا” بھی دست درازی اور بدطینت دست برد سے نہیں بچتا. ہر رمضان میں اس کے اسٹاک کی پریشانی آتی ہے..
شان نزول اس گفتگو کا یہ ہے کہ آج وزارت صحت نے ایک ہدایت نامہ جاری کیا ہے، کہ مابعد کووڈ شفایاب مریض چیون پراش استعمال کریں.. میں ہدایت نامے میں ڈھونڈتا رہا کہ آگے کہیں "چیون پراش، اتپادت پتنجلی” کے ساتھ رام دیو کی تصویر بھی ہونی چاہئے.. لیکن خیر ایسا نہیں تھا، شاید ایک دو سال میں ہوجائے گا.. چیون پراش بیدھ ناتھ، ڈابر جیسی کمپنیاں بھی بناتی ہیں، لیکن جو طاقت رام دیو کی پتنجلی کے چیون میں ہوگی وہ دوسری کمپنیوں کے پروڈکٹ میں ہو نہیں سکتی.. مجھے پتہ نہیں لیکن گمان غالب ہے کہ رام دیو کا چیون پراش، گئو ماتا کے آشیرواد سے بھی آبھاری ہوگا.. ظاہر ہے ماتا کا آشیرواد پراپت پروڈکت اسیمت شکتی مان، اور بلی دانت ہوگا.. مجھے اب کوئی حیرت نہیں ہوتی کہ حکومت کا محکمہ آیوش جب چار مسلمہ طریقہائے علاج کا نگران و نگہبان ہے تو، دوا کے استعمال کے لئے جاری کردہ ہدایت میں، تنہا ایوروید پروڈکٹ ہی کیوں درج کرتا ہے.. بلکہ تعجب اس پر ہے کہ پراچین کال کی ساری بدھی مانی رکھنے والے رام دیو کی "پتنجلی” کا نام کیوں کر بھول بیٹھا ہے..خیال رہے کہ پتنجلی کے” چیون پراش” کے سیون میں یونانی، سدھا، اور ہومیو پیتھی دواؤں کے سیون جیسی بے احتیاطی کی غلطی ہرگز نہیں ہونی چاہیے، ورنہ اعصاب مضبوط، اور دماغ اس قدر تیز ہوسکتا ہے کہ پٹرل 35 روپیہ لیٹر بکوانے کی یاددہانی اور مطالبہ کرسکتا ہے. اور کالا دھن 2013 تک ہرسال 16 لاکھ کروڑ ہندوستان کی اکانومی سے نکل کر باہر جانے کا حساب کتاب بتانے لگ سکتا ہے .. اگر آپ نے ٹھیک سے، اس چیون پراش کا سیون کرلیا تو آپ یہ حساب بھی لگانے میں سکچھم ہو سکتے ہیں کہ پھر توپچھلے 6-7 سال میں بھارت سرکار کم از کم 500-600 بلین ڈالر کی کمائی پٹرول بیچ کر ہم غریب دیش واسیوں سے کما چکی ہے. اور اگر آپ اتی سکچھم ہوگئے تو یہ حساب بھی کرپائیں گے کہ اسی عرصے میں بھارت میں کم ازکم 120 لاکھ کروڑ روپیہ مالیت کا کالا دھن باہر جانے سے رک گیا.. اور چوکس چوکیداری کے کارن یہ سارا دھن دیش بھکت حکومت کے خرانہ عامرہ میں جمع ہوگیا ہوگا .. یہ سالانہ رک جانے والی رقم ہے.. جو باہر ایک ہزار لاکھ کروڑ کی رقم جاچکی تھی وہ ابھی شمار میں نہیں ہے،جس کو سال بھر میں لانا تھا..
میں نے ابھی چیون پراش کا سیون نہیں کیا ہے، تو اتنا سمجھ سکا ہوں، اگر آپ سال چھ ماہ اس کا سیون کرلیں تو مجھ سے زیادہ سٹیک کھاتہ داری کرسکیں گے.. یاد رہے :
چیون پراش /اتپادن پتنجلی/گاؤ موتر سے ادھک شکتی پراپت… بابا رام دیو کا آشیرباد پراپت… تجویز کنندہ :بھارت سرکار…..
یاد رہے کہ اندھ وشواش سے آزادی کا چیون پراش ابھی اگلے کئی دہائیوں تک آنے کا کوئی امکان نہیں ہے..