کورونا وائرس جسم کے اعضا کو کر رہا برباد

55

ملک میں تیزی سے بڑھتے کورونا وائرس کے انفیکشن کے درمیان کئی خوفناک معاملے بھی سامنے آ رہے ہیں۔ کورونا وائرس پر کی گئی نئی تحقیق میں پتہ چلا ہے کہ کورونا وائرس انسانی جسم میں داخل ہونے کے بعد الگ الگ اعضا کو متاثر کرتا ہے۔
انفیکشن سنگین ہونے پر پھیپھڑے، کڈنی اور دیگر کئی اعضا برباد ہو جاتے ہیں۔ ایسے میں کورونا وائرس کی رپورٹ منفی آنے کے بعد بھی کورونا سے متاثر ہو چکا شخص دیگر بیماریوں سے جوجھتا رہتا ہے۔
دی لینسٹ مائیکروب میں شائع ایک تحقیقی مطالعہ میں بتایا گیا ہے کہ کورونا وائرس سے اب تک جن مریضوں کی موت ہوئی ہے ان کے پھیپھڑے یا کڈنی بری طرح سے تباہ ہو گئے تھے۔ انگلینڈ میں پوسٹ مارٹم رپورٹ پر ایمپیریل کالج لندن اور ایمپیریل کالج ہیلتھ کیئر این ایچ ایس ٹرسٹ نے یہ تحقیق کی ہے۔
تحقیق میں پایا گیا ہے کہ کورونا سے ہونے والی موت میں دس میں سے نو مریضوں کے دل، کڈنی اور پھیپھڑے میں تھرومبوسس یعنی خون کے تھکے جمے ہوئے ملے۔ اس تحقیق پر کام کر رہے ڈاکٹر مائیکل نے کہا کہ یہ کورونا مریضوں کے لئے چونکانے والا معاملہ ہے۔ کورونا وائرس پھیپھڑوں کو بری طرح سے تباہ کر دیتے ہیں جس سے مریض کی موت ہو جاتی ہے۔
اسی طرح ایمپریل کالج کے اسپتالوں میں 22 سے 97 سال کی عمر کے کورونا مریضوں کی موت کے بعد ان کی پوسٹ مارٹم رپورٹ کی جانچ کی گئی۔ اس تحقیق میں پایا گیا کہ کورونا مریض کی کڈنی میں کورونا وائرس نے بری طرح سے چوٹ پہنچائی تھی اور آنتوں میں سوجن آ چکی تھی۔