مسلم سیاسی پارٹیوں میں باہمی اتحاد ضروری : مولانا آفتاب اظہر صدیقی

38

پوٹھیا، کشن گنج 19/ اگست (روزنامہ نوائےملت) راشٹریہ علماء کونسل کے صوبائی انچارج مولانا آفتاب اظہر صدیقی نے سیاسی جماعتوں کے اتحاد پر فکر مندی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان میں اتحاد کی سیاست کا چلن عام ہوگیا ہے، بیشتر صوبوں میں اتحاد کی حکومت ہے۔ ایسے میں مسلم سیاسی جماعتوں کو بھی وقت رہتے اس پر عمل کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان میں نام نہاد سیکولر پارٹیاں آپس میں لڑتی بھڑتی بھی ہیں، ایک دوسرے پر الزامات بھی لگاتی ہیں اور پھر الیکشن آتے ہی گٹھ بندھن بھی کرلیتی ہیں، لیکن یہی نام نہاد سیاسی جماعتیں مسلم پارٹیوں سے اس طرح دور بھاگتی ہیں جیسے اذان سن کر شیطان۔ حالانکہ ان میں سے ہر نام نہاد سیکولر پارٹی کا چولہا مسلمانوں کے ووٹ سے ہی جل رہا ہے، انہیں مسلمانوں کا ووٹ تو چاہیے؛ لیکن مسلمان کی حصہ داری نہیں۔

مولانا آفتاب اظہر صدیقی نے کہا کہ اب مسلمانوں کو اپنے سیاسی پلیٹ فارم کو مضبوط بنانے پر غور کرنے کی ضرورت ہے اور یہ اتحاد کی طاقت کے بغیر نہیں ہوسکتا، جب نام نہاد سیکولر سیاسی جماعتیں ہم سے اتحاد کرنا نہیں چاہتی ہیں تو ہمیں خود آپس میں اتحاد کرکے اپنی طاقت کا مظاہرہ کرنا چاہیے، ضرورت اس بات کی ہے کہ تمام مسلم سیاسی پارٹیاں ایک ساتھ مل کر مختلف صوبوں کے انتخابات میں اکثر یا تمام سیٹوں پر طبع آزمائی کریں اور اپنی قیادت کی اہمیت بتاکر مسلمانوں کی ذہن سازی کریں، پھر آہستہ آہستہ دوسرے اقلیتی طبقوں میں اپنی پکڑ بنائیں۔ مولانا نے یہ بھی کہا کہ اگر دس مسلم سیاسی جماعتیں بھی مل کر بہار کے آنے والے اسمبلی انتخابات میں تمام سیٹوں پر الیکشن لڑلیں تو یہ کسی انقلاب کا پیش خیمہ ثابت ہوسکتا ہے۔
…………………….