جامعہ حسنی للبنات میں آغاز درس بخاری شریف

30

اے آر سرسیاوی

شہر کلکتہ کا واحد ادارہ جامعہ حسنی للبنات جی جے خان روڈ کولکاتا 39 جس نے 2016 میں ملت کی بچیوں کو دینی تعلیم و تربیت سے آراستہ کرنے کا بیڑا اٹھایا آج اس کے اراکین و منتظمین اور معلمین و معلمات کی خوشیوں کا ٹھکانا نہ تھا جب جامعہ کے مؤقر استاذ ریاست بنگال کے مشہور عالم دین حضرت مولانا محمد عرفان صاحب قاسمی سال فراغت کی بچیوں کے سامنے صحیح بخاری کے ترجمة الباب ابتدائی آیات اور حدیث انما الاعمال بالنیات کی تشریح فرمارہے تھے یعنی شہر کلکتہ میں پہلی بار بچیوں کے کسی ادارہ میں اصح الکتب بعد کتاب اللہ کا درس ہورہا تھا جسے ان شاءاللہ پایۂ تکمیل تک پہنچنا ہے ۔ حضرت مولانا محمد عرفان صاحب نے امام بخاری کی ثقاہت ، اقسام وحی ، باب بدء الوحی اور حدیث نیت میں مطابقت اور علوم البخاری فی تراجمہ وغیرہ عناوین کو سامنے رکھتے ہوئے قدرے شرح و بسط کے ساتھ گفتگو فرمائی پھر وطن عزیز کے ممتاز عالم دین ،

مایہ ناز بیباک خطیب ، رکن آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ حضرت مولانا ابوطالب صاحب رحمانی مدظلہ العالی نے وقت و حالات کو سامنے رکھتے ہوئے علماء کے مرتبہ و مقام اور ان کی قدر و قیمت پر قیمتی باتیں ارشاد فرمائیں نیز گھر کی تعمیر و تشکیل اور اولاد کی دینی و اصلاحی تربیت میں خواتین کے کردار پر روشنی ڈالی اور حضرت مولانا عبدالمتین صاحب قاسمی نے مختصر اور جامع دعاء فرمائی ۔ جامعہ کے روح رواں مفتی عبدالمعید صاحب قاسمی نے شہر کے تقریبا پچاس شرکاء ائمہ و اساتذہ علماء کرام کا شکریہ ادا کیا اور جامعہ کی یہ تاریخی مجلس طعام ماحضر پر خیر و برکت اور جامعہ کے پلیٹ فارم سے کی جانے والی کوششوں کی دعاء پر اختتام پذیر ہوئی ۔