گلناز کے قاتلوں کو پھانسی دی جائے: شاہنوازبدرقاسمی سمری بختیارپور کے رانی باغ میں ویشالی کی بیٹی کو انصاف دلانے کیلئے کینڈل مارچ

34

سہرسہ، ویشالی کی مظلوم بیٹی گلناز خاتون کو انصاف دلانے کیلئے پورے ملک میں احتجاج ہورہا ہے، شادی کا مطالبہ نہ ماننے پر زندہ جلانے والے ظالموں کو فوری گرفتار کرکے پھانسی دی جاۓ یہ مطالبہ آج سمری بختیار پور کے رانی باغ میں مقامی نوجوانوں نے کینڈل مارچ کے دوران کیا، احتجاجی جلوس سے خطاب کرتے ہوئے مشہور سماجی کارکن شاہنوازبدرقاسمی نے کہاکہ ویشالی کا یہ حادثہ پورے ملک پر ایک بدنماداغ ہے اس واقعہ کی جتنی مذمت کی جاۓ وہ کم ہے، انہوں نے کہاکہ انصاف کا یہی تقاضہ ہے کہ حکومت بہار اس کیس میں تعصبانہ کردار ادا نہ کرے، پولیس افسران نے جان بوجھ کر اس حادثہ کو چھپانے کا کام کیا ہے جو بیحد تشویش ناک ہے، اس کے خلاف کیس درج ہونے کے باوجود اٹھارہ دن بعد صرف ایک مجرم کو گرفتار کیا گیا ہے سرکار اور افسران مل کر مجرمین کو بچانا چاہتے ہیں، شاھنوازبدر نے متاثرہ فیملی کو ایک سرکاری نوکری اور کم ازکم 50لاکھ روپے کی مالی مدد کا بھی مطالبہ کیاہے-
IMG 20201119 WA0003
علی گڑھ مسلم یونیورسٹی طلباء یونین کے لیڈر ابوالفرح شازلی نے کہاکہ بہار حکومت اس واقعے کیلئے ذمے دار ہے،نتیش سرکار مظلوم بہن کو انصاف دلانے میں کوتاہی سے کام نہ لیں ورنہ انجام بہت برا ہوگا، جاپ کے کے ریاستی سیکریٹری پن پن یادو اور راجد کے بلاک صدر ہلال اشرف نے بھی گلناز کیس پر سخت ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے قصورواروں کو فوری گرفتار کرکے پھانسی دینے کا مطالبہ کیا اور کہاکہ جب تک ویشالی کی بیٹی کو انصاف نہیں ملے گا ہمارا احتجاج جاری رہے گا- اس موقع پر سمری بختیارپور کے مختلف گاؤں سے آۓ ہوۓ نوجوان بڑی تعداد میں موجود رہے-