کشن گنج دورے پر ڈاکٹر تسلیم رحمانی۔SDPI کی ممبر سازی پروگرام کاانعقاد

43

کشن گنج کی سرزمین پر ڈاکٹر تسلیم رحمانی صاحب اور صوبائی صدر نسیم اخترصاحب کا ضلع کمیٹی کے ممبران اور دانشوروں کی جانب سے پرجوش استقبال کیاگیا۔ڈاکٹر رحمانی نے یہاں شہرکے کمیونٹی ہال میں ممبر سازی پروگرام میں پارٹی کارکنان اور دانشوروں سے خطاب کیا۔سینکڑوں فعال سماجی وسیاسی کارکنان اور دانشوروں سے متبادل سیاست کے موضوع پرتبادلہء خیالات کیا۔اورایک دیگر پروگرام میں پارٹی کے بوتھ کمیٹیوں کے ذمہ داروں سے الیکشن کی تیاری پر مذاکرہ کیا گیا۔
بہار اسمبلی الیکشن کے لئے SDPI کمرکس چکی ہے، پارٹی کے تئیں بڑھتی ہوئی عوامی حمایت کو دیکھتے ہوئے SDPIزیادہ سے زیادہ سیٹوں پر انتخابی مقابلے کا ارادہ کرچکی ہے،سبھی ضلعوں میں پارٹی بوتھ کمیٹی کے لیڈروں سے لے کر زمینی سطح پر کام کرنے والےکارکنان وممبران کی نششتیں منعقد کی جارہی ہیں، کشن گنج کے سبھی اسمبلی سیٹوں پر چناؤ لڑنے کی تیاری میں ہزاروں کارکنان زمینی سطح پر جدوجہد کررہے ہیں۔
قومی سکریٹری ڈاکٹر تسلیم رحمانی نے کارکنوں اوربوتھ سطح کے لیڈروں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ SDPIبہار میں ایک نئے سیاسی متبادل کے طور پر تیزی سے ابھری ہے، پارٹی اس دفعہ اسمبلی انتخابات میں مضبوط شکل میں سامنے آئے گی اور کئ سیٹوں پر جیت درج کرے گی،ہماری تیاری صوبہ کی اکثر اسمبلی سیٹوں پر چل رہی ہے اور اس بار این ڈی اے اور عظیم اتحاد کو کڑی ٹکر دینے کے لئے پارٹی تیار ہے۔
ڈاکٹر رحمانی نے سیاسی غلامی کو ترک کرتے ہوئے سماج اور ملک کے مفاد میں جدوجہد کی سیاست کرنے اپیل کی۔انہوں نے بہار کے سیلاب اور بے روزگاری جیسے اہم بنیادی مسائل پر نتیش کمار اور این ڈی اے اتحاد کی ناکامی پر تنقید کی تو وہیں مہاگٹھ بندھن جیسے لیڈر شپ سے عاری گروہ کو بھی بہارکے لئے نقصاندہ بتایا۔
ممبر سازی پروگرام میں سینکڑوں سماجی کارکنان اور دانشوران پارٹی میں شامل ہوئے۔ضلع کے کئی دانشوروں نے ایم آئی ایم اور الگ الگ پارٹیوں سے مایوس ہوکر SDPIکا دامن تھاما، ڈاکٹر تسلیم رحمانی صاحب اور نسیم اختر صاحب نے نئے ممبران کو پارٹی کا پرچم سونپا۔
پروگرام میں ضلع کشن گنج کے پارٹی صدر ڈاکٹر ذکی انور، ضلع جنرل سکریٹری محمد شقیم،سبھی اسمبلی حلقوں کے ذمہ داران اور شہر کے دانشوران وسماجی کارکنان موجود رہے۔