کسانوں کے مسائل کو لیکر مولانا ارشد مدنی سے ملا کسانوں کا وفد !

44

دیوبند ۔ 05؍ دسمبر 2020
پچھم پردیش مکتی مورچہ کے قومی صدر بھگت سنگھ ورما کی قیاد ت میں ایک وفد نے آج کسانو ںکے مسائل کو لے کر جمعیۃ علماء ہند کے قومی صدر مولانا ارشد مدنی سے ملاقات کی ۔

اس دوران بھگت سنگھ ورما نے ملک کے پریشان حال کسانوں کے مسائل کو اٹھانے کے لئے مولانا ارشد مدنی سے کہا ۔ بھگت سنگھ ورما نے کہا کہ آج بی جے پی کی مرکزی حکومت اور ریاست اترپردیش کی حکومت برابر کسانو ں کا استحصال کررہی ہے ۔

ملک کا کسان اپنے کھیت اور گھریلو پریشانیو ںکو چھو ڑکر لاکھوں کی تعداد میں کسان دہلی کے چاروں طرف ڈیرہ جمائے ہوئے ہیں۔

انہو ںنے مولانا ارشدمدنی کو بتایا کہ کسان اپنے ٹریکٹروں میں کئی مہینوں کا راشن لے کر دہلی پہنچے ہیں اس کے باوجود بھی ملک کے وزیر اعظم نریندر مودی کسانوں کی بات سننے کو تیار نہیں اور ان کے مسائل حل کرنے کے لئے سنجیدہ نہیں ہے۔

بھگت سنگھ ورما نے مولانا ارشد مدنی سے کسانوں کے مسائل حل کرانے کے لئے مدد مانگی اور کہا کہ ملک کے کسان کے ساتھ اس طرح کا رویہ حکومتوں کو نہیں کرنا چاہئے جس طریقے پر بی جے پی کی حکومتوں نے ملک کے نہتے کسانوں پر لاٹھی چارج ، آنسو گیس اور پانی بوچھار کرکے کیا ہے، یہ ملک کے وزیر اعظم نریندر مودی کے لئے شرمناک ہیں ۔

وزیر اعظم کو چاہئے کہ دہلی میں بیٹھے کسانوں کے سبھی مسائل کو فوراً بذات خود حل کرنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ اس مرتبہ ملک کا کسان اپنے مسائل کو حل کراکر ہی دہلی سے گھر واپس جائے گا ۔

بھگت سنگھ ورمانے کہا کہ اس وقت کسان قرض مند ہیں ، کسانوں کو ان کی فصلوں کی واجبی قیمت نہیں مل پارہی ہے ۔ اس دوران مولانا ارشد مدنی نے وفد کی گفتگو سننے کے بعد یقین دہانی کرائی کہ وہ کسانوں کے ساتھ ہیں۔

اس وفد نے مورچہ کے ریاستی جنرل سکریٹری عاصم ملک ، سردرا گلوندر سنگھ بنٹی، واجد علی تیاگی، ولی اللہ، ونود سینی وغیرہ موجود تھے۔