نتیش کمار نے کہا کہ بہار کے کوسی میچی ندی منصوبے کو قومی ندی لنک منصوبے میں شامل کیا جانا چاہئے

55

وزیر اعلی نتیش کمار نے کہا ہے کہ بہار کے کوسی میچی ندی منصوبے کو قومی ندی لنک منصوبے میں شامل کیا جانا چاہئے۔ اس سے دو لاکھ 14 ہزار ہیکٹر رقبے کو فائدہ ہوگا۔ ندی کو شامل کرنے سے سیلاب کا امکان کم ہوجائے گا اور لوگ زیادہ سے زیادہ پانی استعمال کرسکیں گے۔ سیلاب پر قابو پانا بھی آسان ہوگا۔

وزیر اعظم نریندر مودی نے پیر کو ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے سیلاب سے متاثرہ چھ ریاستوں کے ساتھ جائزہ اجلاس منعقد کیا۔ اس موقع پر ، وزیر اعلی نے ان کے سامنے یہ مطالبہ کیا۔

وزیراعلیٰ نے سیلاب جائزہ اجلاس کے لئے وزیر اعظم کا شکریہ ادا کیا۔ کہا کہ شمالی بہار سیلاب سے پوری طرح متاثر ہے۔ ریاست میں ستمبر تک سیلاب کا امکان ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ سنہ 2016 میں ریاست کے 13 اضلاع گنگا ندی کی وجہ سے سیلاب سے متاثر ہوئے تھے۔ فرقہ بیراج سے نالے میں زیادہ وقت لگتا ہے ، جس کی وجہ سے گنگا ندی کا پانی مزید علاقوں میں مزید علاقوں میں پھیلتا رہتا ہے۔ اس پر بھی غور کرنے کی ضرورت ہے۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ گنگا ندی سے متعلق بھارت اور بنگلہ دیش کے معاہدے کے مطابق ، فرقہ بیراج پر گنگا کے نکاسی آب کو 1500 کیوبک کو یقینی بنانا ہے۔ جبکہ گنگا کو بہار میں صرف 400 کیوبک پانی ملتا ہے۔ باقی 1100 کیوبک پانی بہار سے دریائے گنگا سے ہوتا ہے۔ اس طرح بہار میں گنگا کے پانی کے باوجود ریاست اس کو استعمال کرنے سے قاصر ہے۔

وزیر اعلی نے کہا کہ سال 2020-21 کے لئے 15 ویں فنانس کمیشن کے ذریعہ اسٹیٹ ڈیزاسٹر ریسپانس فنڈ (ڈیزاسٹر ریلیف فنڈ) کے لئے 1880 کروڑ کی فراہمی ہے۔ یہاں 20 فیصد ریاستی ڈیزاسٹر تخفیف فنڈ کی فراہمی ہے اور 80 فیصد ریاست ڈیزاسٹر رسپانس فنڈ میں تقسیم کیا گیا ہے۔ اس سلسلے میں مکمل وضاحت نہیں ہے۔ ریاستی ڈیزاسٹر تخفیف فنڈ کو الگ کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ ڈیزاسٹر ریلیف فنڈ میں 75 فیصد مرکزی اور 25 فیصد ریاستی فنڈز کی فراہمی ہے۔ ایک بار گرانٹ ایڈ ایڈ پر 25 فیصد رقم خرچ کرنے پر ایک ٹوپی ہے ، جسے ختم کیا جانا چاہئے۔

سرکاری خزانے پر بوجھ کم ہوگا
وزیراعلیٰ نے کہا کہ ڈیزاسٹر ریلیف فنڈ سے گرانٹ کی رقم کی حد ہٹانے سے ریاستی حکومت کے خزانے پر ہر سال اس تباہی کی وجہ سے مالی بوجھ کم ہوجائے گا۔ ہمیں امدادی امداد پر بہت خرچ کرنا ہے۔ ہم پہلے ہی ہر سیلاب سے متاثرہ خاندان کو چھ ہزار روپے کی گرانٹ دے رہے ہیں۔ سال 2017 میں 2385 کروڑ 42 لاکھ اور 2019 میں 2003 کروڑ 55 لاکھ روپے تقسیم کیے گئے تھے۔