نئی نسل کو دینی و عصری علوم سے آراستہ کرنا بہت ضروری ہے،احمد نصربنارسی صرف نو مہینے میں ریشمہ خاتون نے قرآن کریم حفظ کیا پوری بستی میں خوشی کی لہر،

52

 

ارریہ(توصیف عالم مصوریہ)

مکتب رحمانیہ مکی مسجد مصوریہ کی طرف سے ایک روزہ جلسہ دستار بندی حفاظ کرام کا عظیم الشان پروگرام پچھم ٹولہ مصوریہ میں 26 مارچ 2021 کو منعقد ہوا،اس اجلاس کی صدارت جناب حضرت مولانا سید احمد نصر بنارسی نے کی اجلاس کا آغاز قاری فرقان صاحب کی تلاوت اور حافظ محمد رضوان صاحب کی نعت سے ہوا،مولانا احمد نصر بنارسی نے اپنے صدارتی خطاب میں لوگوں میں لوگوں سے میل محبت کے ساتھ زندگی گزار نے کی تاکید کی،اور حسد جیسی گندی بیماری سے بچنے کی ہدایت کی اور کہا کہ اللہ نے قرآن مجید کی سورۃ بقرہ کی پہلی آیت میں ہم بندوں کو پہلے جاہلی بن جانے کا اشارہ دیا ہے،کیوں کہ جب تک انسان اپنے نہ جاننے کا اقرار نہ کرلے تب تک وہ علم سے آراستہ نہیں ہوسکتا ہے،اسی طرح انہوں نے اچھی باتوں کو اپنانے بری باتوں سے بچنے کی تلقین کی،مولانا محمد واصف قاسمی خطاب میں کہا کہ علم سے بڑھ کر کوئی دولت نہیں ہے، اس لئے سب لوگ اس دولت سے اپنی اولاد کو آراستہ کرنے کی فکر کریں،آج اس بچی نے گھر میں رہتے ہوے صرف نو مہینے میں قرآن مجید کو اپنے سینے میں محفوظ کرکے اس بستی کے نام کو روشن کر دیا ہے،اور سماج کی دوسری بچیوں کو بھی راستہ دکھانے کا کام کیا ہے،قاضی وصی احمد قاسمی نے اپنے خطاب میں اس قوم کے دو دشمن ہیں،ایک کانام ہے جہالت دوسرے کا نام ہے غربت،غربت کو دور کرنے کا اصلی اور بنیادی ذریعہ ہے علم اس لئے علم سے اپنی نسلوں کو آراستہ کیجیےُ،ساری پریشانیاں ختم ہوجائے گی،اور دینی علم کے ساتھ ساتھ عصری معیاری علوم سے بھی صرف بچوں کو ہی نہیں بلکہ بچیوں کو بھی آراستہ کرایے،قاری محمد اعظم صاحب ناظم دارالعلوم ‌اسیانی نے بھی عوام سے خطاب کیا اخیر میں صدر محترم ‌اور علماء کرام کے ہاتھوں حافظ محمد فیروز کے سر پر دستار اور حافظہ ریشمہ خاتون کے سر پر خمار باندھی گئی،اس پروگرام میں قاضی وصی احمد قاسمی نے نظامت کا فریضہ انجام دیا،جب کہ اجلاس کے کنوینر مکتب رحمانیہ کے استاذ جناب قاری مظہر حسین صاحب نے مہمانوں کا شکریہ ادا کیا،اجلاس میں خصوصاً مولانا عبداالرحیم قاسمی،مولانا عبدالرقیب قاسمی،قاری شمشاد صاحب،مولانا واصف قاسمی،مفتی صفدر حسین صاحب،مفتی اسداللہ،مولانا مناظر حسن،جناب داؤد صاحب،مکھیا محبوب صاحب،حافظ رہبرصاحب،مولانا عبدالرزاق صاحب،بھائی وثیق الرحمن وغیرہ شریک رہے،اس محلہ کے نوجوانوں نے اجلاس کو کامیاب بنانے میں اہم کردار اداکیا،مولانا احمد نصر بنارسی کی دعاء پر اجلاس اختتام پذیر ہوا،