بدھ, 30, نومبر, 2022
ہومنقطہ نظرموہن بھاگوت اور الیاسی ملاقات

موہن بھاگوت اور الیاسی ملاقات

موہن بھاگوت اور الیاسی ملاقات __
مفتی محمد ثناء الہدیٰ قاسمی
نائب ناظم امارت شرعیہ پھلواری شریف پٹنہ
موہن بھاگوت اور عمیر الیاسی کی ملاقات ان دنوں سر خیوں میں ہے ، چند روز قبل ۲۲؍ اگست کو پانچ مسلمانوں نے جن میں سابق ایم پی شاہد صدیقی، سابق چیف الیکشن کمشنر ایس وائی قریشی، سابق لفٹنٹ گونر دہلی نجیب جنگ، علی گڈھ مسلم یونیورسیٹی کے سابق وائس چانسلر ضمیر الدین شاہ اور تاجر سعید شروانی شامل تھے،آر ایس ایس چیف موہن بھاگوت سے ملاقات کی تھی، اس ملاقات کے بعد آر ایس ایس سر براہ موہن بھاگوت نے ان لوگوں سے ملنے کا منصوبہ بنایا جو نام کے اعتبار سے تو مسلمان ہیں، لیکن ان کی فکر اور ان کے تعلقات آر اس اس اور اس کی ذیلی تنظیموں سے مضبوط رہے ہیں، ان میں ایک نام آل انڈیا مسلم امام آرگنائزیشن کے سر براہ عمیر الیاسی کا ہے، عمیر الیاسی کستوربا گاندھی مارگ پر واقع ایک مسجد کے امام ہیں ان کی رہائش مسجد کے احاطہ ہی میں ہے، وہ اپنی غیر مسلم بیوی کے قتل میں عدالت سے سزا یافتہ بھی ہیں، انہیں یہ خوف ہے کہ عدالت میں زیر التوا فائل کبھی بھی کھل سکتی ہے، اس لیے انہوں نے آر ایس ایس سر براہ موہن بھاگوت کے وفد کا خیر مقدم کیا، اس وفد میں اندریش کمار ، رام لال اور کرشن گوپال بھی شامل تھے، عمیر الیاسی ان کی آمد سے اس قدر خوش ہوئے کہ انہیں ’’راشٹر پتا‘‘ تک کہہ ڈالا ، راشٹر پتا صرف ہندوستان میں گاندھی جی کے لیے استعمال ہوتا ہے، موہن بھاگوت نے ان کی خوشامد کو سمجھ لیا اور انہوں نے ان کی اصلاح کرتے ہوئے کہا کہ میں’’ راشٹر پتا‘‘ نہیں، ’’راشٹر کی سنتان‘‘ ہوں، بھاگوت اس کے بعد آزاد پور رواقع ایک مدرسہ بھی گیے، ٹی وی پر ان کے اس اقدام کو بڑھا چڑھا کر پیش کیا گیا اور باور کرایا گیا کہ آر اس اس کے نظریہ میں تبدیلی آئی ہے اور وہ مسلمانوں کو ساتھ لے کر چلنا چاہتی ہے، حالاں کہ اس کی حیثیت ’’ایں خیال است، ومحال است وجنون‘‘ سے زائد کچھ نہیں ، جب جمعیت علماء ہند کے قائد کی ملاقات کا کوئی اثر نہ آر اس اس پر پڑا اور نہ ہی ملک میں جاری نفرت کی سیاست پر تو یہ چند بیورو کریٹ اور عمیر الیاسی جیسے لوگ جن کی مسلم سماج میں کوئی پکڑ نہیں، کیا کر سکیں گے، اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ مکالمے جاری نہیں رہنے چاہیے، ضرور رہنے چاہیے، لیکن حقیقی مسلم قائدین کے ساتھ، تبھی کو ئی نتیجہ نکل سکے گا۔

توحید عالم فیضی
توحید عالم فیضیhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

- Advertisment -
- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے