ہومبریکنگ نیوزمولانا منت اللہ رحمانی پارا میڈیکل انسٹی ٹیوٹ میں افتتاح درس اور...

مولانا منت اللہ رحمانی پارا میڈیکل انسٹی ٹیوٹ میں افتتاح درس اور تقسیم انعامات کی تقریب کا انعقاد*

*مولانا منت اللہ رحمانی پارا میڈیکل انسٹی ٹیوٹ میں افتتاح درس اور تقسیم انعامات کی تقریب کا انعقاد*
*نائب امیر شریعت کی صدارت میں ہوا اجلاس، وزیر اقلیتی فلاح حکومت بہار جناب زماں خان بھی ہوئے شریک*

امارت شرعیہ بہار،ا ڈیشہ و جھارکھنڈ کے تحت چلنے والے مقبول و معروف ادارہ مولانا منت اللہ رحمانی پارامیڈیکل انسٹی ٹیوٹ پھلواری شریف میں آج مورخہ 02جنوری 2023کو نائب امیر شریعت بہار، اڈیشہ وجھارکھنڈ حضرت مولانا محمد شمشاد رحمانی قاسمی صاحب کی صدارت میں 2023-24 کے تعلیمی سال کے لیے درس کے افتتاح اور گزشتہ تعلیمی سال میں کامیاب ہونے والے طلبہ کو انعامات سے نوازنے کے لیے جلسہ برائے افتتاح درس و تقسیم انعام کا انعقاد کیاگیا۔اس اجلاس میں وزیر برائے اقلیتی فلاح حکومت بہار جناب زماں خان صاحب بھی بطور مہمان خصوصی شریک ہوئے۔
اجلاس کا آغاز بی ایم ایل کے 2022 بیچ کے طالب علم صداء اللہ فیضی کی تلاوت کلام پاک سے ہوا۔جبکہ مولانا احمد حسین قاسمی معاون ناظم امارت شرعیہ نے بارگاہ رسالت مآب صلی اللہ علیہ وسلم میں گلہائے عقیدت پیش کیا۔اجلاس کی نظامت کے فرائض نہایت خوش اسلوبی کے ساتھ مولانا منت اللہ پارامیڈیکل انسٹی ٹیوٹ کے ایڈمنسٹریٹر جناب ڈاکٹر سید نثار احمد صاحب اور انسٹی ٹیوٹ کے موقر استاذ جناب حسیب رضا صاحب نے انجام دیا۔اپنے صدارتی خطاب میں حضرت نائب امیر شریعت مد ظلہ نے تمام مہمانوں کا استقبال کیا اور ان کا شکریہ اداکیا،ساتھ ہی کامیاب ہونے والے تمام طلبہ و طالبات کو مبارک باد پیش کی، نیک خواہشات کا اظہار کیا اور ان کے روشن مستقبل کے لیے دعائیں دیں، نیز نئے داخل شدہ طلبہ کو قیمتی نصیحتیں کیں۔آپ نے طلبہ کو نصیحت کرتے ہوئے کہا کہ جو طلبہ انعام کے حقدار ہوئے ہیں وہ مبارکباد کے مستحق ہیں، لیکن جو نہیں ہوئے ہیں وہ مایوس نہ ہوں بلکہ ہر طالب کوشش کرے اور محنت کرے کہ اس کا نام بھی ایوارڈ یافتہ میں شامل ہوجائے۔آپ نے کہا کہ نیت کو درست کر کے، ہدف اور منصوبہ کی تعیین کر کے صحیح مقصد اورصحیح فکر کے ساتھ صحیح سمت میں محنت کیجائے گی تو کامیابی ضرور ملے گی۔آپ نے طلبہ کو مطالعہ اور محنت کی عادت ڈالنے کی تلقین کی۔آپ نے کہا کہ دین و ملت، ملک اور پوری انسانیت کو فائدہ پہونچانے کی نیت سے تعلیم حاصل کیجئے، کیوں کہ بہتر انسان وہی ہے، جو سب سے زیادہ انسانوں کے لیے مفید ہے۔آپ نے کہا کہ طلبہ کے لیے لگاتار سیکھنے کا جذبہ، سنجیدگی، وقار، متانت اور ڈسیپلن لازمی ہے،آپ لوگ جس ادارہ میں تعلیم حاصل کر رہے ہیں اس کو امارت شرعیہ اور اکابرعلماء سے نسبت حاصل ہے، اس نسبت کا احترام کیجئے، اپنے رہن،سہن، چال چلن، رکھ رکھاؤ، برتاؤ اور رویہ، اخلاق و کردار، طور طریقہ، نشست و برخاست اور علم و عمل سے اس ادارہ کی شان بڑھائیے اور امارت شرعیہ کے پیغام کو اپنے کردا ر و عمل سے عام کیجئے۔آپ ہماری امید و حوصلہ ہیں، آپ ملک کے مستقبل ہیں، اس مستقبل کو روشن کرنے کی محنت کیجئے۔ آپ نے مختلف میدانوں میں خاص طور پر تکنیکی تعلیم کے میدان میں امارت شرعیہ کی خدمات کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ حضرت قاضی مجاہد الاسلام قاسمی صاحب رحمۃ اللہ علیہ نے تکنیکی تعلیم کا جو چراغ روشن کیا تھا، اس کی روشنی بڑھتی جا رہی ہے اور ان شاء اللہ بڑھتی رہے گی۔قائم مقام ناظم مولانا محمد شبلی القاسمی صاحب نے کہا کہ بہار میں اور ملک کے دوسرے حصوں میں بہت سے تکنیکی تعلیم کے ادارے چل رہے ہیں، لیکن امارت شرعیہ کے تکنیکی ادارے سب سے ممتاز ہیں، اس لیے کہ یہاں صرف اچھی تعلیم ہی نہیں دی جاتی بلکہ ایک بااخلاق اور باکردار انسان بھی بنایا جاتا ہے، آپ نے کہا کہ جس وقت بہارمیں کوئی پرائیوٹ آئی ٹی آئی اور پرائیوٹ پارامیڈیکل انسٹی ٹیوٹ نہیں تھا، اس وقت امارت شرعیہ نے اس طرح کے ادارے قائم کر کے جہاں ملت کے نوجوانوں کے مستقبل کو روشن کرنے کی فکر کی، وہیں یہ بھی پیغام دیا کہ تعلیم میں کوئی تقسیم نہیں ہے، جس طرح مدرسہ کھولنا ضروری ہے، اسی طرح تکنیکی تعلیم کے ادارے قائم کرنا بھی قوم وملت کی بڑی خدمت ہے۔مہمان خصوصی جناب زماں خان صاحب وزیر اقلیتی فلاح حکومت بہار نے امارت شرعیہ کی خدمات کی تعریف و تحسین کرتے ہوئے کہا کہ امارت شرعیہ کے کاموں کی تعریف نہ صرف بہار بلکہ پورے ملک میں ہو رہی ہے، انہوں نے کہا کہ امار ت شرعیہ کے اداروں میں جو تعلیم و تربیت کا نظام ہے، جو ڈسیپلن ہے وہ مثالی اور قابل تقلید ہے۔انہوں نے قائم مقام ناظم امارت شرعیہ مولانا محمد شبلی القاسمی اور پھلواری شریف کے ایم ایل اے گوپال روی داس جی کے توجہ دلانے پر وعدہ کیا کہ پھلواری شریف کے علاقہ میں تعلیمی ترقی کے لیے جو بھی ممکن اقدام ہو گا وہ کریں گے اس کے لیے انہوں نے مشورہ کر کے کوئی لائحہ عمل طے کرنے کی یقین دہانی کرائی۔ استقبالیہ کلمات جناب مولانا سہیل احمد ندوی صاحب سکریٹری جنرل امارت شرعیہ ایجوکیشنل اینڈ ویلفیئر ٹرسٹ نے پیش کیاانہوں نے تمام مہمانوں کا شکریہ اداکرنے کے علاوہ کامیاب طلبہ کو مبارک باد دی اور نئے داخل طلبہ کے لیے بیش قیمت نصیحت کی، انہوں نے علم کے فضائل بیان کرتے ہوئے حضرت علی رضی اللہ عنہ کے اشعار سنائے جس کا مفہوم یہ ہے کہ عزت و احترام دلانے والی اور انسانو ں کو زینت بخشنے والی اصل چیز اور اصل دولت علم و ادب کی دولت ہے،انہوں نے طلبہ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ لوگ خوش قسمت ہیں کہ اللہ تعالیٰ نے آپ کو علم حاصل کرنے کے لیے منتخب کیا ہے۔آپ نے درس کی پابندی، دل سے اساتذہ کے احترام، تعلیم و تدریس کے تما م وسائل؛ کتاب، کاپی، درسگاہ، لیب اور لیب کے آلات سبھی کا احترام کرنے کی نصیحت کی۔آپ نے امارت شرعیہ کے اداروں کی خصوصیات بیان کرتے ہوئے کہا کہ تعلیم و تربیت کے ساتھ اخلاقی تربیت ہمارے اداروں کا امتیاز ہے۔آپ نے دو سالہ کارکردگی بھی پیش کی اور کہا کہ مولانا منت اللہ رحمانی پارامیڈیکل انسٹی ٹیوٹ دو سالوں میں پورے صوبہ میں چلنے والے تمام کالجوں میں اول مقام پر رہا اور یہاں کے طلبہ یونیورسٹی ٹاپر بھی رہے، انہوں نے بتایا کہ ہمارے ادارہ کا صد فیصد فرسٹ ڈویزن رزلٹ رہااور تمام طلبہ فرسٹ ڈویزن سے کامیاب ہوئے، انہوں نے بتایا کہ سب سے آخر میں ہم لوگوں نے داخلہ کا اعلان نکالا پھر بھی ساری سیٹیں پُر ہوئیں بلکہ ہمیں داخلہ کے لیے انٹرنس امتحان لینا پڑا، یہ ادارہ کی بہتر کار کردگی کی علامت ہے۔آپ نے اعلان کیا کہ اس تعلیمی سا ل میں جو طالب علم پورے سال صد فیصد حاضر رہے گا، اس کی کورس فیس میں سے دس ہزار روپئے کی تخفیف کی جائے گی۔اجلاس میں مقامی ایم ایل گوپال روی داس، چیئر مین پھلواری نگر پریشدجناب آفتاب عالم صاحب، وائس چیئر میں کے شوہر جناب فاروق اعظم عرف للن صاحب، بہار جدیو کے ریاستی صدر میجر اقبال حیدرنے بھی اظہار خیال کیا اور امارت شرعیہ کی تعلیمی خدمات کی تحسین و ستائش کرتے ہوئے کامیاب طلبہ کو مبارک باد دی اور ان کے روشن مستقبل کے لیے نیک تمناؤں کا اظہار کیا،ساتھ ہی نئے داخل طلبہ کوبھی دعاؤں سے نوازا۔
گذشتہ سیشن کے جن طلبہ و طالبات کو ایوارڈسے نواز ا گیا ان میں محمد مزمل بی ایم ایل ٹی 2019-23(فرسٹ پوزیشن)، سید شارق امان بی پی ٹی 2020-24(فرسٹ پوزیشن)، انتصاف کونین ڈی ایم ایل ٹی 2017-19(فرسٹ پوزیشن)، محمد سلمان ڈی ایم ایل ٹی2019-21(فرسٹ پوزیشن)، اعجاز احمد بی ایم ایل ٹی2019-23(سکینڈ پوزیشن)،ثمر رضوی بی پی ٹی 2020-24 (سکینڈ پوزیشن)، محمد مصباح حسن ڈی ایم ایل ٹی2017-19(سکینڈ پوزیشن)، محمدمحسن عالم ڈی ایم ایل ٹی 2019-21(سکینڈ پوزیشن)، عبد الرحمن بی ایم ایل 2019-23 (تھرڈ پوزیشن)، نوشاد علی بی پی ٹی 2020-24(تھرڈ پوزیشن)، ابصارحسین ڈی ایم ایل ٹی2017-19(تھرڈ پوزیشن)، محمد شعیب اختر ڈی ایم ایل ٹی 2019-21 (تھرڈ پوزیشن)کے نام شامل ہیں، ان کے علاوہ مسلسل حاضر رہنے کا انعام محمد شعیب بی ایم ایل ٹی 2021-25، نفیسہ حسن بی پی ٹی 2021-25اور محمد ربانی ڈی ایم ایل ٹی2021-23نے حاصل کیا۔ امارت انسٹی ٹیوٹ آف کمپیوٹر اینڈ الیکٹرونکس کے بی سی اے 2018-21میں پہلی پوزیشن حاصل کرنے والے محمد ثمیر احمد کو بھی ایوارڈ سے نوازا گیا۔ ان ایوارڈس کو امیر شریعت رابع حضر ت مولانا منت اللہ رحمانی،،امیر شریعت سادس حضرت مولانا سید نظام الدین،امیر شریعت سابع حضرت مولانا محمد ولی رحمانی اور قاضی القضاۃ حضرت قاضی مجاہد الاسلام قاسمی صاحب رحمہم اللہ کے نام سے موسوم کیا گیا تھا۔ یہ ایوارڈ کامیاب طلبہ کو مذکورہ بالا لوگوں کے علاوہ مولانا مفتی محمد ثناء الہدیٰ قاسمی نائب ناظم، مولانا مفتی محمد سہراب ندوی نائب، مولانا مفتی وصی احمد قاسمی نائب قاضی شریعت، جناب سید کمال وارث ایچ او ڈی مولانا منت اللہ رحمانی پارامیڈیکل انسٹی ٹیوٹ، جناب احسان الحق صاحب سوپول، جناب مولانا ڈاکٹراعجاز احمد سابق چیئر مین بہار مدرسہ بورڈ،جناب فضیل صاحب پرنسپل پارا میڈیکل، جناب ضیاء الدین صاحب اکیڈمیک انچارج پارا میڈیکل،جناب عرفان الحق صاحب پرنسپل آئی آئی سی ای کے ہاتھوں سے دیے گئے۔
اجلاس میں مولانا مفتی محمد سعید الرحمن قاسمی مفتی امارت شرعیہ،، جناب سمیع الحق صاحب،، جناب منہا ج عالم صاحب، جناب گوبندصاحب، جناب مبشر صاحب، جناب منہا ج عالم صاحب اساتذہ پارا میڈکل، جناب امتیاز صاحب اکاؤنٹنٹ پارا میڈیکل، جناب نوشاد صاحب، اسسٹنٹ اکاؤنٹنٹ، منہاج عالم صاحب وارڈ پارشد،مولانا رضوان احمد ندوی معاون مدیر نقیب، مولانا ابو الکلام شمسی معاون ناظم،، جناب شمیم احمد، جناب کوثرخان، جناب شہنواز صاحب جناب رضوی صاحب استاذ آئی آئی سی ای، جناب عباد ہ نسیم آئی آئی سی ای،ڈاکٹر سید یاسر حبیب، ڈاکٹر تقی امام، مشاہد قادری، مولانا محمد ارشد رحمانی آفس سکریٹری امارت شرعیہ، مولانا شہنواز عالم مظاہری، مولانا منہاج عالم ندوی کے علاوہ طلبہ و کارکنان کی بڑی تعداد شریک رہی۔ اجلاس کا کامیاب بنانے میں مولانا منت اللہ رحمانی پارا میڈیکل و آئی آئی سی ای کے تمام ذمہ داران، اساتذہ و عملہ کا کلیدی کردار رہا۔ آخر میں حضرت نائب امیر شریعت کی دعا پر اجلاس کا اختتام ہوا۔

توحید عالم فیضی
توحید عالم فیضیhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

- Advertisment -
- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے