مولانا معزالدین قاسمی کی رحلت سے امت کا ناقابلِ تلافی نقصان: علماء میوات کا اظہار تعزیت

94

جمعیت علماء ہند کے سرکردہ ممبران و ارکان میں سے انتہائی ذی صلاحیت،تقریری و تحریری میدان کے عظیم شہسوار،خادم قوم وملت ،فعال اور فکرمند عالم دین امارتِ شرعیہ کے ناظم
حضرت مولانا معز الدین احمد قاسمی کی وفات علمی حلقوں میں چند لمحات میں ہی آگ کی طرح پھیل گئی،اور مختصر سے وقت میں پورے ہندوستان میں صف ماتم بچھ گئی۔ کیونکہ مولانا معز الدین احمد صاحب ایک انتہائی ذی وقار شخصیت کے مالک ہونے کے ساتھ، انتہائی زیرک، صاف دل و صاف گو ، اور امت مسلمہ کا قیمتی اثاثہ تھے، مزید برآں ہندوستان کے چنیدہ جید علماء دین میں آپ کا شمار تھا۔ان خیالات کا اظہار مولانا یحییٰ کریمی صاحب صدر جمعیتہ علماء ہریانہ پنجاب ہماچل چنڈی گڑھ نے کیا۔
اور مولانا نے مزید کہا کہ ایسی شخصیات عصر حاضر میں نایاب نہیں تو کمیاب ضرور ہیں۔
بارگاہِ باری تعالٰی میں دعاء گو ہوں کہ اللہ تعالیٰ حضرت کی مغفرت فرماکر اعلی علیین میں مقام عطاء فرمائے اور حضرت کے متوسلین و منتسبین اور پسماندگان کو صبر جمیل عطاء فرمائے اور امت مسلمہ کو حضرت کا بدل عطاء فرماکر اس عظیم ملی خسارے کی تلافی کے اسباب پیدا فرمائے
قاری محمد راشد بڈیڈوی مہتمم مدرسہ سعادت القرآن، قاری محمد اسلم بڈیڈوی صدر جمعیت علماء متحدہ گروگرام، مولانا صابر مظاہری ساکرس،مفتی محمد سلیم قاسمی بنارسی صدر جمعیت علماء گوڑگانواں، مولانا توفیق فونسیتہ،مولانا اسلم معینی آلی میو،مولانا عالم گمٹ،مدرسہ افضل العلوم عیدگاہ روڈ مہوں کے مہتمم ماسٹر قاسم، قاری زکریا امام نگر، سمیت میوات کے درجنوں علماء کرام نے مولانا معز الدین کی وفات پر اظہار تعزیت پیش کرتے ہوئے گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے اور کہا کہ مولانا کی وفات سے پورے امت مسلمہ کا عظیم خسارہ ہے