مولانا قاسم صاحب نہیں رہے

209

مدرسہ اسلامیہ یتیم خانہ ارریہ کے سابق استاداورشہر ارریہ کی مرکزی جامع مسجد کے سابق امام وخطیب جناب حضرت مولانا قاسم صاحب مظاہری اس دار فانی سےکوچ کرگئے ہیں، انا للہ وانا الیہ راجعون
مولانا مرحوم کی تقرری بحیثیت استاد مدرسہ مذکورہ میں 1976ء میں ہوئی۔آپ تقریبا 38/سال تک درس وتدریس اور اصلاح تزکیہ ،دعوت وخطابت کا فریضہ انجام دیتے رہے ۔آپ مقام شیشہ باڑی ضلع پورنیہ کے رہنے والے تھے مگر اہالیان ارریہ سے آپ کو بڑی محبت وانسیت تھی،یہی وجہ ہےکہ پانچ سال پہلے ہی مدرسہ اسلامیہ یتیم خانہ ارریہ سے سبکدوش ہوچگئے تھے، باوجود اس کے مولانا مرحوم ارریہ آتے جاتے رہتےاور لوگوں سے بے پناہ محبت وشفقت اورمخلصانہ تعلق کا احساس دلاتے رہے۔ابھی ہفتہ عشرہ قبل مولانا مرحوم سے میری بذریعہ فون بات ہوئی تھی، مرحوم ارریہ آنے کو بے چین نظر آئے۔میں نے کہا حضرت کچھ دن انتظار کرلیں انشاء اللہ لاک ڈاون ختم ہونے والا ہے،آپ تشریف لائئے۔ہائے افسوس اب مولانا اس دنیا میں نہیں رہے۔مرحوم موصوف ہمارے استاد ہیں اور ارریہ میں ہم جیسے بہتوں کے استاد ہیں۔مولانا کا ہم پراور اہل ارریہ پرواجبی حق ہے کہ ہم سبھی حضرت کے لئے ایصال ثواب کا اہتمام کریں،حسب سہولت جو جنازہ میں شریک ہوسکتے ہیں، جنازہ کی نماز مرحوم کے آبائی گاؤں شیشہ باڑی ضلع پورنیہ میں بعد نماز عصر متصلا رکھی گئی ہے،شرکت کریں،اوردعاکریں کہ رب لم یزل ولایزال حضرت مولانا مرحوم کو جنت الفردوس نصیب کرے اور پسماندگان کو صبر جمیل کی دولت عطا فرمائے، آمین
ہمایوں اقبال ندوی، ارریہ
10/جون 2021ءبروزجمعرات