ہومبریکنگ نیوزمعاشرے کی اصلاح کرنا ہمارا دینی فریضہ اور ذمہ داری ہے: حافظ...

معاشرے کی اصلاح کرنا ہمارا دینی فریضہ اور ذمہ داری ہے: حافظ و قاری عبدالقدوس ہادی 

معاشرے کی اصلاح کرنا ہمارا دینی فریضہ اور ذمہ داری ہے: حافظ و قاری عبدالقدوس ہادی 
اگربرائیوں کو نہ روکا گیا تو یاد رکھو ہمارا کوئی گھر محفوظ نہیں رہ پائے گا! 
کانپور (شکیب الاسلام) جامعہ عربیہ اشاعت العلوم قلی بازار میں شہری جمعیۃ علماء کانپور کے زیراہتمام قاضی شہر کانپور الحاج حافظ و قاری عبدالقدوس ہادی کی صدارت میں ایک میٹنگ کا انعقاد کیا گیا، میٹنگ میں موجودہ دور میں مسلم معاشرے میں بڑھتی برائیوں کی روک تھام اور اسکے سدباب کے لئے چلائی جارہی مہم کو مزید تقویت دینے پر غور و خوص ہوا، میٹنگ کا آغاز تلاوت کلام پاک سے ہوا، اس موقع پر قاضی شہر الحاج حافظ و قاری عبدالقدوس ہادی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت ہمارے معاشرے میں گھریلو جھگڑے، حق تلفی،اور سب سے زیادہ ازدواجی تنازعات ہمارے سامنے آرہے ہیں، چھوٹی چھوٹی باتوں پر طلاق تک کی نوبت آجاتی ہے،اس لئے اپنے معاشرہ کی اصلاح کے لئے شہر کے مختلف علاقوں میں ”جلسہ اصلاح معاشرہ و اجتماع خواتین“منعقد کئے جارہے ہیں جس کے خاطر خواہ نتائج بھی سامنے آ رہے ہیں،گلشن میرج ہال چمن گنج اور قریش ہال قلی بازار کے اجتماع میں کثیر تعداد میں مرد و خواتین نے شرکت کی اور ان ”جلسہ اصلاح معاشرہ و اجتماع خواتین“ کو اتنی زیادہ مقبولیت اور شہرت حاصل ہوئی کہ اب لوگ ان اجتماعات سے متاثر ہو کر ان اجتماعات کے پیغام کو گھر گھر پہنچانے کے لئے اس مہم میں تیزی لانے کا مطالبہ کر رہے ہیں،معاشرے کی اصلاح کرنا ہمارا دینی فریضہ اور ہماری ذمہ داری ہے آج جس طرح سے ہمارا معاشرہ خراب ہو رہا ہے اگر اس کو نہ روکا گیا تو یاد رکھو ہمارا کوئی گھر محفوظ نہیں رہ پائے گا قاضی شہر نے موجودہ حالات پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ملک کے حالات کے بارے میں آپ سبھی جانتے ہیں کانپور میں جو حالات گزرے ہیں وہ بھی آپ سے پوشیدہ نہیں ہیں اپنے شہر میں ہم مظلوم اور بے قصور افراد کے ساتھ کھڑے ہوئے جس میں اللہ تعالیٰ نے ہماری مدد فرمائی، ابھی ہمارا دورہ سلطان پور کے ابراہیم پور کا ہوا ہر جگہ ناانصافی دیکھنے کو مل رہی ہے اللہ نہ کرے لیکن ایسا اندیشہ ہے کہ حالات مزید خراب ہو سکتے اس لئے ہم ایک دوسرے کے معاون و مددگار بنیں تاکہ ایسے حالات میں ہم مظلوم کے ساتھ کھڑے ہو سکیں اور مظلوم کو انصاف ملے، قاضی شہر نے کہا کہ گزشتہ دنوں منعقد ہوئے ”جلسہ اصلاح معاشرہ و اجتماع خواتین“کے اجتماعات کی کامیابی کے بعد ایک عظیم الشان ”جلسہ اصلاح معاشرہ و اجتماع خواتین“کا انعقاد  ۶۲ / اکتوبر،بروز بدھ، صبح دس بجے مبارکہ میرج ہال بیگم پوروہ کانپور میں منعقد ہو رہا ہے،جس کے مہمان خصوصی مقرر ذیشان حضرت مولانا انوار الحق قاسمی لکھنؤ کے علاوہ دیگر بیرونی ومقامی میں علمائے کرام خطاب فرمائیں گے،اس کے علاوہ  شہر کے مختلف علاقوں میں بھی ”جلسہ اصلاح معاشرہ و اجتماع خواتین“ کے پروگرام طے ہو چکے ہیں جنکی تاریخوں اور جگہ کا جلد علان ہوگا، گزارش ہے کہ آپ حضرات اپنے گھر کی خواتین کے ساتھ وقت مقررہ پر تشریف لائیں، میٹنگ میں شہر کے علماء کرام آئمہ مساجد و دانشوران قوم نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔
معاشرے کی اصلاح کرنا ہمارا دینی فریضہ اور ذمہ داری ہے: حافظ و قاری عبدالقدوس ہادی 
 اگربرائیوں کو نہ روکا گیا تو یاد رکھو ہمارا کوئی گھر محفوظ نہیں رہ پائے گا! 
سیتامڑھی (شمیم اختر) جامعہ عربیہ اشاعت العلوم قلی بازار میں شہری جمعیۃ علماء کانپور کے زیراہتمام قاضی شہر کانپور الحاج حافظ و قاری عبدالقدوس ہادی کی صدارت میں ایک میٹنگ کا انعقاد کیا گیا، میٹنگ میں موجودہ دور میں مسلم معاشرے میں بڑھتی برائیوں کی روک تھام اور اسکے سدباب کے لئے چلائی جارہی مہم کو مزید تقویت دینے پر غور و خوص ہوا، میٹنگ کا آغاز تلاوت کلام پاک سے ہوا، اس موقع پر قاضی شہر الحاج حافظ و قاری عبدالقدوس ہادی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت ہمارے معاشرے میں گھریلو جھگڑے، حق تلفی،اور سب سے زیادہ ازدواجی تنازعات ہمارے سامنے آرہے ہیں، چھوٹی چھوٹی باتوں پر طلاق تک کی نوبت آجاتی ہے،اس لئے اپنے معاشرہ کی اصلاح کے لئے شہر کے مختلف علاقوں میں ”جلسہ اصلاح معاشرہ و اجتماع خواتین“منعقد کئے جارہے ہیں جس کے خاطر خواہ نتائج بھی سامنے آ رہے ہیں،گلشن میرج ہال چمن گنج اور قریش ہال قلی بازار کے اجتماع میں کثیر تعداد میں مرد و خواتین نے شرکت کی اور ان ”جلسہ اصلاح معاشرہ و اجتماع خواتین“ کو اتنی زیادہ مقبولیت اور شہرت حاصل ہوئی کہ اب لوگ ان اجتماعات سے متاثر ہو کر ان اجتماعات کے پیغام کو گھر گھر پہنچانے کے لئے اس مہم میں تیزی لانے کا مطالبہ کر رہے ہیں،معاشرے کی اصلاح کرنا ہمارا دینی فریضہ اور ہماری ذمہ داری ہے آج جس طرح سے ہمارا معاشرہ خراب ہو رہا ہے اگر اس کو نہ روکا گیا تو یاد رکھو ہمارا کوئی گھر محفوظ نہیں رہ پائے گا قاضی شہر نے موجودہ حالات پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ملک کے حالات کے بارے میں آپ سبھی جانتے ہیں کانپور میں جو حالات گزرے ہیں وہ بھی آپ سے پوشیدہ نہیں ہیں اپنے شہر میں ہم مظلوم اور بے قصور افراد کے ساتھ کھڑے ہوئے جس میں اللہ تعالیٰ نے ہماری مدد فرمائی، ابھی ہمارا دورہ سلطان پور کے ابراہیم پور کا ہوا ہر جگہ ناانصافی دیکھنے کو مل رہی ہے اللہ نہ کرے لیکن ایسا اندیشہ ہے کہ حالات مزید خراب ہو سکتے اس لئے ہم ایک دوسرے کے معاون و مددگار بنیں تاکہ ایسے حالات میں ہم مظلوم کے ساتھ کھڑے ہو سکیں اور مظلوم کو انصاف ملے، قاضی شہر نے کہا کہ گزشتہ دنوں منعقد ہوئے ”جلسہ اصلاح معاشرہ و اجتماع خواتین“کے اجتماعات کی کامیابی کے بعد ایک عظیم الشان ”جلسہ اصلاح معاشرہ و اجتماع خواتین“کا انعقاد  ۶۲ / اکتوبر،بروز بدھ، صبح دس بجے مبارکہ میرج ہال بیگم پوروہ کانپور میں منعقد ہو رہا ہے،جس کے مہمان خصوصی مقرر ذیشان حضرت مولانا انوار الحق قاسمی لکھنؤ کے علاوہ دیگر بیرونی ومقامی میں علمائے کرام خطاب فرمائیں گے،اس کے علاوہ  شہر کے مختلف علاقوں میں بھی ”جلسہ اصلاح معاشرہ و اجتماع خواتین“ کے پروگرام طے ہو چکے ہیں جنکی تاریخوں اور جگہ کا جلد علان ہوگا، گزارش ہے کہ آپ حضرات اپنے گھر کی خواتین کے ساتھ وقت مقررہ پر تشریف لائیں، میٹنگ میں شہر کے علماء کرام آئمہ مساجد و دانشوران قوم نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔
توحید عالم فیضی
توحید عالم فیضیhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

- Advertisment -
- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے