مسجد الله کا گھر ، مسلم آبادی کی پہچان اور شعائر اسلام ہے ، مفتی رضوان قاسمی

44

بیرول 13 / مارچ ( شمیم احمد رحمانی ) بیرول سبڈویژن ہیڈ کوارٹر سے تقریباً 10 / کیلو میٹر شمال مشرق میں کِرتپور بلاک واقع مشہور مسلم آبادی موضع جھگڑوا کے مدرسہ معارف العلوم رحمت گنج میں مسجد بلال کی چھت ڈھلائی کے موقع پر ایک عظیم الشان دینی اصلاحی و تعلیمی بیداری اجلاس زیر قیادت حضرت مولانا محمد ابوالحسن قاسمی ناظم مدرسہ معارف العلوم رحمت گنج جھگڑوا ، نائب صدر جمیعت علماء کِرتپور بلاک اور زیر صدارت پیر طریقت نمونہ سلف حضرت الحاج ماسٹر محمد قاسم صاحب نائب صدر مدرسہ رحمانیہ سوپول و ناظم اعلی مدرسہ اشرفیہ پوہدی بیلا منعقد ہوا پر پروگرام کا آغاز قاری جنید احمد کی تلاوت اور مدرسہ کے مختلف طلبائے کرام کے نعتیہ کلام سے ہوا بعدہ اجلاس سے درد مندانہ افتتاحی خطاب کرتے ہوئے مرکزی جمیعت علماء سیمانچل کے صدر جید عالم دین حضرت مولانا مفتی محمد رضوان عالم قاسمی استاذ مدرسہ رحمانیہ افضلہ سوپول دربھنگہ نے کہا کہ مسجد اللہ کا گھر ، مسلم آبادی کی پہچان اور شعائر اسلام ہے اس کو آباد کرنے والے ، اس سے محبت رکھنے والے اور اس کی ضروریات میں حصہ لینے والے کل قیامت کے دن عرش الہی کے سایہ میں ہونگے انہوں نے کہا کہ اس وقت دنیا بھر میں مسلمان سخت آزمائشوں سے گزر رہے ہیں نیک لوگوں سے دنیا خالی ہوتی جا رہی ہے ہمارے لیے خوشی کی بات ہے کہ اس وقت ہملوگوں کے درمیان ہمارے اسلاف و بزرگوں کے نمونہ پیر طریقت حضرت الحاج ماسٹر محمد قاسم صاحب نائب صدر مدرسہ رحمانیہ سوپول و ناظم اعلیٰ مدرسہ اشرفیہ پوہدی بیلا موجود ہیں آپ کی ذات مستجاب الدعوات ہے ہم اپنے بڑوں کی قدر کرکے برکت حاصل کریں اور فیض اُٹھا کر دنیا و آخرت سنواریں جید عالم دین حضرت مولانا مفتی محمد رضوان قاسمی نے مدرسہ معارف العلوم رحمت گنج جھگڑوا کی انتظامیہ باالخصوص مدرسہ کے ناظم اعلیٰ حضرت مولانا محمد ابوالحسن قاسمی ، سکریٹری جناب ماسٹر محمد شمس عالم اور ان کے رفقائے کرام کو مسجد بلال کی چھت ڈھلائی کے موقع پر اس طرح کے دینی و اصلاحی پروگرام کے انعقاد پر مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ لاک ڈاؤن نے جہاں دنیا کے ماحول کو بہت حد تک الٹ پھیر کر دیا ہے وہیں اہل مدارس کو بہت کچھ سوچنے پر مجبور کیا ہے اس لیے آپ لوگوں کو ہر حال میں اپنے علماء ، بزرگوں اور دینی مدرسوں سے اپنا رشتہ و رابطہ مضبوط رکھنا چاہیئے تاکہ ملت کی کشتی بھنور میں نہ پھنسے اور اپنے ماحول و معاشرے کو چاپلوسوں ، دروغ گوئی کرنے والوں و منافقوں سے محفوظ رکھیئے تاکہ سب اطمینان سے رہیئے اس موقع پر جمیعت علماء کِرتپور بلاک کے صدر اور عالم باعمل حضرت مولانا حافظ و قاری محمد نعمت اللہ قاسمی استاذ مدرسہ رحمانیہ سوپول نے کہا کہ مسجد تعمیر کرنا یا اس کی تعمیر میں حصہ لینا جنت میں اپنا گھر بنانا ہے مجھے خوشی ہے کہ ہمارے دوست اور دینی و ملی خدمت کے جذبہ سے شرسار مخلص عالم دین حضرت مولانا محمد ابوالحسن قاسمی نائب صدر جمیعت علماء کِرتپور بلاک نے بڑی محنت و لگن سے مدرسہ معارف العلوم کے ذمہ داروں اور گاؤں کے مسلمانوں کی مدد سے بڑی وسیع و عریض اور کشادہ مسجد بلال تعمیر کی ہے میں انہیں مبارکباد پیش کرتا ہوں اور مدرسہ کی ترقی کیلئے دعا بھی ، استاذالعلماء جناب قاری عبدالستار صاحب استاذ مدرسہ اسلامیہ گنیش پور ضلع سوپول نے بھی مدرسہ معارف العلوم کے احاطے میں مسجد بلال کی تعمیر پر مسرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس سے مدرسہ کی ترقی میں مزید چار چاند لگے گا آخر میں صدر اجلاس نمونہ اسلاف حضرت الحاج ماسٹر محمد قاسم صاحب دامت برکاتہم نے لوگوں کو دین پر چلنے ، رزق حلال استعمال کرنے ، آپس میں مل جل کر رہنے اور اپنے بچوں کو ہرحال میں دینی تعلیم دلوانے کی پرزور نصیحت کرتے ہوئے ملک و ملت کے حق میں رقت آمیز دعا فرمائی اس موقع پر بڑی تعداد میں مقامی و علاقائی لوگوں نے شرکت کی اور خدام مدرسہ کا حوصلہ بڑھایا اُن میں بطور خاص سکریٹری مدرسہ جناب ماسٹر محمد شمس عالم ، مولانا محمد فاروق رحمانی ، مولانا محمد سجاد رحمانی ، ڈاکٹر محمد خالد ، مکھیا محمد عادل ، سابق مکھیا محمد شمیم عرف بدری بابو ، مکھیا محمد امداداللہ ، مکھیا محمد عمران ، حافظ محمد جمشید ، ڈاکٹر محمد قیصر ، مولانا محمد نوراللہ ، مولانا محمد انعام الحق ، فاروق بابو ، حاجی محمد ذکاءاللہ ، مطیع الرحمن ، ماسٹر زبیر احمد ، لال محمد ، حاجی محمد حبیب اللہ ، ماسٹر محمد نوشاد پالی ، محمد داؤد ، ڈاکٹر شبّر آشاپور ، فقیر محمد ، محمد کوثر ، محمد بزمی ، حافظ مظفر حسین ، منا سرپنچ ، ماسٹر عبداللہ ثاقب پوہدی ، قاری جنید وغیرہ قابل ذکر ہیں