جمعرات, 29, ستمبر, 2022
ہوممضامین ومقالاتفرمان نبویﷺ ایک اٹوٹ اصول!

فرمان نبویﷺ ایک اٹوٹ اصول!

تنویراحسن صدیقی کے قلم سے

کہنے کو تو دنیا ترقی کی معراج پر تخت نشین ہے ،روز نت نئے ایجادات معرضِ وجود میں آرہے ہیں،ٹیکنیکل کے اس دوڑ میں ہر کوئی اپنی ایک الگ چھاپ چھوڑجانا چاہتے ہیں ۔آگے بڑھنے کے لئے روز نئے نئے تجربات کئے جارہے ہیں،اپنی زندگی کو خوبصورت اور خوشگوار بنانے کے لئے ہرجائز وناجائز طریقے بروئےکار لائے جارہے ہیں،الغرض اس ترقی پسند دور میں نوع انسان کو آگے بڑھنے کی گویا ایک دھن سوار ہے، جسے وہ بہرصورت حاصل کرنا چاہتاہے ۔انہیں کسی کی جذبات سے کوئی مطلب نہیں ،کسی کی احساسات کا پاس ولحاظ نہیں،بس وہ آگے اور آگے بڑھتے ہی جانا چاہتاہے ۔وہ چاہتاہے کہ دنیا کی ساری خوشیاں اسکی قدم چومے ،کامیابیاں ہر موڑ پر اس کا استقبال کریں،عیش وعشرت اس کا مقدر بن جائے ، اس کا ہرخواب شرمندہ تعبیر ہو جائے ،اس کی ہرچاہت کامیابی سےعبارت ہو،یعنی کامیاب زندگی اسی سے متعلق ہو،جب لوگ اسے دیکھے تو انگشت بدنداں کہے ۔”واہ کیا ہی نرالی زندگی ہے یعنی کامیابی کی ساری لکیریں اسی کھینچنے سے کھیچی جاتی ہے ۔چنانچہ وہ اس کے لئے کوشش بھی کرتاہے، وہ کوشش کرتاہے کہ وہ سب سے زیادہ کام کرے ، سب سے زیادہ محنت کرے ،اس کو ایک دن میں، مہینےبھر کی آمدنی میسر ہو، وہ جسے چھوئے سونا بن جائے ،بحروبر کی ساری مخلوق اس میں اس کا مددگار ثابت ہو ۔لیکن ؟

لیکن وہ اصل اصول کوہی بھول جاتاہے ،وہ بھول جاتاہےکہ خالقِ ارض و سماء نے کامیابی وکامرانی کے جو راز بتائے ہیں، اسے پرے ڈال کر کوئی کامیاب نہیں ہوسکتا، آگے بڑھنے کی ہوڑ میں اس قدر گم ہوجاتاہے کہ پھر اسے یہ بھی یاد نہیں رہتا کہ ترقی کہ جو اصول سرورِ کائنات فخرموجودات ﷺ نےبتائے ہیں وہی اصل الاصول اور اٹوٹ ہے، چنانچہ آقائےمدنی ﷺفرماتےہیں:”‏ ابْغُونِي ضُعَفَاءَكُمْ فَإِنَّمَا تُرْزَقُونَ وَتُنْصَرُونَ بِضُعَفَائِكُمْ ‏”‏ ‏۔! (ابوداؤد )یعنی مجھے کمزوروں میں تلاش کرو اسلئےکہ تمہارے کمزوروں کی وجہ سے تمہیں روزی ملتی ہے اور تمہاری مدد ہوتی ہے ۔

جی ! یہی ہے وہ نبوی اصول جسے ہم سب بھول بیٹھے ہیں اور ہر میدان میں کمزوروں کو نہ صرف نظرانداز کررہے ہیں بلکہ انکے ساتھ حق تلفی بھی کرتے ہیں، بجائے مددکرنے کے ان کو ہراساں وپریشاں کرتے ہیں ،اب آپ ہی بتائیں ہم کیوں کر ترقی کرسکتے ہیں؟ لہذا جو لوگ واقعی زندگی میںآگے بڑھنے کی خواہش رکھتے ہیں ،انہیں چاہئے کہ کمزوروں اور بے کسوں کے ساتھ نرمی کا برتاؤ کریں،ہرممکن ان کی مدد کریں، اگر ان سے کوئ کام متعلق ہو تو مزدوری بروقت ادا کریں اور اگر کام اچھالگے تو کچھ بخشش و انعام سے بھی نوازیں ۔یاد رہے ہر کامیابی کے پیچھے کسی عورت کا نہیں ؛بلکہ کئ کمزور اور دبے کچلوں کی محنت ہوتی ہے ۔

روزنامہ نوائے ملت
روزنامہ نوائے ملتhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

- Advertisment -spot_img
- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے