بدھ, 5, اکتوبر, 2022
ہوماعلان واشتہاراتفتنہ ارتداد ودیگرسماجی برائیوں کے خلاف تنظیم ائمہ مساجد سہرسہ کی تحریک...

فتنہ ارتداد ودیگرسماجی برائیوں کے خلاف تنظیم ائمہ مساجد سہرسہ کی تحریک جاری

چکمکہ جامع مسجد میں اصلاحی اجتماع کا انعقاد، بڑی تعداد میں خواتین اور نوجوانوں کی شرکت

سہرسہ، 7ستمبر 2021:
فتنہ ارتداد موجود وقت کا سب سے بڑا فتنہ ہے اس کے روک تھام کیلئے ہمیں سخت عملی اقدامات کی ضرورت ہے اگر ہم نے وقت رہتے ہوۓ اس عظیم فتنہ کو نہیں روکا تو اس کے خطرناک نتائج سامنے آئیں گے ان خیالات کا اظہار تنظیم ائمہ مساجد سہرسہ کے زیر اہتمام جامع مسجد چکمکہ میں منعقدہ ایک عظیم الشان اصلاحی اجتماع میں دارالعلوم وقف دیوبند کے سینئر استاذ مفتی محمد نوشاد نوری نے کیا- انہوں نے کہاکہ اصلاح معاشرہ کیلئے ہمیں بلا تفریق سرجوڑ کر کام کرنے کی ضرورت ہے انہوں نے کہاں ہماری قوم میں جو سماجی برائیاں ہیں اس کیلئے ہم خود ذمے دار ہیں اس لئے اس کے خاتمے کیلئے بہی خود ہی آگے آنا ہوگا، انہوں نے تنظیم ائمہ مساجد کی اس تحریک کو سراہتے ہوئے کہاکہ علاقائی سطح پر جس طرح یہ تنظیم منظم طریقے سے کام کررہی ہے وہ لائق ستائش اور دیگر مقامی سطح کی تنظیموں اور جماعتوں کیلئے ایک مثال ہے_
جمعیتہ علماء ہند ضلع سہرسہ کے جنرل سیکریٹری حضرت مولانا مظاہرالحق قاسمی کی صدارت اور وژن انٹرنیشنل اسکول سہرسہ کے ڈائریکٹر شاہنوازبدرقاسمی کی نظامت میں منعقد اس اصلاحی اجتماع سے اظہار خیال کرتے ہوئے تنظیم ائمہ مساجد سہرسہ کے صدر حافظ محمد ممتاز رحمانی نے کہاکہ اس وقت باطل طاقتیں اس ملک میں صرف سیاسی دشمن نہیں بلکہ ہمارے ایمان کے دشمن بن چکے ہیں اور طرح طرح سے مسلمانوں کو مشتعل کرنے کی بھرپور کوشش کرتے ہیں جو بیحد فکرمندی کی بات ہے، ارتداد کی یہ لہر اب بڑے شہروں سے دیہی علاقائوں تک پھیل چکی ہے اگر ہم نے اپنی ذمے داریوں کو نہیں نبھانے کا کام کیا تو یاد رکھئیے نئی نسل ہمیں کبہی معاف نہیں کرے گی، انہوں نے تعلیم پر زور دیتے ہوئے کہاکہ اپنے بچوں کو ہر حال میں زیورتعلیم سے آراستہ کیجئے، تعلیم ہی تمام کامیابیوں کی کنجی ہے اگر ہم سچ میں ترقی یافتہ بننا چاہتے ہیں تو ہرحال میں اپنے بچوں کو بنیادی دینی تعلیم دلانا ہوگا انہوں نے عوام سے اس تحریک کو کامیاب بنانے کی اپیل کی-
مولانا مظاہر الحق قاسمی نے اپنے صدارتی خطاب میں فرمایا کہ یہ دور فتنوں کا ہے ہمیں ہرطرح کے فتنوں سے ہوشیار رہنے کی ضرورت ہے ہماری بچیوں کو خاص طور پر موبائل کے ذریعے جھانسہ دیکر جس طرح برباد کیا جارہا ہے وہ ہم سب کیلئے لمحہ فکریہ ہے مخلوط تعلیم اور موڈرن کلچر کی وجہ سے دیندار فیملی کی بچیاں بہی اب محفوظ نہیں ہیں، ہمیں اپنے بچوں کی تعلیم کے ساتھ صحیح تربیت کی فکر کرنی ہوگی_
ان کے علاوہ بھوپیندر نارائن منڈل یونیورسٹی مدھے پورہ کے پروفیسر ابوالفضل، جامعہ رحمانی خانقاہ مونگیر کے استاذ مولانا سیف الرحمن ندوی، مفسر قرآن مولانا ضیاء الدین ندوی، مفتی نصراللہ قاسمی (پھنساہا) مولانا محب اللہ (امام سیٹن آباد) قاری برکت اللہ قاسمی (امام مبارکپور جامع مسجد) وغیرہ نے بہی اس اصلاحی اجتماع سے خطاب کیا-
اس اصلاحی اجتماع میں بڑی تعداد میں خواتین اور نوجوانوں نے شرکت کی اور عہد لیا کہ ہم سب اسلامی تعلیمات کے مطابق زندگی بناتے کی ہرممکن کوشش کریں گے اور سماجی برائیوں کے خلاف مقامی سطح پر جو کمیٹی تشکیل پائی ہے اس کے مشورے سے کام کریں گے_
بعد نماز مغرب چھوٹی مسجد چکمکہ میں بہی اصلاحی مجلس کا انعقاد عمل میں آیا جس میں مقامی ذمے داران اور خواتین نے سینکڑوں کی تعداد میں شرکت کی_
واضح رہے کہ تنظیم ائمہ مساجد سہرسہ کے زیر اہتمام سمری بختیارپور کے علاقے کے ہرگاؤں میں اصلاحی اجتماع کا انعقاد کیا جارہاہے آج چکمکہ میں دسواں اجلاس منعقد کیا گیا اور مقامی لوگوں نے تنظیم کے ذمے داران کا دلی شکریہ ادا کیا اور کہاکہ اس طرح کے اصلاحی پروگراموں کی سخت ضرورت ہے-

روزنامہ نوائے ملت
روزنامہ نوائے ملتhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

- Advertisment -spot_img
- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے