بدھ, 5, اکتوبر, 2022
ہوماعلان واشتہاراتطلبہ کااحتجاج اور ہماری ذمہ داریاں

طلبہ کااحتجاج اور ہماری ذمہ داریاں

ٍطلباء کااحتجاج اور ہماری ذمے داریاں

شاہنوازبدرقاسمی

ریلوے بھرتی بورڈ کے نتائج سے ناراض ملک بھر کے لاکھوں طلباء اس وقت بہار اور یوپی کے سڑکوں پر احتجاج کر رہے ہیں،کئی مقامات پر یہ احتجاج پولیس انتظامیہ کی نااہلی کی وجہ سے بے قابو ہوگئی اور مظاہرہ کررہے طلباء پر جو ظلم و ستم ڈھائے گئے وہ بیان کے قابل نہیں، آج 28جنوری 2022کوطلباء یونین اور مختلف اپوزیشن پارٹیوں کی اپیل پر پولیس انتظامیہ کی زیادتی اور مرکزی حکومت کے خلاف "بھارت بند” کااعلان کیاگیاتھا اس کے اثرات ملک گیر پیمانے پر پائے گئے، خاص طور پر بہار اور اترپردیش میں کئی جگہوں پر بھارت بند کی وجہ سے نظام زندگی متاثر رہااور مظاہرین نے حکومت کو یہ احساس دلا دیاکہ آپ ہمارے مطالبات کو نظر انداز نہیں کرسکتے ہیں۔

ریلوے امتحانات (آر آر بی ٹی پی سی سی بی ٹی 2گروپ ڈی سی بی ٹی 1)میں دھاندلی کے الزام پر لاکھوں طلباء میں یہ ناراضگی اور غصہ یوں نہیں ہے بلکہ مرکزی حکومت کے جھوٹے وعدے سے اب ہمارے یہ بے روزگار نوجوان عاجز آچکے ہیں، انہیں پتہ چل گیا ہے جس اچھے دن کا ہم سب سے جو وعدہ کیا گیا تھا وہ صرف دھوکہ تھا، بی جے پی حکومت کی غلط پالیسی اور نااہل قیادت کی وجہ سے ملک میں بے روزگاری اور غربت میں جس تیزی سے اضافہ ہورہا ہے وہ انتہائی تشویش ناک ہے۔

ملک کے بیشتر مسائل کا تعلق مذہب سے نہیں بلکہ انسانی و سماجی ضرورت سے متعلق ہے،اس وقت ہمارے ملک میں موجودہ حکومت کی وجہ سے جو مذہبی تعصب پرستی اور نفرت کی سیاست ہورہی ہے وہ انتہائی خطرناک اور ملک کیلئے ناسور ہے،حالیہ برسوں میں کئی ایسے مواقع آئے جب عوامی سطح پر چاہے کسان آندولن ہو یا پھر سی اے اے تحریک سمیت کئی کالے قانون سے لوگ سخت ناراض ہوئے اور اپنی ناراضگی کااحساس دلایا اب ایک مرتبہ پھر ضرورت ہے کہ ہم سب تماشہ دیکھنے کے بجائے مظاہرہ کررہے لاکھوں طلبہ کے جائز مطالبات کو منوانے میں ان کی مدد کریں کیوں کہ اگر ہم اس جمہوری ملک میں حکومت کی دھمکی اور غلط پالیسوں سے ڈر گئے تو پھر کسی تبدیلی، ترقی اور خوشحالی کی امید کرنا فضول ہے، اتفاقیہ طور پر یہ احتجاج ایک ایسے وقت میں ہورہا ہے جب یوپی سمیت پانچ ریاستوں میں اسمبلی انتخابات ہورہے ہیں یقینا اس کے اثرات ہوں گے ہمیں بغیرکسی کنفیوژن اور غلط فہمی کے ایک ایسی طاقت کو سپورٹ کرنے کی ضرورت ہے جو بلاتقریق سماجی انصاف اور ترقی کی بنیادپر سرکار چلانے کی اہلیت رکھتی ہو،اس ملک کی تعمیر وترقی اور خوشحالی میں ہم سب کو اپنا رول طے کرنا ہوگا کیوں کہ آج اگر آپ نے یہ مجرمانہ خاموشی اختیار کی تو کل اس ملک ميں کچھ بھی بولنے، لکھنے اور کرنے کے قابل نہیں بچیں گے،ہم طلباء کے اس احتجاج کا مکمل تعاون کریں اور ہر ممکن کوششوں کے ذریعہ طلبہ کو انصاف دلانے میں مدد کریں،ریلوے کے علاوہ بھی کئی ایسے امتحانات ہیں جس کے نتائج کا لاکھوں طلبہ بے صبری سے انتظار کررہے ہیں، جن کے نتائج آگئے ہیں وہ کئی کئی سالوں سے اپنی ملازمت کاانتظار کررہے ہیں۔

روزنامہ نوائے ملت
روزنامہ نوائے ملتhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

- Advertisment -spot_img
- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے