ہومبریکنگ نیوزصحافی عامر سلیم بھائی بھی الوداع کہ گئے شاہنواز بدر قاسمی

صحافی عامر سلیم بھائی بھی الوداع کہ گئے شاہنواز بدر قاسمی

صحافی عامر سلیم بھائی بھی الوداع کہ گئے
شاہنواز بدر قاسمی
دہلی کے مشہور صحافی، روزنامہ ہمارا سماج کے ایڈیٹر اور محترم دوست جناب عامر سلیم خان صاحب آج دوپہر ایک بجے مختصر علالت کے بعد رحلت فرما گئے، انا للّٰہ وانا الیہ راجعون
مرحوم گزشتہ تین دنوں سے پنت ہاسٹپل میں ہارٹ اٹیک کے بعد وینٹیلیٹر پر تھے، چند ماہ قبل والد کا انتقال بہی ہوگیا تہا جس کے بعد مسلسل صدمہ اور ڈپریشن میں تہے، عامر سلیم بھائی ایک ایماندار، بیباک اور حق گو صحافی کے ساتھ ایک مثالی انسان تھے، گزشتہ ماہ دہلی سفر کے دوران جمعیت دفتر میں ان سے تفصیلی ملاقات ہوئی، کہنے لگے آئندہ جب بہی دہلی آنا ہو میرے گھر ضرور تشریف لایئے گا میں پوچھ لیا کہاں رہتے ہیں کہنے لگے مہدیان قبرستان میں پہر میں نے مذاق میں کہ دیا آپ کو تو قبرستان میں رہنے کی عادت ہوگئی ہے لگتا ہے آپ لمبی عمر پائیں گے لیکن کیا معلوم تہا اگلی ملاقات سے قبل ہی اتنا جلدی ہم سب کو الوداع کہ دیں گے، عامر بھائی کا شمار دہلی کے محنتی اور فعال اردو صحافیوں میں ہوتا تہا، ملی و ملکی مسائل پر گہری نظر رکھتے تہے، ان کی تحریروں میں ان کی بے چینی کو بخوبی محسوس کیا جاسکتا ہے، جب بہی میں اپنی کوئی تحریر بھیجتا اسے ترجیحی طور پر اہتمام سے اپنے اخبار "ہمارا سماج” میں شائع کرتے تہے، حال ہی انہوں نے ڈیجیٹل میڈیا پر اپنی موجودگی کا احساس دلاتے ہوئے کئی اچہے ویڈیو شیر کیا ایک دن مجہے فون کرکے کہنے لگے آپ کی نگاہ ضرور رہنی چاہئے_عامر بھائی سوشل میڈیا پر بہی کافی سرگرم عمل رہتے تہے اکثر میسج کرکے خبر خیریت پوچھتے رہتے تہے، اللہ پاک مرحوم کی مغفرت کاملہ اور پسماندگان کو صبر جمیل عطاء فرمائے، بچے ابہی چھوٹے چھوٹے ہیں سب سے بڑے بیٹے کی عمر 15 سال ہے، ملازمت کی وجہ سے دہلی میں مقیم تہے، مہدیان کو اپنا ٹھکانہ بناۓ ہوۓ تہے، عامر سلیم بھائی یہ شعر کہتے ہوئے اس دنیا سے رخصت ہوگئے_
کون جینے کے لیے مرتا رہے
لو، سنبھالو اپنی دنیا ہم چلے

توحید عالم فیضی
توحید عالم فیضیhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

- Advertisment -
- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے