بدھ, 5, اکتوبر, 2022
ہوماعلان واشتہاراتشیخ نعیم الدین مدنی کاانتقال پرملال

شیخ نعیم الدین مدنی کاانتقال پرملال

تنویر ذکی مدنی
ابھی جب میں نے واٹس ایپ آن کیا تومختلف گروپس میں سب سے زیادہ جو خبر گردش کرتی نظر آئی وہ استاذ گرامی قدر شیخ نعیم الدین مدنی رحمہ اللہ کی وفات کی المناک خبر تھی۔انا للہ وانا الیہ راجعون

آج ایک کہنہ مشق باصلاحیت اور نہایت ہی محبوب استاذ سے مادر علمی جامعہ سلفیہ مرکزی دارالعلوم بنارس محروم ہوگیا۔
شیخ رحمہ اللہ سے مسلسل چھ سالوں تک قریب رہنے کی سعادت حاصل تھی ۔درسی اور غیر درسی طور پر آپ سے بہت کچھ استفادہ بھی کیا۔
یہ صرف میں نہیں بلکہ بہت سارے فارغین جامعہ سلفیہ ضرور اس بات کو محسوس کرتے ہونگے کہ آپ جیسے نرم خو اور ہنس مکھ و باصلاحیت استاذ کا کسی بھی ادارہ کو اور کسی بھی طالب علم کو ملنا نصیبے کی بات ہے۔
آپ تقریبا چالیس سال تک جامعہ سلفیہ مرکزی دارالعلوم بنارس میں مسند تدریس پر پورے آب وتاب کے ساتھ فائز رہے ۔جوکہ ایک قابل رشک مدت ہے ۔
آپ جامعہ میں تدریس کے ساتھ ساتھ نائب شیخ الجامعہ اور پھر شیخ الجامعہ کے منصب جلیل پر بھی فائز رہے ۔دارالافتاء کے بھی آپ معزز عضو رہے۔۔
آپ کے درس کی شگفتگی ہمیشہ مشہور رہی۔کبھی بھی کسی نے اکتا ہٹ محسوس نہیں کی۔
آپ بڑے سے بڑے پرپیچ مسائل جس طرح ہنستے ہنساتے آسانی سے سمجھا دیتے تھے وہ صرف آپ کا حق تھا ۔حالانکہ آپ فنی طور پر بڑے باریک بیں بھی تھے۔
آپ طلبہ کی تادیبی کاروائی بھی ترش روئی اور ڈانٹ ڈپٹ کے بجائے نرم لہجے میں کرتے تھے ۔کوئی بدنصیب ہی ہوگا جو شیخ رحمہ اللہ کی نرمی سے متاثر نہ ہو۔آپ ہمیشہ طلبہ کے فیبر میں رہتے تھے۔
شیخ میں طلبہ کے لئے اپنائیت کوٹ کوٹ کر بھری ہوئی تھی۔ آپ کا کمرہ سب کے لئے ہر وقت کھلا رہتا تھا ۔آپ کی ذاتی کتابیں بھی خوشہ چینوں کو استفادہ کے لئے بآسانی مل جاتی تھیں۔
آپ کی طبعیت میں قناعت شعاری بھی کوٹ کوٹ کر بھری ہوئی تھی اور غالبا آپ کے چہرے میں دائمی مسکراہٹ کا یہی زرین راز تھا۔ورنہ مادیت کے اس دورمیں شفگتہ چہرے بھی بمشکل مسکراتے ہوئے نظر آتے ہیں ۔اور وہ مسکراہٹ بھی بے جان سی رہتی ہے ۔مگر آپ کے تلامذہ آپ کی شگفتہ مزاجی کے طویل المدتی عینی شاہد ہیں ۔
آپ جس صلاحیت کے مالک تھے اگر آپ اس حقیر سی دنیا میں سے کچھ کمانا چاہتے تو بہت کچھ کماسکتے تھے مگر آپ کی پوری چالیس سالہ زندگی کی کمائی صرف اور صرف آپ کے تلامذہ ہیں اور یہ آپ کے لئے توشہ آخرت بھی ہیں۔
باری تعالی آپ کا نعم البدل جامعہ کو اور امت کو ضرور عطا کرے اور آپ کی بشری لغزشوں کو در گزر کرتے ہوئے کروٹ کروٹ جنت نصیب کرے اور پسماندگان کو صبر جمیل کی توفیق عطا فرمائے ۔آمین۔
اللهم اغفر له وارحمه، وعافه ،واعف عنه ،وأكرم نُزُله ، ووسع مُدخلهُ ، واغسله بالماء والثلج والبرد ، ونقه من الخطايا كما ينقى الثوب الأبيض من الدنس ، وأبدله داراً خيراً من داره ، وأهلاً خيراً من أهله وزوجاً خيراً من زوجه، وأدخله الجنة ،وأعذه من عذاب القبر

توحید عالم فیضی
توحید عالم فیضیhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

- Advertisment -spot_img
- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے