سید منظور الحسن کی شخصیت خدمت انسانیت کی اعلیٰ مثال تھی محمد احمد انصار قاسمی

120

سید منظور الحسن کی شخصیت خدمت انسانیت کی اعلیٰ مثال تھی محمد احمد انصار قاسمی /
محمد رضوان ندوی
دنیا میں بہت سے لوگ صرف اپنے لئے جیتے ہیں، دوسروں کو اپنی ذات سے فائدہ پہونچانے، کسی بے کس و بے بس اور ضرورت مند کو مدد فراہم کرنے میں ان کو کوئی دلچسپی نہیں ہوتی، مفاد کے پجاریوں اور غرض پرستوں سے دنیا پٹی پڑی ہے لیکن بہت سے بندگان خدا ایثار و نفع رسانی کی دولت سے مالا مال ہوتے ہیں، سید منظور الحسن جنرل سیکرٹری مدرسہ عربیہ بحرالعلوم انجمن اسلامیہ نانپارہ بھی ایسے ہی لوگوں میں سے تھے جن کا اکثر وقت دوسروں کا کام بنانے میں گزرتا تھا، خدمت خلق کا پاکیزہ جذبہ انھیں اللہ کی طرف سے ایک بڑی نعمت کی شکل میں ملا تھا وہ پوری زندگی اس نعمت کے شکر گزار رہے. ان خیالات کا اظہار مدرسہ بحر العلوم انجمن اسلامیہ نانپارہ ،بہرائچ کے استاذ تفسير و ادب مولانا محمد احمد انصار قاسمی نے سید منظور الحسن کے وصال پر تعزیت پیش کرتے ہوئے کیا.
انھوں نے کہا کہ ان کا انتقال پر ملال اہل علاقہ کے لئے ایک عظیم ملی خسارہ ہے. اللہ تعالیٰ نے مرحوم کو ایسی صفات حمیدہ سے نوازا تھا جن کا مشاہدہ دیگر شخصیات میں بہت کم ہوتا ہے. محترم مغفور ملی و سماجی معاملات کو حل کرنے اور خصوصاً مسلمانوں کے تعاون کے لئے ہمہ تن و ہمہ وقت مستعد رہتے تھے. اسی طرح محترم مرحوم مدارس و مساجد کی خدمات کے لئے بھی بہت متفکر و کوشاں رہتے تھے، اپنی آخری سانس تک مدرسہ عربیہ بحرالعلوم انجمن اسلامیہ نانپارہ اور اس کے زیر تولیت مساجد کے تمام امور بحسن و خوبی انجام دیتے رہے، وہ مثبت فکر اور صالح کردار کے نمائندہ تھے، ہمیشہ چاہت رہتی تھی کہ قوم کے نونہال پہلے دینی تعلیم سے آراستہ ہوں پھر تعلیم کے میدان میں بڑھتے ہی چلے جائیں، آگے چل وہی نونہال علم و عمل کی خوشبو سے ملک و معاشرے کو مہکائیں، اللہ تعالیٰ علاقے اور ضلع کو ان کا بہترین بدل عطا فرمائے، اس کے علاوہ تمام اراکین و اساتذہ مدرسہ عربیہ بحرالعلوم انجمن اسلامیہ نانپارہ نے آپ کے صاحبزادگان سید مصباح الحسن و سید سبیح الحسن کی خدمت میں پر خلوص تعزیت پیش کی، اس موقع پر دعاء مغفرت اور ایصال ثواب کا بھی اس اھتمام کیا گیا.