ہفتہ, 8, اکتوبر, 2022
ہومبریکنگ نیوزدلت لڑکیوں کی عصمت دری اور قتل - بھارت ما ں کی...

دلت لڑکیوں کی عصمت دری اور قتل – بھارت ما ں کی تصویر پر ایک دھبہ۔ ویمن انڈیا موؤمنٹ

نئی دہلی۔(پریس ریلیز)۔ ویمن انڈیا موؤمنٹ (WIM) کی قومی صدر محترمہ یاسمین اسلام نے اپنے جاری کردہ اخباری بیان میں کہا ہے کہ ملک میں خواتین کے خلاف گھناؤنے جرائم کا گراف مسلسل بڑھ تا جارہا ہے۔ مرکز اور اس کے زیر کنٹرول ریاستوں میں موجودہ حکومت عصمت دری اور قتل کے واقعات پر قابو پانے میں بری طرح ناکام رہی ہیں۔ اتر پردیش کے لکھیم پور کھیری ضلع میں دو نابالغ دلت لڑکیوں کے عصمت دری اور قتل کا حالیہ معاملہ ایک اور مثال ہے جو یہ ظاہر کرتا ہے کہ اس کے زیر کنٹرول ریاست میں امن و امان کی صورت حال کس طرح بگڑ گئی ہے۔
یہ بدقسمتی کی بات ہے کہ ایک ایسی حکومت جو پارلیمنٹ میں بھاری اکثریت کا دعویٰ کرتی ہے اور گزشتہ 7 سالوں سے ملک کی بیشتر ریاستوں کو کنٹرول کرتی ہے، خواتین کے تحفظ اور سلامتی کے لیے ملک میں پہلے سے بنائے گئے قوانین کے مناسب نفاذ اور ان پر عمل درآمد کو یقینی نہیں بنا سکی ہے۔یہ ملک کی نصف آبادی کے تئیں حکومت کی عدم توجہی اور لاتعلق رویہ کو ظاہر کرتا ہے۔
اتر پردیش کے لکھیم پور کھیری ضلع میں نابالغ دلت لڑکیوں کی عصمت دری اور قتل ہمارے ملک کی شبیہ پر ایک دھبہ ہے جسے ہم فخر سے ”بھارت ماں“ کہتے ہیں۔ اس واقعے نے ہندوستان میں خواتین کے تحفظ اور سلامتی پر ملک کے اعتماد کو متزلزل کر دیا ہے۔ افسوس! اگر سرکاری افسران اور ممبران پارلیمنٹ عصمت دری کرنے والوں کی رہائی کا جشن منائیں اور خوش آمدید کہیں تو معاملات اسی طرح آگے بڑھیں گے۔
ویمن انڈیا موؤمنٹ کی قومی صدر محترمہ یاسمین اسلام نے کہا کہ ڈبلیو آئی ایم دلت لڑکیوں کی عصمت دری اور قتل کے واقعات کی مذمت کرتی ہے اور قصورواروں کے لیے مثالی سزا کا مطالبہ کرتی ہے اور اس عزم کا اظہار کرتی ہے کہ حکومت ملک میں خواتین کے تحفظ اور سلامتی کے تئیں اپنا غیر
توحید عالم فیضی
توحید عالم فیضیhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے