ہفتہ, 8, اکتوبر, 2022
ہوممضامین ومقالاتحیات قطب الہند پر ایک نظر

حیات قطب الہند پر ایک نظر

"حیات قطب الہند” پر ایک نظر

کتاب مذکور کے حوالے سے ملک کی مقتدرشخصیات نے جو کچھ لکھا ہے اس سے کتاب کی اہمیت، عظمت ،جامعیت اور ضرورت کا بخوبی اندازہ ہوتا ہے ،چنانچہ دارالعلوم دیوبند کے مہتمم حضرت مولانا مفتی ابو القاسم نعمانی صاحب مدظلہ نے کتاب مذکور کو "معتبر ،مستند اور بیش قیمت تحفہ” قرار دیا ہے۔مولانا ڈاکٹر سعید الرحمان الاعظمی مدظلہ مہتمم دارالعلوم ندوۃ العلماءلکھنؤ نے "مکمل سوانح اورسلاسل تصوف کا مرقع "کے عنوان سے اپنے قیمتی احساسات کو پیش کیا ہے ،جب کہ ممتاز فقیہ مولانا عتیق احمد بستوی مدظلہ استاذ دارالعلوم ندوۃالعلماء لکھنؤ نے ایک شخصیت کی سوانح کے بجائے "انسائیکلو پیڈیا "ہونے کا دعوہ کیا ہے ،اور حضرت مولانا سید ارشد صاحب مدنی مدظلہ صدر جمعیۃ علماء ہند نے اسی کتاب، حیات قطب الہند کو "پورے خطے اور عہد کی تاریخ ” فرمایا ہے ۔

 کتاب پرمرشد الامت حضرت مولانا رابع حسنی ندوی دامت برکاتہم نے انتہائی وقیع مقدمہ تحریر فرمایا ہے ,مقدمہ کے آخری پیراگراف میں وہ لکھتے ہیں : ” افسوس کہ ایسی عظیم المرتبت شخصیت کی سوانح حیات اب تک سامنے نہیں آئی تھی،اس لئے کہ یہ سعادت ان سے ہی خاندانی نسبت رکھنے والے ایک لائق وسعید فرزند اور صاحب تصنیف وتحقیق نوجوان عالم دین مولانا اختر امام عادل صاحب زید توفیقہ کے حصے میں تھی ،انہوں نے بڑی تحقیق ،جستجو ،لگن اور جذبہ وفکر کے ساتھ اس کام کو انجام دینے کی فکر وکوشش کی ،جس میں حضرت کے احوال وتذکرے کے ساتھ ان سے متعلق سلاسل وشخصیات کا اچھا تعارف آگیا ہے ،آخر میں حضرت کے خلفاء ومجازین کے احوال کا بھی ذکر ہے ،اور شخصیات ومقامات پر اہم حواشی بھی،جس سے کتاب ساڑھے دس سو( 1050)صفحات پر مشتمل ایک انسائیکلو پیڈیا بم گئی ہے "

کتاب ھذا میں تصوف ،طریقت ،شریعت اور تمام سلاسل کے مزاج اوراوصاف وخصوصیات کو دلچسپ پیرائے میںں واضح کیا گیا ہے ۔ کتاب میں صرف ایک شخصیت کی تابناک زندگی اور اس کی جہتوں کو محفوظ نہیں کیا گیا ہے ،بلکہ سچ مچ ایک عہد کی تاریخ کا احاطہ کیا گیا ہے ، کتاب کے حاشیہ میں مذکورمختلف شخصیات پر لکھی گئی معلومات کو اگر جمع کیاجائے تو اتنا کام کرنے کے لئے ایک انجمن درکارہوگی۔

اللہ بہترین جزاء دے مفتی صاحب مدظلہ کو جنہوں نے سوانح کے ضمن میں تصوف کی گتھیوں کو سلجھانے اور اس کی حقیقتوں ،ضرورتوں اور روحانی قدروں کو بتلانے میں اپنی صلاحیتوں کواستعمال کر بہت بڑا ذخیرہ جمع کردیا ہے ۔(تفصیلی تبصرہ اگلی قسط میں انشاء اللہ )

عین الحق امینی قاسمی

بیگوسراے

201/2022

روزنامہ نوائے ملت
روزنامہ نوائے ملتhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے