جمعہ, 30, ستمبر, 2022
ہوماسلامیاتجنتی اور جہنمی عورت کا ذکر

جنتی اور جہنمی عورت کا ذکر

 

سلسلہ وار،حدیث(3)

“عن أبي هريرة أن رجلا قال: يا رسول الله! إن فلانة ذكر من كثرة صلاتها غير أنها تؤذي بلسانها قال: (ھی فی النار) قال: يا رسول الله! إن فلانة ذكر من قلة صلاتها وصيامها وإنها تصدقت بأثوار أقط غير أنها لا تؤذي جيرانها قال: (هي في الجنة” (ابن حبان: 5734) قال شعيب الأرنؤوط: إسناده صحيح على شرط الصحيح)

“حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہےکہ ایک شخص نے کہا:اے اللہ کےرسول! فلاں عورت کا ذکر ہوتا ہے کہ وہ دن میں بہت زیادہ روزہ رکھتی ہے اور رات میں تہجدپڑھتی ہے، مگر اپنے پڑسیوں کو تکلیف پہنچاتی ہے۔ تو آپﷺ نے فرمایا: وہ عورت جہنمی ہے۔ اس شخص نے پھر کہا: اے اللہ کے رسول ﷺ! فلاں عورت کا ذکر اسکی قلت صوم وصلاۃکے ساتھ ہوتاہے،(نوافل کا زیادہ اہتمام نہیں کرپاتی ہے)اور پنیر کے ٹکڑے خیرات کرتی ہے، مگر وہ اپنے پڑوسی کو تکلیف نہیں پہنچا تی ہے۔ تو آپ ﷺ نے فرمایا: وہ جنتی ہے۔”(ابن حبان، شعیب ارنووط نے اس حدیث کی سند کو صحیح کہاہے)

روزنامہ نوائے ملت
روزنامہ نوائے ملتhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

- Advertisment -spot_img
- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے