ہفتہ, 8, اکتوبر, 2022
ہومبریکنگ نیوزجد یو اقلیتی سیل اب مردہ اور گمنام لوگوں کے ذریعہ چلایا...

جد یو اقلیتی سیل اب مردہ اور گمنام لوگوں کے ذریعہ چلایا جائے گا/ ابوبکر صدیقی

حاجی پور۔19 اگست (نمائندہ)
ویشالی ضلع کے فعال و متحرک اور نوجوان مشہور لیڈر ابوبکر صدیقی نے کہا ہے کہ اب جد یو اقلیتی سیل مردہ اور گمنام لوگوں کے ذریعے پورے بہار میں چلایا جائے گا۔ کیوں کہ حالیہ دنوں میں ریاستی صدر سلیم پرویز کے ذریعے صوبائی سطح کی جو کمیٹی تشکیل کی گئی ہے اس میں بیشتر کارکنان گمنامی کی زندگی گزاررہے ہیں۔ اورکچھ لوگ تو ایسے بھی ہیں جو اس دار فانی سے رخصت ہو چکے ہیں۔ انہیں میں ایک نام مدھوبنی ضلع سے کیپٹن موسی منصوری کا ہے۔ جنہیں زندگی میں تو کسی سیاسی پارٹی سے کوئی عہدہ نصیب نہیں ہوا لیکن مرنے کے بعد ہی صحیح انہیں جد یو اقلیتی سیل میں سیکریٹری کا عہدہ مل گیا ہے۔ جس سے اب ان کی روح کو یقینا تسکین ہو گا۔ اسی طرح ویشالی ضلع میں صابر صدیقی کو جنرل سیکریٹری اور محمد مصطفی انصاری کو ضلع صدر منتخب کر دیا گیا ہے۔ ان لوگوں کو ویشالی ضلع کے لوگ اچھی طرح جانتے اور پہچانتے تک نہیں ہے۔ اور نہیں یہ لوگ اقلیتی طبقہ میں مقبول ہیں۔ ایسی صورتحال میں اقلیتی سیل کے سابق ضلع صدر وسیم رضا کا کہنا ہے کہ میں گزشتہ 13 سالوں سے جد یو کے لئے تن من دھن سے کام کر رہا ہوں لیکن اب تک ان جیسے گمنام کارکنان سے کبھی واقفیت ہی نہیں ہوئی ہے۔ اور نہ ہی یہ لوگ تنظیم کے لیے کبھی سرگرم رہے ہیں۔ اسی طرح کا پوسٹ کچھ دنوں قبل قاری جاوید اختر فیضی نے بھی سوشل میڈیا پر کیا تھا۔ جس کے بعد انہیں چپ کرانے کے لئے ریاستی صدر نے جنرل سیکریٹری کا عہدہ سونپ دیا ہے۔
بہرحال ان سب چالاکیوں کی وجہ سے ویشالی ضلع کا اقلیتی طبقہ بہت ناراض ہے۔ اور نتیش کمار کی پارٹی میں اپنے آپ کو ٹھگا محسوس کر رہا ہے۔ جبکہ کچھ لوگوں کا ماننا ہے کی ریاستی صدر نے اس کمیٹی میں زیادہ تر اپنے قریبی لوگوں کو اور ایک مخصوص برادری کے لوگوں کو جگہ دی ہے۔ جو نہایت ہی افسوس کا مقام ہے۔ اُن لوگوں سے پارٹی کی مضبوطی کی توقع ہرگز نہیں کی جا سکتی ہے۔ ابوبکر صدیقی نے مزید کہا ہے کہ پارٹی میں ہم جیسے مضبوط سپاہی اور زمینی سطح کے وفادار کارکنان کو جان بوجھ کر نظر انداز کیا گیا ہے تاکہ اقلیتوں کے رجحان کو نتیش کمار کی طرف زیادہ متاثر نہ کیا جا سکے۔ کیوں کہ ریاستی صدر سلیم پرویز کچھ سال قبل ہی راجد کو چھوڑ کر جد یو کو جوائن کیئے ہیں جس کی وجہ سے ان کا دل اب بھی راجد کی طرف ہی لٹکا ہوا ہے۔ وہ ہرگز نہیں چاہتے ہیں کی جد یو میں اقلیتوں کا بول بالا ہو۔ آخر میں ابوبکر صدیقی نے کہا ہے کہ جد یو اقلیتی سیل میں ابھی جن لوگوں کو منتخب کیا گیا ہے ان لوگوں میں عوام کو نتیش کمار کی طرف مائل کرنے اور متاثر کرنے کی قطعی صلاحیت نہیں ہے۔ اور نہ ہی کسی امیدوار کو انتخابات میں اقلیتوں کا ووٹ دلانے کے قابل ہے۔ واضح رہے کہ جنتادل یو کے ریاستی صدر امیش سنگھ کشواہا کا یہ علاقائی ضلع ہے۔ وہ سبھی لوگوں سے اچھی طرح واقف ہیں۔ لیکن افسوس اس بات کا ہے کہ وہ تنظیم میں ان سب چیزوں کو کیسے برداشت کر رہے ہیں۔ قابل ذکر بات یہ ہے کہ ویشالی ضلع کے چند دانشوران اور سیاسی رہنماؤں نے وزیر اعلی نتیش کمار قومی صدر للن سنگھ اور ریاستی صدر امیش سنگھ كشواہا سے فوری طور پر اقلیتی سیل کو برخواست کرنے یا کمیٹی کو تحلیل کرنے کی درخواست کی ہے۔ اور ازسرنو اپنی زیر نگرانی میں کمیٹی تشکیل کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ جن لوگوں نے کمیٹی تحلیل کرنے کا مطالبہ کیا ہے ان میں میں محمد نثار، محمد صابر حسین، ڈاکٹر محمد سلیم جاوید ،قاری اصغر علی، محمد شاہنواز اور محمد شوکت صدیقی وغیرہ کا نام قابل ذکر ہیں۔

توحید عالم فیضی
توحید عالم فیضیhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے