بدھ, 5, اکتوبر, 2022
ہوماعلان واشتہاراتجامعہ مدنیہ سبل پور،پٹنہ میں تعلیم کا آغاز،اساتذہ کرام کے اہم خطابات

جامعہ مدنیہ سبل پور،پٹنہ میں تعلیم کا آغاز،اساتذہ کرام کے اہم خطابات

جامعہ مدنیہ سبل پور،پٹنہ کا قیام؛حضرت مولانامحمد قاسم صاحبؒ کا تجدیدی کارنامہ

جامعہ مدنیہ سبل پور،پٹنہ میں تعلیم کا آغاز،اساتذہ کرام کے اہم خطابات

(پریس ریلیز)
آپ کا مقصد صرف تعلیم ہے،آپ جس جگہ پر ہیں،اس کے بانی حضرت مولانامحمدقاسم صاحبؒ ہیں،اس ادارہ کاقیام آپ کاایک تجدیدی کارنامہ ہے،یہاں دارالعلوم دیوبندکے طرز ومنہج پر کوئی ادارہ نہیں تھا،اللہ نے حضرت مولانامحمدقاسم صاحبؒ سے کام لیا،جامعہ مدنیہ سبل پور،پٹنہ کے طلبہ سے خطاب کرتے ہوئے یہ باتیں جناب مولانامرغوب الرحمن صاحب معاون مہتمم جامعہ مدنیہ سبل پور،پٹنہ نے کہیں،انہوں نے کہا:آپ قرآن کریم پڑھتے ہیں،یہ اللہ کی کتاب ہے،اس کو اسی طرح پڑھناہے ،جس طرح اللہ کی طرف سے یہ کتاب نازل کی گئی ہے،تجوید کی مکمل رعایت کرنی ہے،اس کے لئے بھی اس مدرسہ کے بانی حضرت مولانامحمدقاسم صاحب نے کوششیں کیں،دوبارآل بہارمسابقۃ القرآن الکریم کا انعقادکیا،جس کے نتیجہ میں پورے بہارمیں تجویدکے ساتھ قرآن پڑھنے کی فضاقائم ہوگئی،یہ بھی یقیناحضرت مولاناتجدیدی کارنامہ ہے، واضح رہے کہ ریاستِ بہارکا مشہورومعروف ادارہ جامعہ مدنیہ سبل پور،پٹنہ کا قیام1989میں عمل میں آیاتھا،1990میں بھاگلپورکے فسادزدہ مظلومین کے چاربچوں سے تعلیم کا آغازوافتتاح ہوا،بانی جامعہ حضرت مولانامحمد قاسم صاحبؒ کی پرخلوص محنت،جدوجہد،اوراساتذہ کرام کی کوشش ولگن کی وجہ سے بہت ہی قلیل وقت میں ادارہ نے ترقی کی،اور ایک مثالی ادارہ بن کر اپنانام روشن کیا،لیکن حضرت مولانامحمد قاسم صاحبؒ کی عمرنے وفانہ کی،اور 29جنوری 2019کو آپ اس دنیائے فانی سے رحلت فرماگئے،کروناوائرس کی مہاری اور طویل لاک ڈاؤن کی وجہ سے سرکاری گائڈ لائن کے مطابق دیگرتعلیمی اداروں کی طرح جامعہ مدنیہ سبل پور،پٹنہ کو بھی کھول دیاگیاہے،آج جامعہ مدنیہ سبل پور،پٹنہ کے مہتمم جناب مولانامحمد حارث بن مولانامحمد قاسم صاحبؒ کی صدارت میں افتتاحیہ پروگرام کا انعقادعمل میں آیا،جس میں جناب مولانامحمدحارث،مولانامرغوب الرحمن،جناب مفتی عبدالاحدصاحب،مفتی خالدانورپورنوی،مفتی سیف الدین،مفتی احمدعلی،مولاناعبدالرحمن،مولاناسہیل اخترمظفرپوری،قاری محمدصالح استوی،حافظ نجم الہدیٰ، مولانا فیاض ،مولانانورالزماں دریاپوری ، قاری محمددستگیرعالم،مولاناامیرالہدی،مولانامحمداکبر،مولانامجہودعالم،مولاناعمرفاروق اور تمام طلبہ عزیز شریک ہوئے۔قرآن کریم کی تلاوت اور نعت نبی ﷺ سے پروگرام کا آغازہوا،جامعہ مدنیہ کے معاون مہتمم اور صدرالمدرسین جناب مولانامرغوب الرحمن صاحب ” رب يسر ولا تعسر وتمم بالخير ”تمام طلبہ کو پڑھاکر تعلیم کے آغازافتتاح کا اعلان کیا،اس موقع پر انہوں نے اہم خطاب بھی فرمایا،جس میں تعلیم اورقرآن کریم کی اہمیت کے ساتھ طلبہ کو پندونصائح سے بھی نوازا، جامعہ مدنیہ کے ناظم تعلیمات جناب مفتی عبدالاحد صاحب نے بھی جامع خطاب کیا،انہوں نے اپنے خطاب میں اس بات پر زور دیاکہ آپ کے اخلاق اچھے ہونے چاہئیے،آپ بہت کچھ بن گئے،مگر اخلاق بہتر نہیں ہے تو کچھ بھی نہیں ہے،جناب مفتی خالدانورپورنوی استاذ جامعہ مدنیہ نے بھی اس موقع پر پرزورخطاب کیا،جس میں انہوں نے بتلایاکہ علم دین اصل ہے،انہوں نے کہا:امام بخاری ؒ نے کتاب الایمان کے بعد کتاب العلم کو بیان کیاہے،اس کا مطلب واضح ہے کہ علم اور ایمان کا رشتہ بہت ہی مضبوط اور مستحکم ہے،انہوں نے کہا:سب سے پہلی آیت آپ ﷺ پر نازل ہوئی وہ یہی تھی کہ پڑھو،اپنے رب کے نام سے،یہ اس بات کی طرف اشارہ ہے کہ علم وہ معتبرہے جس سے انسان کو رب کی معرفت حاصل ہوجائے۔مفتی خالدانورپورنوی نے اپنے جاری خطاب میں اس بات کوزورداراندازمیں کہا:یہ مسابقاتی دورہے،اچھوں میں اچھے کی تلاش ہے،فن کے ماہرین کی آج ضرورت ہے،اس لئے بہتربنئے،دنیاآپ کی قدم بوسی کرے گی،لیکن اس کے لئے محنت شرط اولین ہے،جناب مولانامرغوب الرحمن صاحب کی رقت آمیزدعاء پر پروگرام اختتام پذیرہوا۔

توحید عالم فیضی
توحید عالم فیضیhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

- Advertisment -spot_img
- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے