جمعرات, 6, اکتوبر, 2022
ہومزبان وادبتَرسُوگے، یاد رکھنا

تَرسُوگے، یاد رکھنا

جشن و ہماہمی میں فکرِ معاد رکھنا
قول وعمل میں تھوڑا بھی نا تضاد رکھنا
یہ کیا غضب ہے تم نے شیوہ بنا لیا ہے
اپنی خوشامدانہ فطرت سے شاد رکھنا
مٹی کُرید کر تم ڈھادو جو شوق ہے، پھر
میرے وجود کو تم ترسوگے، یاد رکھنا

گزشتہ مضمونمتفقہ امیرشریعت
اگلا مضمونقومی مفاد
روزنامہ نوائے ملت
روزنامہ نوائے ملتhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

- Advertisment -spot_img
- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے