جمعرات, 6, اکتوبر, 2022
ہوماعلان واشتہاراتبی بی پور،فتوحہ مسجد میں حاضری_رپورٹ

بی بی پور،فتوحہ مسجد میں حاضری_رپورٹ

بی بی پور،فتوحہ مسجد میں حاضری!

رپورٹ:_ایڈوکیٹ محمد نوشاد

بی بی پور ، فتوحه (پٹنہ) میں واقع 1938 میں تعمیر کردہ ویران مسجد کی خبر چند ماہ سے سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہی ہیں۔ چند دانشورانِ اور سوشل ایکٹوسٹ بالخصوص جناب مولانا ابوالکلام صاحب قاسمی شمسی کی پہل پر مورخہ 20 جنوری کو مفتی خالد پورنوی صاحب, مولانا ازہدصاحب صاحب اور ماسٹر کلیم الدین صاحب اُس قدیم مسجد میں حاضر ہوئے اور وہاں کی زمینی حقیقت جاننے کی کوشش کی ۔

فتوحہ سے ،دنیاواں موڑ سے تقریبا 7 کیلومیٹر کے فاصلہ پر بی بی پور کے نام سے ایک گاؤں ہے، یہ مسجد اسی گاؤں میں واقع ہے۔ مسجدمیں ایک بورڈ موجود ہے جس میں درج ہے کہ 1356ھجری اورسن 1938ء میں اس مسجد کی تعمیر کی گئی۔ محکم فخرالمساجد اس کانام ہے ۔ اس گاؤں میں ایک بھی مسلمان نہیں ہیں، البتہ مسجد سے 5/کیلومیٹر جانبِ مغرب ایک گاؤں کنساری ہے جہاں 16/15 گھر مسلمانوں کے ہیں۔،مسجد سے اترجانب 6 کیلومیٹر کے فاصلہ پرکچھ مسلمان آباد ہیں اورمسجد کےچاروں طرف غیر مسلموں کی کثیرآبادی ہے۔

اندرون مسجد میں تین صف ہیں، اور باہربھی تین صف کی جگہ،اذان دینے کے لئے صحن مسجد میں ایک اونچی جگہ بنی ہوئی ہے۔ گیٹ کے دونوں جانب تہہ خانہ ہے،جس میں گائے کو کھلانے کے لئے لوگ چارہ رکھتے ہیں۔ مسجد کو دیکھنے سے اندازہ ہوتاہےکہ بڑی خوبصورتی اور سلیقہ سے اس کی تعمیر کی گئی ہے۔ یعنی فن تعمیر کی شاہکار ہے، مگر ویران ہے۔lس کے بائیں جانب ایک درگاہ اور قبرستان بھی ہے، ۔ ایک مسافرخانہ ہے، جس میں گوالہ ۰لوگ رہتے ہیں،مسجدکے اردگرد مقامی(غیرمسلم) لوگ بیٹھے رہتے ہیں،اور گائے بھی باندھدیتے ہیں،۔ درگاہ سے مقامی لوگوں کی عقیدت وابستہ ہے،۔ یہ لوگ بھی چاہتے ہیں کہ مزار اور مسجدکی مرمت کی جائے اور مسجد کو آباد کی جائے۔

بی بی پور مسجد کی تحفّظ، مرمّت اور مسجد کو آباد کرنے کے غرض سے مورخہ 23 جنوری کو بہار وقف کوارڈینیشن فورم کی اہم میٹنگ منعقد کی گئی۔ اِس میٹنگ میں یہ فیصلہ لیا گیا کہ حکمتِ عملی کے ساتھ بی بی پور مسجد میں جمعہ کی نماز ادا کیا جائے اور کوشش کی جائے کہ قرب و جوار کے لوگ اِس میں شریک ہوں۔ مسجد اور درگاہ کے عمارت کی مرمت جلد شروع کیا جائے۔مزاروں کے مرمت کا کام بھی کیا جائے تا کہ قبرستان کے نشانات بھی باقی رہیں۔

مسجد اور اطراف میں موجود عمارتوں اور مقبروں وغیرہ کا مکمّل جائزہ لینے کے لئے فورم کے وفد نے مورخہ 30 جنوری کو بی بی پور کا دورہ کیا اور مسجد اور مقبروں کی تحفّظ، مسجد آباد کرنے کی صورت، بجلی اور روشنی کے انتظام، صفائی ستھرائی کے لئے انتظام، مقبوضہ جگہوں کی بازیابی وغیرہ پر ایک مکمّل لائحہ عمل تیار کیا ہے۔ اس وفد میں مولانا مرغوب الرحمن صاحب، معاون مہتمم جامعہ مدنیہ سبل پور،مولانا حارث صاحب، مہتمم جامعہ مدنیہ سبلپور، ایڈوکیٹ محمد نوشاد صاحب، کوآرڈینیٹر، بہار وقف کوارڈینیشن فورم، جناب سید عادل صاحب، جناب ندیم صاحب، ڈاکٹر خورشید صاحب، جانب سنا اللہ خان صاحب شامل تھے۔

روزنامہ نوائے ملت
روزنامہ نوائے ملتhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

- Advertisment -spot_img
- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے