جمعرات, 29, ستمبر, 2022
ہوماعلان واشتہاراتبیوی پورکی قدیم ترین مسجدمیں حاضری،مسجدکوآباد کرنے کے لئے سب کی معاونت...

بیوی پورکی قدیم ترین مسجدمیں حاضری،مسجدکوآباد کرنے کے لئے سب کی معاونت کی ضرورت!

رپورٹ:خالدانورپورنوی

کئی دنوں سےبیوی پور،فتوحہ کی80سالہ قدیم ترین، ویران مسجد کی خبریں موصول ہورہی تھیں،جناب مولاناابوالکلام صاحب قاسمی،شمسی سابق پرنسپل مدرسہ اسلامیہ شمس الہدی پٹنہ کی توجہ دلانے پرآج موسم سرد ہونے کے باجود ہم اسی بیوی پور، فتوحہ کی قدیم ترین مسجدمیں حاضری ہوئے،رہنمائی کے لئے مولانا ازہدصاحب فتوحہ کوبھی ساتھ لے لیا،حالانکہ ایک ہفتہ قبل بھی ایک وفد کو وہاں بھیج کر،ہم نے مسجد کا جائزہ لیاتھا،وفد میں موجود جناب مولاناازہدصاحب اورماسٹر کلیم الدین صاحب کے ذریعہ ملی اطلاع کے مطابق دل میں شوق پیدا ہواکہ خود سے اس کو دیکھنا چاہئیے، الحمدللہ آج ہم وہاں پہونچ گئے،دیکھنے کے بعد محسوس ہواکہ واقعی اس مسجد کو آباد کرنے کی ضرورت ہے۔
فتوحہ سے،دنیاواں موڑ،اوروہاں سے تقریبا 7کیلومیٹر کے فاصلہ پر بیوی پور کے نام سے ایک گاؤں ہے، اسی گاؤں میں یہ مسجدہے،مسجدمیں ایک بورڈ بھی ہے،جس میں درج ہے کہ 1356ھجری اورسن 1938ء میں اس کی تعمیرہوئی تھی،محکم فخرالمساجد اس کانام ہے،ملی جانکاری کے مطابق اس گاؤں میں ایک بھی مسلمان نہیں ہیں،البتہ مسجد سے 5/کیلومیٹر جانبِ مغرب ایک گاؤں کنساری ہے جہاں 16/15 گھر مسلمانوں کے ہیں،مسجد سے اترجانب 6 کیلومیٹر کے فاصلہ پرکچھ مسلمان آباد ہیں،اورمسجد کےچاروں طرف غیر مسلموں(گوالہ)کی کثیرآبادی ہے۔
اندرون مسجد تین صف ہیں،اورباہربھی تین صف ہیں،اذان دینے کے لئے صحن مسجد میں ایک اونچی جگہ بنی ہوئی ہے،گیٹ کے دونوں جانب تہہ خانہ بھی ہے،جس میں گائے کو کھلانے کے لئے لوگ چارہ رکھتے ہیں،مسجدوں کو دیکھنے سے اندازہ ہوتاہےکہ بڑی خوبصورتی اور سلیقہ سے اس کی تعمیر کی گئی ہے،یعنی فن تعمیرکی شاہکارہے،مگر ویران ہے،اس کے بائیں جانب ایک مزار اور قبرستان بھی ہے، ایک مسافرخانہ ہے،جس میں گوالہ لوگ رہتے ہیں،مسجدکے اردگرد مقامی(غیرمسلم) لوگ بیٹھے رہتے ہیں،اور گائے بھی باندھدیتے ہیں،یہاں ایک مزار ہے،شایدکسی خاتون کی ہے،مگرمقامی لوگوں کی عقیدت اس سے وابستی ہے،یہ لوگ بھی چاہتے ہیں کہ مزار اور مسجدکی مرمت کی جائے، مسجدکو آباد کی جائے،یہاں پرپوجا(عبادت )کی جائے!
جامعہ مدنیہ سبل پور،پٹنہ کے زیراہتمام اسی جمعہ سے ان شاء اللہ نماز جمعہ کااہتمام کیاجائے گا،اس کے مہتمم جناب مولانامحمدحارث اورمعاون مہتمم مولانامرغوب الرحمن صاحب،فتوحہ کے دیگراحباب کی بھی شرکت ہوگی،سرددست اس کو مرمت کرنے کی ضرورت ہے،بجلی،لائٹ اور روشنی کے انتظام وانصرام کی ضرورت ہے۔
اس حوالہ سے بقیہ گفتگوپھر ان شاء اللہ۔
خالدانورپورنوی،المظاہری

ایڈیٹر ماہنامہ ندائے قاسم واستاذ جامعہ مدنیہ سبل پور،پٹنہ

7004531317

روزنامہ نوائے ملت
روزنامہ نوائے ملتhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

- Advertisment -spot_img
- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے