بہار میں آٹھویں جماعت تک کے بچوں کو کتاب کے پیسے کب ملیں گے؟ حکومت نے جواب دیا

34

بہار کے سرکاری ایلیمنٹری سکولوں میں 2 سے 8 کلاس تک پڑھنے والے 1 کروڑ 29 لاکھ 6682 طلباء کو پیر کے بعد کتاب کے پیسے ملیں گے۔ چہارم تک کے ہر بچے کو 250 روپے دیے جائیں گے جبکہ پانچویں سے آٹھویں تک کے 400 روپے فی طالب علم کتابوں کی خریداری کے لیے دیے جائیں گے۔ رقم DBT کے ذریعے بچے یا والدین کے اکاؤنٹ میں بھیجی جائے گی۔

تعلیمی سیشن 2021-22 میں دوم کلاس میں داخل ہونے والے 1.29 کروڑ بچوں کو مفت اور لازمی تعلیم ایکٹ (آر ٹی ای ایکٹ 2009) کے تحت مفت کتابیں فراہم کرنے پر ڈی بی ٹی کے ذریعے محکمہ تعلیم 402 کروڑ 71 لاکھ 15200 روپے دینے جا رہا ہے۔ وزیر تعلیم وجے کمار چودھری نے محکمانہ افسران کو کتاب خریدنے کی رقم ایک ہفتے میں بچوں کے کھاتے میں منتقل کرنے کا حکم دیا تھا ، 16 اگست سے اسکول کھلنے کے ساتھ۔

محکمہ تعلیم کے ڈی بی ٹی سیل سے موصولہ معلومات کے مطابق یہ رقم پیر کے بعد کسی بھی دن این آئی سی کی مدد سے منتقل کی جائے گی۔ اس سلسلے میں باقی طریقہ کار مکمل ہو چکا ہے۔ دوسرے مرحلے میں محکمہ تعلیم موجودہ سیشن میں پہلی جماعت میں داخلہ لینے والوں کو کتاب کی رقم دے گا۔

فنڈز کی ترسیل کے ساتھ کتابوں کی دستیابی ایک بڑا چیلنج ہے۔

تقریبا purchase ڈیڑھ کروڑ بچوں کو کتاب کی خریداری کی رقم محکمہ تعلیم کے ابتدائی اسکولوں میں دینے کے بعد ، بچوں کو کتابوں کی دستیابی کو یقینی بنانا ایک بڑا چیلنج ثابت ہوگا۔ نچلی سطح پر ایک ایسا نظام بنانا ہوگا کہ ہر کلاس کی تمام کتابیں خریداری کے لیے دستیاب ہوں اور بچے کتاب خریدیں۔ والدین اپنے بچوں کے اکاؤنٹ میں موجود رقم کو کہیں اور استعمال نہ کریں۔ وزیر تعلیم کے احکامات پر ، بہار ٹیکسٹ بک پبلشنگ کارپوریشن لمیٹڈ (بی ٹی بی سی) اس حوالے سے سرگرم ہو گیا۔ بی ٹی بی سی کے ایم ڈی منوج کمار نے بتایا کہ کتابوں کی دستیابی کے حوالے سے فہرست میں شامل پرنٹرز کے ساتھ ایک میٹنگ منعقد کی گئی ہے۔ اضلاع میں دستیاب اسٹاک کی تفصیلات ان سے مانگی گئی ہیں۔ ہر جگہ کتابوں کی دستیابی کو یقینی بنانے کے لیے مناسب کارروائی کی جائے گی۔

یہاں تک کہ ابتدائی سکولوں کے 20 فیصد بچے بھی تین سال سے کتابیں نہیں خرید رہے ہیں۔

سال 2018 سے حکومت ابتدائی کتابوں کے بچوں کو مفت کتابوں کے عوض ڈی بی ٹی سے رقم دے رہی ہے۔ پہلے سال 13 ، دوسرے سال 19 اور پچھلے سال صرف 11 فیصد کتابیں بچوں نے خریدی ہیں۔ ان تین سالوں میں ڈی بی ٹی نے بالترتیب 264.29 کروڑ ، 500.36 کروڑ 378.64 کروڑ روپے دیے جن میں سے صرف 70.13 ، 94.20 اور 52.69 کروڑ روپے کی کتابیں ان سالوں میں پرنٹرز نے فروخت کیں۔

متعلقہ خبریں۔