ہومبریکنگ نیوزایس ڈی پی آئی سچ بولتی رہے گی اور پوری طاقت کے...

ایس ڈی پی آئی سچ بولتی رہے گی اور پوری طاقت کے ساتھ انتخابی سیاست کرے گی۔ ایم کے فیضی

جئے پور۔(پریس ریلیز)۔ سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا (SDPI) کی دو روزہ قومی ورکنگ کمیٹی کااجلاس 10دسمبر 2022کو جئے پور، راجستھان  میں ایس ڈی پی آئی کے قومی صدر ایم کے فیضی کی افتتاحی تقریر کے ساتھ شروع ہوا۔ پارٹی کو درپیش حالیہ بحرانوں کو یاد کرتے ہوئے، ایم کے فیضی نے بھارتیہ جنتا پارٹی کو نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ بی جے پی، ایس ڈی پی آئی کو دشمن کے طور پر دیکھتی ہے کیونکہ ایس ڈی پی آئی بی جے پی کے خلاف بات کرتی آرہی ہے۔ موجودہ حکومت پر طنز کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ آج کل یہ حکومت خاموش رہنے والوں کو بھی جھوٹے الزامات کے تحت جیلوں میں ڈال رہی ہے۔ ایس ڈی پی آئی نے تو کم از کم بی جے پی کے خلاف بولنے کا جرم کیا ہے۔ انہوں نے اس بات پر زور دیکر کہا کہ ایس ڈی پی آئی سچ بولتی رہے گی اور پوری طاقت کے ساتھ انتخابی سیاست کرے گی۔ ایس ڈی پی آئی قومی نائب صدر بی ایم کامبلے نے ذات پات کی سیاست پر ایک تاریخی نقطہ نظرسے تقریر کی، جس میں انہوں نے ہندوستانی سیاست کے ذات پات کے ارتقاء پر روشنی ڈالی۔ انہوں نے کہا کہ سیاست پاورمینجمنٹ کے بارے میں ہے جو ہندوستان میں ذات پات کے حساب سے ہے۔ اسے سماجی مینجمنٹ کے ذریعے سمجھا جاسکتا ہے جس کی منصوبہ بندی شروع سے ہی کانگریس اور بی جے پی دونوں کی حکمرانوں نے چالاکی سے کی ہے۔ ” ذات پات کے درجہ بندی اور اس کو کیسے مینج کیا گیا ہے اس کو سمجھے بغیر ہندوستانی سیاست کو نہیں سمجھا جاسکتا ہے”۔ قبل ازیں اجلاس کا آغاز ایس ڈی پی آئی کے قومی نائب صدر محمد شفیع کے تعارفی کلمات سے ہوا۔ ایس ڈی پی آئی کے قومی جنرل سکریٹریان الیاس محمد تمبے اور عبدالمجید فیضی نے اجلاس کے مختلف نشست کے دوران پارٹی کارگردگی کی رپورٹس پیش کی اور آئندہ 10سال کے مستقبل کا ایجنڈا پیش کیا۔ اجلاس میں قومی نائب صدر محترمہ یاسمین فاروقی، قومی سکریٹریان فیصل عزالدین، تائیدالاسلام اور عبدالستار موجود تھے اور بہت سے خیالات کا اظہار کیا۔ ملک بھرسے پارٹی کے ریاستی مندوبین اور خصوصی مدعوین نے قومی ورکنگ کمیٹی اجلاس کے پہلے دن ہوئے بحث و مباحثہ میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا۔ پہلے دن کے چاروں نشست میں قومی اور ریاستی رہنماؤں نے اپنے خیالات کا تبادلہ کیا۔ 
توحید عالم فیضی
توحید عالم فیضیhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

- Advertisment -
- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے