اپنوں کا دیا درد!

67

تحریر :خورشید انور ندوی
کچھ دنوں سے سعودی عرب اور خلیجی ممالک پر گفتگو سے ایک طرح کی بیزاری تھی.. بے حیثیت، خس و خاشاک، دین بیزار لوگوں سے کوئی امید نہیں رہ گئی ہے.. دنیا کے مسلمانوں کے مسائل سے ان کا تعلق دین کی بنیاد پر کچھ نہیں رہ گیا ہے.. دین چھوڑ کر، اسلامی اخوت کا جوا نکال پھینک کر، جس عرب قومیت اور لسانی عصبیت کا قلادہ گردن میں ڈال بیٹھے تھے، اس کا بھی کچھ خیال نہیں کرسکے اور فلسطینیوں کی پیٹھ میں چھرا گھونپ کر اپنی ناک خود کٹوا بیٹھے… مھبط وحی جیسی ارض پاک کی طہارت کو بدکرداری اور خدا سے بغاوت اور اس کے دین کے خلاف کھلی جسارت کرکے پوری طرح متاثر کرچکے. امریکی فاحشاؤں کو کھلے کنسرٹ کے لئے حرم کی میقاتوں کے اندر مدعو کرنے تک کی مذموم حرکت کرکے دل سے اتر چکے ہیں.. یہ بات ہم کمزور ایمان والوں کی تھی.. کچھ دین پسند، ان حرکتوں کی تحریف کی حد تک تاویل کرکے ان کی دین پسندی اور اپنی بدترین دین فروشی کو کچھ آڑ فراہم کرلیتے ہیں، جس کو ان کے ضمیر پر چھوڑ دینا چاہیے.. وہ لوگ علم سے بہرہ ور لوگ ہیں.. اور توحید کو خالص کرتے کرتے دین حق سے اپنی گلو خلاصی کرواچکے ہیں.. اس صورت حال میں کیا کہا جاسکتا ہے لیکن آج جس طرح پوری دنیا میں، عرب امارات کی طرف سے شراب پر سے پابندی ہٹانے اور بلا شرعی ازدواجی رشتہ مردوزن کو ساتھ رہنے کی اجازت رپورٹ ہوئی ہے، وہ باعث شرمندگی ہے.. ہندوستان میں اس کی رپورٹنگ. مسلم پرسنل لا میں تبدیلی کے عنوان سے ہوئی ہے.. جو یہاں کے مخصوص حالات میں ہندوستانی مسلمانوں کے خلاف ایک ریفرنس اور حوالہ بنے گا.. یہ اگرچہ ہماری جدوجہد میں ایک زک پہنچانے والی بات ہے لیکن کوئی بات نہیں.. ہمیں رنج اس بات کا ہے کہ، جزیرۃ العرب جہاں کفر کو ہمیشہ کمزور ہونا چاہئے، ہمارے ہی ہاتھوں وہ مضبوط ہوتا جارہا ہے، اور بت پرستی تک کا انتظام وانصرام ہماری سرپرستی میں ہورہا ہے.. اس اخلاقی پستی کے ساتھ ہمارے خلیجی بھائیوں کو یہ غم بھی ہے کہ مسلمانان عالم کی نام کی قیادت سے ان کی بےدخلی ہوگئی ہے.. کیوں نہ ہو اردگان مسجدیں آباد کروارہا ہے اور امارات کے شیوخ منادر بنوارہے ہیں.. ترکی کا معلنہ نظام حکومت ابھی بھی سیکولر ہے اور خلیج کا اسلامی ہے.. کم از کم نام کی لاج تو رکھ لی جاتی…مردوزن کا آزادانہ بودوباش آج بھی کسی مسلمان ملک میں اجازت یافتہ نہیں ہے خواہ وہ کتنا بھی سیکولر اور دین بیزار ہو. آخر امارات کی ایسی کیا مجبوری ہے؟
یہ پرسکون ملک آخر کس طاقت سے سہما ہوا ہے..؟ وہاں کی رائے عامہ کا تو کوئی دباؤ بھی نہیں تھا. کیونکہ ان ملکوں میں رائے عامہ سرے سے ہوتی ہی نہیں ہے…اللہ سے بغاوت اور گناہ کی اس مجاہرت پر سخت ملال ہے..
ربنا لاتزغ قلوبنا بعد ان ھدیتنا……..