ہفتہ, 8, اکتوبر, 2022
ہوممضامین ومقالاتامارت شرعیہ کے ذمہ داران کے نام کھلا خط

امارت شرعیہ کے ذمہ داران کے نام کھلا خط

بنام ذمہ داران امارت شرعیہ
السلام علیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
امارت شرعیہ بہار اڈیسہ وجھارکھنڈ کے انتخاب امیر کو لیکر اسوقت جو صورتحال ہے اس سے یہ بات خوب اچھی طرح کھلکر سامنے آرہی ہے کہ ٹرسٹیز’ارکان شوری ارباب حل و عقد کے درمیان اختلافات پائے جارہے ہیں جس سے عوام وخواص محبین و مخلصین منسلکین امارت اور امارت سے منسلک علماء کے درمیان بھی بے چینی بڑھ رہی ہے۔۔۔۔۔۔۔۔ دستوری و غیر دستوری کو لیکر بھی آپس میں بیان بازی ہے’۔
اراکین ہی میں سے احباب اپنی اپنی باتیں صحیح و درست ٹھرانے کی کوشش میں لگے ہوئے ہیں اگر فی الفور اس جانب پوری بصیرت کے ساتھ تھوری قربانی دیکر توجہ نہیں دی گئی تو بظاہر ایسا محسوس ہوتا ہوا نظر آرہا ہے کہ کہیں بزرگوں کی یہ امانت ٹوٹ نہ جائے اور امارت کی تاریخ میں سیاہ داغ و دھبہ نہ لگ جائے ۔۔۔۔۔۔ (اللہ نہ کرے ایسا ہو) جو موجودہ ملکی حالات کے تناظر میں مسلمانوں کے لیےبڑی بد بختی کی علامت ہوگی اس لیے معاملہ کی اہمیت کے پیش نظر ذمہ داران امارت سے ہماری درخواست ہے کہ موجودہ انتخابی عمل سے قبل ہی ارکان شوری کی ایک میٹنگ طلب کر لی جائے۔۔۔۔۔۔۔(اکثریت واقلیت دماغ سے نکال لی جائے سب قابل احترام اور أہل الراءے ہیں)اور آپس میں بیٹھ کر آمنے سامنے روبرو ہوکر معاملہ کو حل کرنے کی کوشش کریں۔۔۔اللہ کی ذات سے امید ہے کہ جب تمام اراکان شوری آپس میں بیٹھیں گے۔۔۔۔۔۔ تو ان شاء اللہ تعالیٰ آبس کی نفرتیں دوریاں غلط فہمیاں دور ہونگے اور اللہ تعالی خیر کا پہلو نکال دے گا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔كماقال الله تبارك وتعالى وشاور هم فى الامر فإذا عزمت فتوكل على الله.فقط
(مفتى) محمد نظرا الباري الندوى.امام وخطیب مرکزی جامع مسجد پالی دربھنگہ

روزنامہ نوائے ملت
روزنامہ نوائے ملتhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے