بدھ, 30, نومبر, 2022
ہومنقطہ نظراس انجمن میں آپ کوآناہے باربار

اس انجمن میں آپ کوآناہے باربار

اس انجمن میں آپ کوآناہے باربار
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
ریاستی راجدھانی پٹنہ کے قلب شہرمیں اشوک راج پتھ پرواقع نوتعمیرشدہ کثیرمنزلہ انجمن اسلامیہ ہال جسے پٹنہ کے تاج محل کے لقب سے جاناجاتاہے اسکی پرشکوہ پرکشش عمارت لوگوں کواپنی ظرف کھینچتی ہے۔انجمن اسلامیہ ہال کی عمارت قدیم ہونے کی وجہ سے مخدوش ہوچکاتھا،وقف بورڈنے تقریباًاکاون کروڑ روپے کے خرچ سے چھہ منزلہ کثیرالمقاصد عمارت کی تعمیرکروایاہے،یہ عمارت نہایت پرشکوہ اوردیدہ زیب ہے،عمارت کی طرز تعمیرمیں اسلامی طرزتعمیرکانمونہ جھلکتا ہے،جدیدتعمیرشدہ انجمن اسلامیہ ہال کےگراؤندفلورپردوشادی ہال مع کچن،فرسٹ فلورپرلائبریری،عبادت گاہ اور چیئرمین وسی ای اوکاچیمبر،سکنڈفلورپر کانفرنس ہال،کوچنگ روم،اورہال ہے،تھرڈ، فورتھ اورففتھ فلورپرہال اورسکس فلور پرنوروم ہیں،ان میں چارڈیلکس روم ہیں.
قابل ذکرہے کہ1885میں شہرپٹنہ کے مخبیرخیراورملی جذبہ سے سرشارافرادنے مل کرایک وقف کی بنیادرکھی،اس طرح انجمن اسلامیہ ہال کاوجودعمل میں آیا، اس کامقصدجہاں مسلمانوں کی تعلیمی بیداری اورسماجی اصلاح تھا،وہیں ماہ رمضان میں عبادت کی جگہ بھی تھی،اس ہال کی ایک خاص بات یہ بھی ہے کہ اس کے واقف نے اسے مصیبت زدوں کی بازآباد کاری کابھی ذریعہ بنایا،پی ایم سی ایچ نزدیک ہونے کی وجہ کراس کے ایک حصہ کولاوارث لاشوں کے غسل اورتجہیزکے لیے بھی مخصوص کیاگیا،انجمن اسلامیہ ہال تحریک آزادی کا بھی مرکز رہا ہے،آزادی کے متوالے اورمحبان وطن اس ہال میں جمع ہوتے اورلائحہ عمل طے کیاکرتے تھے،یہ ہال ملک کے بڑے بڑے سیاست دانوں کی تقریر کاگواہ رہاہے،انجمن اسلامیہ ہال پہلے مقامی انتظامیہ کمیٹی کے توسط سے چلا کرتا تھا،بعدمیں اسے وقف بورڈکی تحویل میں دے دیاگیا،تب سے وقف بورڈکے تحت اس کاانتظام کیاجاتاہے،ہرسال ربیع الاول کے مبارک مہینے میں جلسہ سیرت النبی کا انعقادانجمن اسلامیہ ہال کاامتیازرہاہے،ہر سال یہاں سے سیرت النبی کاپیغام دیاجاتا ہے،اس طرح دینی اوردنیاوی دونوں اعتبار سے یہ ہال مسلمانوں کیئیے قابل استفادہ ہے۔
اس انجمن میں آپ کوآناہے باربار
دیوارودرکوغورسے پہچان لیجئے
اشرف استھانوی

توحید عالم فیضی
توحید عالم فیضیhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

- Advertisment -
- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے