بدھ, 30, نومبر, 2022
ہومبریکنگ نیوزارریا نیوزارریہ مچھلی پٹی میں جلسہ سیرت النبی

ارریہ مچھلی پٹی میں جلسہ سیرت النبی

ارریہ بازار میں مچھلی پٹی مشہور ومعروف جگہ کا نام ہے، آس پاس کی آبادی غیر مسلموں کی ہے،انمیں اکثریت بنگالی ہندؤں کی ہے، آٹے میں نمک کے برابر مسلمان وہاں سکونت پذیر ہیں، بقیہ ارریہ نگر پریشد میں بسنے والے مسلمانوں کی تعداد چالیس فیصد سے زیادہ ہی ہے،بعض بعض حصوں کی مکمل آبادی خالص مسلمانوں کی ہی ہے،مگرمچھلی پٹی میں مسلم آبادی برائے نام ہے جنہیں بآسانی انگلیوں پر گنا جاسکتا ہے،ایک نوجوان محمد سالک عرف مٹھو ہیں، ان کی تحریک سے ابھی دودن قبل ۱۲ ربیع الاول ۱۴۴۴ھ وہاں سیرت النبی کا ایک جلسہ منعقد کیا گیاجو کافی کامیاب رہا ہے،
ڈیڑھ دو گھنٹے کے اس پروگرام میں نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی زندگی پر روشنی ڈالی گئی ہے، آنحضور کے اخلاق کریمانہ اور عدل و انصاف پر مفصل گفتگو ہوئی ،

آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی مہمان نوازی کا معروف واقعہ پیش کیا گیا کہ، ایک غیر مسلم نبی صلی اللہ علیہ وسلم کا مہمان ہوا اور سات بکریوں کا دودھ پی گیا، رات بھر تمام اہل بیت بھوکا رہا، مگرکسی نے اف تک نہ کیا،آپ صلی اللہ علیہ وسلم اپنا کام اپنے ہاتھ سے کرتے،گھر میں جھاڑو دیتے، بازار سے سوداخرید لاتے،جوتی پھٹ جاتی تو خود گانٹھ لیتے اور اپنے ہاتھ سے آٹا تک گوندھ لیتے، یہی نہیں بلکہ دوسروں کے کام بھی کردیا کرتے،دشمنوں کے ساتھ بھی آپ نے دوستوں جیسا سلوک کرنے کا حکم فرمایا اور کرکے بھی دکھایا،جنہوں نےآپ صلی اللہ علیہ وسلم کو گالیاں دیں،راہوں میں کانٹے ڈالے،پاگل کہا، شاعر کہا،جادو گرکہا آپ نے کسی سے بدلہ نہیں لیا، فتح مکہ کے موقع پر سب کو یہ کہ کر معاف کردیا،
جاؤ تم سب کو میں نے معاف کردیاہے، تم سبھی آزاد ہو،آج تم پر کوئی ملامت نہیں ہے،
آپ کےپیارےچچا حضرت حمزہ رضی اللہ عنہ کا قاتل وحشی کو بھی معافی ملی ،اور جس نے آپ کے شہید چچا کے کلیجہ چبا لیاتھا، اسے بھی آپ صلی علیہ وسلم وسلم نے معاف فرمادیاہے،
جانوروں پر بھی آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے رحم کی تعلیم فرمائی ہے،قرآن میں یہ لکھا ہوا ہے کہ آپ کو سب کے لیے رحمت بناکر بھیجا گیا ہے، آپ نے یہ پیغام تمام انسانوں کو دیا ہے کہ تم انسان ہو، ایک دوسرے سے حسد نہ کرو،ایک دوسرے سے منھ نہ پھیرو،خدا کے بندو!آپس میں بھائی بھائی بن جاؤ،
آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے یہ اعلان فرمایاہےکہ؛تم میں سے کوئی شخص اس وقت تک مکمل مسلمان نہیں ہوسکتا جب تک کہ وہ لوگوں کے لیے وہی پسند کرے جو اپنے لیے پسند کرتا ہے،

ایک شخص نے مدینہ کی مسجد میں آکر یہ دعا کی کہ خدایا! مجھ کو اور محمد کو مغفرت عطا فرما، آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے کہا کہ، خدا کی رحمت کو تم نے تنگ کردیا،( بخاری )
مذکورہ بالا عناوین پر اس جلسہ سیرت النبی میں سیر حاصل گفتگو کی گئی، جسے سامعین نے بہت ہی اہم اور ضروری قرار دیا ہے۔
قاضی شہر جناب عتیق اللہ صاحب رحمانی نے عورتوں کے حقوق سیرت النبی کی روشنی میں، اس عنوان پر جامع گفتگو کی، اپنی ساس کو بھی ماں کے جیسے عزت دینی چاہیے،اپنی بہو کو بیٹی کے مقام پر دیکھنا چاہئے،آج نشہ میں ہمارا جوان لت پت ہے،اس سے انہیں باہر نکالنے کی فکر کیجئے ،اور نبی کریم کی سیرت کو زندگی میں داخل کیجئے،یہ وقت کا شدید تقاضہ ہے اور اس جلسہ کے انعقاد کے ذریعہ یہی پیغام دینا مقصود ہے۔

جناب الحاج قاری نیاز صاحب قاسمی نے بڑی خوبصورت نظامت فرمائی، اپنی تمہیدی گفتگو میں جوانوں کا اس پروگرام کےانعقاد پر شکریہ ادا کیا، میاں معراج اور سونو بابو کو دعائیں دیں،
نعت نبی اور اصلاحی نظموں سے جناب عبدالباری زخمی نے جلسہ کو زعفران زار بنادیا۔
شہر کے معروف ومشہور ڈاکٹر جناب آصف رشید صاحب مچھلی پٹی کے ہی رہنے والے ہیں، انہوں نے قاضی صاحب سے مخاطب ہوتے ہوئےیہ کہا ہےکہ، آپ کو یہ پتہ نہیں ہے کہ آپ لوگوں کی تقریر سے زیادہ کس نے فائدہ لیا ہے،سامنے موجود مردوں سے زیادہ خواتین نے اس جلسہ سے کام کی باتیں اخذ کی ہیں ، دیوار سے لگ لگ کر،اپنی چھتوں پر جاکر، گلیوں سے کان لگاکر پورے پروگرام کو وہ سب سن رہی تھیں، اور محظوظ ہورہی تھیں، آپ لوگوں نے وہاں سے صفائی شروع کی ہے جہاں گندگی بہت زیادہ ہے،صفائی کا صحیح طریقہ بھی یہی ہے، ہم نے آج تک یہاں کوئی اس نوعیت کا مفید پروگرام نہیں دیکھا ہے،
نشہ اور کوریکس پر ہم سب انتظامیہ سے شکایت کرتے رہے،پولس آتی رہی مگر فائدہ کچھ بھی نہیں ہوا ہے بلکہ مرض بڑھتا گیا جوں جوں دوا کی ہے،اس طرح کی چھوٹی چھوٹی نشستوں کی یہاں شدید ضرورت ہے۔
جلسہ کی کامیابی کی جہاں اپنوں نے شہادت دی ہے وہیں غیروں نے بھی اسے کافی مفید پروگرام بتلایا ہے،مچلی پٹی وارڈ نمبر ۲۳کے وارڈ کمشنرجناب منٹو جی جوایک غیر مسلم ہیں، انہوں فون کرکے علماء کرام کا شکریہ ادا کیا ہے، اور اپنی معلومات کے مطابق اسے یہاں کا پہلا پروگرام بتلایا ہے، جسمیں بڑی کام کی باتیں انہیں سمجھ میں آئی ہیں،
امتیاز صاحب چیرمین، ضلع ارریہ کے سینئر ایڈووکیٹ پدم شری طہ خاموش صاحب شروع سے اخیر تک جلسہ سیرت النبی میں موجود رہے،
ہم اخیر میں مچھلی پٹی کے ان نوجوانوں کا شکریہ ادا کرتے ہیں جنہوں نے مچھلی پٹی ہی نہیں بلکہ ضلع ارریہ سے ایک بڑا پیغام دیا ہے،
جہاں اس وقت خود غرضی اور مفاد ومادہ پرستی کا دور ہے،مسلم نوجوان شہرت کے پیچھے ارریہ سے اتر پردیش چلا جاتا ہے، اور مشہور ہونے کے لیے دین وایمان کا سودا کرلیتا ہے،مگراپنی گلی کی فکر نہیں کرتا ہے، جس چیز میں دنیا وآخرت کی کامیابی کی ضمانت دی گئی ہے،اسے بالائے طاق رکھ دیتا ہے اور بالآخر خود بھی ذلیل ہوتا ہے اور اپنی نسلوں کی ذلت کا سامان بن جاتاہے،
اپنی گلی سے یار کا گھر دو قدم پہ تھا
دس میل ہم نکل گئے جوش شباب میں

ہمایوں اقبال ندوی، ارریہ
۱۴ربیع الاول ۱۴۴۴ھ

توحید عالم فیضی
توحید عالم فیضیhttps://www.nawaemillat.com
روزنامہ ’نوائے ملت‘ اپنے تمام قارئین کو اس بات کی دعوت دیتا ہے کہ وہ خود بھی مختلف مسائل پر اپنی رائے کا کھل کر اظہار کریں اور اس کے لیے ہر تحریر پر تبصرے کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔ جو بھی ویب سائٹ پر لکھنے کا متمنی ہو، وہ روزنامہ ’نوائے ملت‘ کا مستقل رکن بن سکتے ہیں اور اپنی نگارشات شامل کرسکتے ہیں۔
کیا آپ اسے بھی پڑھنا پسند کریں گے!

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

- Advertisment -
- Advertisment -
- Advertisment -

مقبول خبریں

حالیہ تبصرے